உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    میرٹھ : جنرل او پی ڈی کے بند ہونے سے اسپتالوں کے چکر لگا کر پریشان ہوئے غریب مریض 

     ان لاک کی شروعات کے بعد سرکاری اسپتالوں میں سرجیکل او پی ڈی تو شروع کی گئی لیکن جنرل او پی ڈی کے ابھی بھی بند ہونے سے مریض پریشان ہیں۔

    ان لاک کی شروعات کے بعد سرکاری اسپتالوں میں سرجیکل او پی ڈی تو شروع کی گئی لیکن جنرل او پی ڈی کے ابھی بھی بند ہونے سے مریض پریشان ہیں۔

    ان لاک کی شروعات کے بعد سرکاری اسپتالوں میں سرجیکل او پی ڈی تو شروع کی گئی لیکن جنرل او پی ڈی کے ابھی بھی بند ہونے سے مریض پریشان ہیں۔

    • Share this:
    مارچ میں کورونا وبا کی دوسری لہر کی شروعات کے بعد انفیکشن کے تیزی سے بڑھتے خطرے کے ساتھ ہی یو پی میں بھی اسپتالوں میں سبھی طرح کی او پی ڈی کو بند کر دیا گیا تھا لیکن ان لاک کی شروعات کے بعد سرکاری اسپتالوں میں سرجیکل او پی ڈی تو شروع کی گئی لیکن جنرل او پی ڈی کے ابھی بھی بند ہونے سے مریض پریشان ہیں ۔ بہت سے مریض جانکاری نہ ہونے کی وجہ سے ان سرکاری اسپتالوں کے چکّر لگا کر پریشان ہو رہے ہیں۔
    میرٹھ میں پرائیویٹ اسپتالوں کے علاوہ شہر اور دیہات کے مریضوں کی بڑی تعداد کو میڈیکل اور ضلع اسپتال کی او پی ڈی میں علاج کی سہولیت حاصل ہے لیکن گزشتہ تین ماہ سے زیادہ وقت سے بند جنرل اؤ پی ڈی کی وجہ سے اب مریض پریشان ہو رہے ہیں اور اسپتالوں کے چکّر کاٹ کر پریشان ہو رہے ہیں۔

    وہیں محکمہ صحت کے زمہ داران کا کہنا ہے کہ سنگین بیماریوں کے علاج کے لیے سرجیکل او پی ڈی کی شروعات کی گئی ہے لیکن ابھی جنرل او پی ڈی کو شروع کرنے کے لیے سرکاری حکم اور ہدایات کا انتظار کیا جا رہا ہے۔ شہر اور دیہات کے غریب افراد کو سرکاری اسپتال کی اؤ پی ڈی میں مفت علاج دستیاب ہے لیکن ان لاک کی شروعات کے بعد بھی ان اسپتالوں میں اؤ پی ڈی کی شروعات نہ ہونے سے مریض پریشان ہیں اور جنرل او پی ڈی کے شروع کیے جانے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: