உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Meerut: امتحانات ختم ہونے کے بعد اب تک نہیں شروع ہوا کاپیوں کے جانچنے کا سلسلہ، نتائج میں تاخیر کے اندیشہ سے طلبہ پریشان 

    Meerut: امتحانات ختم ہونے کے بعد اب تک نہیں شروع ہوا کاپیوں کے جانچنے کا سلسلہ

    Meerut: امتحانات ختم ہونے کے بعد اب تک نہیں شروع ہوا کاپیوں کے جانچنے کا سلسلہ

    UP Madarsa Board News: یو پی مدرسہ بورڈ کے امتحانات چودہ مئی سے شروع ہوکر تئیس مئی کو ختم ہو چکے ہیں، لیکن امتحانات کے پرچوں کی کاپیاں ابھی تک اضلاع کے کلیکشن سینٹروں پر ہی موجود ہیں اور کاپیوں کے جانچنے کا سلسلہ شروع نہیں ہو سکا ہے۔

    • Share this:
    میرٹھ : یو پی مدرسہ بورڈ کے امتحانات چودہ مئی سے شروع ہوکر تئیس مئی کو ختم ہو چکے ہیں، لیکن امتحانات کے پرچوں کی کاپیاں ابھی تک اضلاع کے کلیکشن سینٹروں پر ہی موجود ہیں اور کاپیوں کے جانچنے کا سلسلہ شروع نہیں ہو سکا ہے۔ ایسے میں گزشتہ سالوں کی طرح اس سال بھی مدرسہ بورڈ کے نتائج میں تاخیر ہو سکتی ہے، جس کا نقصان مدرسہ طالب علموں کو اٹھانا پڑے گا۔ صوبے کے دِیگر اضلاع کی طرح میرٹھ میں بھی مدرسہ بورڈ امتحانات میں ضلع کے  تقریباً  چار ہزار تین سو طلباء کے لیے دس امتحان مراکز قائم کیے گئے تھے  اور پرچے کی کاپیوں کو جمع کرنے کے لیے شہر کے  منصبيه عربی کالج کو مرکز بنایا گیا تھا۔

     

    یہ بھی پڑھئے : ایودھیا پر لکھی کتاب خریدنے کا چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی نے جاری کیا کر سرکلر ، مچا ہنگامہ


    تاہم امتحان ختم ہونے کے بعد کاپیوں کے جانچنے کے لیے  بورڈ کی جانب سے اب تک مرکز تشخیص کا انتخاب نہیں کیا جا سکا ہے اور نہ اس سے متعلق کوئی جانکاری مراکز کو اب تک فراہم کرائی گئی ہے۔ منصبیہ عربی کالج کے پرنسپل افضال نقوی کا کہنا ہے کہ امتحان کے بعد کاپیوں کو جمع کرنے کے لیے کالج کو سینٹر بنایا گیا ہے لیکن تشخیص کو لیکر ابھی کسی طرح کی جانکاری محکمہ اقلیتی فلاح یہ بورڈ کی جانب سے فراہم نہیں کرائی گئی ہے۔

     

    یہ بھی پڑھئے : ہاشم پورہ کے بعد مليانہ قتل عام کے متاثرین کو 35 برسوں سے انصاف کا انتظار


    گزشتہ سالوں میں مرکز تشخیص کی حیثیت سے خدمات انجام دینے والے مدارس کے زمہ داران اور بورڈ سے منسلک ممبران کا کہنا ہے مراکز میں سہولیات اور ضروری اسٹاف کی دستیابی کے باوجود  امتحانات کی کاپیوں کے جانچنے میں تاخیر کا خمیازہ طالب علموں کو اٹھانا پڑےگا ۔

    ایسے وقت میں جب امتحانات میں پہلے ہی تاخیر ہو چکی ہے کاپیوں کے جانچنے کے لیے مراکز کے انتخاب میں ہو رہی تاخیر مدرسہ بورڈ انتظامیہ کی بدنظمی کا ثبوت پیش کرتی ہے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: