ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Unnao Case : یوپی پولیس کا انکشاف ، ایک طرفہ پیار میں ہوا قتل ، جراثیم کش ملا کر پلایا پانی

اناو سانحہ : معاملہ کا انکشاف کرتے ہوئے یوپی پولیس نے کہا کہ دو نوجوانوں کو گرفتار کرلیا گیا ہے ۔ نابالغوں کو جراثیم کش پلایا گیا تھا ۔

  • Share this:
Unnao Case : یوپی پولیس کا انکشاف ، ایک طرفہ پیار میں ہوا قتل ، جراثیم کش ملا کر پلایا پانی
Unnao Case : یوپی پولیس کا انکشاف ، ایک طرفہ پیار میں ہوا قتل ، جراثیم کش ملا کر پلایا پانی

اترپردیش کے اناو کے اسوہا تھانہ علاقہ میں دو نابالغ لڑکیوں کی مشتبہ موت کے معاملہ میں یوپی پولیس نے بڑا انکشاف کیا ہے ۔ جمعہ کو پریس کانفرنس میں پولیس نے بتایا کہ ونے اور اس کے نابالغ ساتھیوں کو حراست میں لیا گیا ہے ۔ دونوں نابالغ لڑکیوں کو نمکین کھلانے کے بعد پانی میں جراثیم کش دوا ملا کر دیا گیا تھا ۔ ایک طرفہ محبت کی بات بھی پولیس نے کہی ہے ۔ ایک دیگر لڑکی کا علاج کانپور اسپتال میں کیا جارہا ہے ۔ اسپتال کی جانب سے کہا گیا ہے کہ لڑکی کی حالت مستحکم ہے ۔ علاج کا اثر نظر آرہا ہے ۔ ہم رفتہ رفتہ اس کو وینٹلیٹر سے نکالنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ امید ہے کہ وہ جلد ہی ٹھیک ہوجائے گی ۔


معاملہ کا انکشاف کرتے ہوئے آئی جی لکشمی سنگھ نے کہا کہ گاوں کے ایک مخبر سے پولیس کو اطلاع ملی تھی کہ دو لوگوں کو واقعہ کے دن کھیتوں سے باہر دوڑتے ہوئے دیکھا گیا تھا ۔ کارروائی کرتے ہوئے پولیس نے دو ملزمین کو پاٹک پورہ چوراہے کے پاس سے اپنی گرفت میں لے لیا ۔


ملزم ونے کا کھیت متاثرہ لڑکیوں کے آبائی کھیت سے متصل ہے ۔ وہ ہر دن کھیت میں آتا جاتا تھا ۔ لاک ڈاون کے دوران ونے کا ان لڑکیوں سے تعارف ہوگیا تھا  ۔ ونے کی ایک لڑکی سے کچھ دنوں پہلے دوستی ہوگئی تھی ۔ ونے نابالغ سے ایک طرفہ محبت کرتا تھا ، لیکن لڑکی نے ہاں نہیں کی ۔ پھر ونے نے ایک دن لڑکیوں کو کھیت میں بلایا اور نمکین کھلایا ۔ سبھی کافی دیر تک بات چیت کرتے رہے ۔


اتنے میں ملزم ونے نے کھیت میں رکھے جراثیم کش کو پانی کی ایک بوتل میں ملا دیا ۔ وہ ایک لڑکی کو اسی بوتل سے پانی پلانا چاہتا تھا ۔ اس دوران دیگر لڑکیوں نے پینے کا پانی مانگا تو ونے نے منع کردیا ۔ اتنے میں لڑکیوں نے بوتل چھین کر پانی پی لیا ۔ اس کے بعد لڑکیاں بے ہوش ہوگئیں ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ کھیت سے انہیں پانی کی بوتل ، نمکین کا پیکٹ ، سگریٹ کا ڈبہ اور پان مسالا کا پاوچ برآمد ہوا تھا ۔

جمعہ کی صبح کو ببررہا گاوں کی لڑکیوں کی موت کے بعد پورے گاوں کو چھاونی میں تبدیل کردیا گیا ۔ سخت سیکورٹی انتظامات کے دوران دونوں لڑکیوں کی آخری رسومات ادا کی گئیں ۔ اس دوران آئی جی ، کمشنر ، ڈی ایم ، ایس پی سمتی کئی اعلی افسران جائے واقعہ پر موجود تھے ۔ ضلع انتطامیہ کی طرف سے مقتولین کے گھر پر بھی سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں ۔

ڈی جی پی ہتیش چندر اوستھی نے بتایا کہ بے ہوش بچی کا علاج کانپور میں چل رہا ہے ۔ ڈاکٹروں کے ایک پینل نے ان میں سے دو مردہ بچیوں کا پوسٹ ماٹم کیا ۔ ان کی رپورٹ میں کسی بھی طرح کی چوٹ کا تذکرہ نہیں ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ وسرا کو محفوظ کرکے کیمیائی تجزیہ کیلئے بھیج دیا گیا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Feb 19, 2021 08:56 PM IST