உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بڑی خبر: ایس پی ممبر پارلیمنٹ اعظم خان کی طبیعت بگڑی ، میدانتا اسپتال لکھنو منتقل کرنے کی تیاری

    Azam Khan News : گزشتہ ایک سال سے زیادہ وقت سے اعظم خان سیتاپور جیل میں بند ہیں ۔ سیتا پور جیل انتظامیہ نے دو دن پہلے ہی ان کا کورونا ٹیسٹ کرایا تھا ۔ کورونا ٹیسٹ رپورٹ میں اعظم خان سمیت جیل میں 13 قیدی کورونا پازیٹیو پائے گئے ہیں ۔

    Azam Khan News : گزشتہ ایک سال سے زیادہ وقت سے اعظم خان سیتاپور جیل میں بند ہیں ۔ سیتا پور جیل انتظامیہ نے دو دن پہلے ہی ان کا کورونا ٹیسٹ کرایا تھا ۔ کورونا ٹیسٹ رپورٹ میں اعظم خان سمیت جیل میں 13 قیدی کورونا پازیٹیو پائے گئے ہیں ۔

    Azam Khan News : گزشتہ ایک سال سے زیادہ وقت سے اعظم خان سیتاپور جیل میں بند ہیں ۔ سیتا پور جیل انتظامیہ نے دو دن پہلے ہی ان کا کورونا ٹیسٹ کرایا تھا ۔ کورونا ٹیسٹ رپورٹ میں اعظم خان سمیت جیل میں 13 قیدی کورونا پازیٹیو پائے گئے ہیں ۔

    • Share this:
      سیتاپور : اترپردیش کے رامپور سے ممبر پارلیمنٹ اور سماج وادی پارٹی کے قدآور لیڈر اعظم خان کی طبیعت اتوار کو اچانک بگڑ گئی ہے ۔ اعظم خان کی رپورٹ گزشتہ یکم مئی کو کورونا پازیٹیو آئی تھی ۔ بتایا جارہا ہے کہ ضلع انتظامیہ کے افسران اعظم خان کو لکھنو کے میدانتا استپال میں منتقل کرنے کی تیاری کررہے ہیں ۔ سیتا پور ضلع میں بند اعظم خان کو لے جانے کیلئے ایمبولینس اور اسکاٹ تیار ہے ۔ جائے واقعہ پر اے ایس پی ، ایس ڈی ایم صدر سمیت سی او سٹی ڈسٹرکٹ جیل میں موجود ہیں ۔

      گزشتہ ایک سال سے زیادہ وقت سے اعظم خان سیتاپور جیل میں بند ہیں ۔ سیتا پور جیل انتظامیہ نے دو دن پہلے ہی ان کا کورونا ٹیسٹ کرایا تھا ۔ کورونا ٹیسٹ رپورٹ میں اعظم خان سمیت جیل میں 13 قیدی کورونا پازیٹیو پائے گئے ہیں ۔

      بتادیں کہ اعظم خان کی ممبر اسمبلی اہلیہ تزئین فاطمہ کو کچھ دنوں پہلے ہی ضمانت مل گئی تھی ، لیکن اعظم خان اور عبد اللہ اعظم کا انتظار طویل ہوتا جارہا ہے ۔ اعظم خان کے اوپر 80 سے زیادہ مقدمات درج ہیں جبکہ عبد اللہ اعظم پر 40 سے زیادہ کیسز درج ہیں ۔ جانکاری کے مطابق زیادہ تر معاملات میں انہیں ضمانت مل چکی ہے ۔ اب کچھ مقدمات میں ہی ضمانت ملنی باقی ہے ۔

      گزشتہ سال 26 فروری کو اعظم خان ، ان کی اہلیہ تزئین فاطمہ اور بیٹے عبد اللہ اعظم نے رامپور کی عدالت میں خودسپردگی کی تھی ۔ تینوں کے اوپر دستاویز میں ہیرا پھیری کرکے فرضی پین کارڈ اور پاسپورٹ بنوانے کا سال 2019 میں مقدمہ درج ہوا تھا ۔ اس مقدمہ میں عدالت کے ذریعہ بار بار بلانے کے باوجود وہ حاضر نہیں ہورہے تھے ، جس کے بعد عدالت نے غیر ضمانتی وارنٹ جاری کردیا تھا ۔ این بی ڈبلیو جاری ہونے کے بعد تینوں نے عدالت میں خودسپرگی کی اور ضمانت مانگی ، لیکن عدالت نے انہیں رامپور کی ضلع جیل بھیج دیا ۔

      27 فروری کو تینوں کو سیتا پور جیل میں منتقل کیا گیا ۔ دسمبر 2020 میں ان کی اہلیہ اور رامپور صدر سے ایس پی ممبر اسمبلی تزئین فاطمہ کو ضمانت مل گئی تھی اور وہ باہر ہیں ، لیکن اعظم خان اور ان کے بیٹے کو ابھی بھی ضمانت کا انتظار ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: