ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

لاک ڈاؤن کی وجہ سے کیا ختم ہو جائےگی میرٹھ کی یہ 130 برس قدیم صنعت

نوٹ بندی کے بعد سے ہی بدحالی کے دور سے گزر رہی میرٹھ کے ایک سو تیس سال سے بھی پرانی براس بینڈ صنعت اور کاروبار لاک ڈاؤن کے سبب اب اپنے سب سے خراب دور سے گزر رہی ہے۔

  • Share this:
لاک ڈاؤن کی وجہ سے کیا ختم ہو جائےگی میرٹھ کی یہ 130 برس قدیم صنعت
نوٹ بندی کے بعد سے ہی بدحالی کے دور سے گزر رہی میرٹھ کے ایک سو تیس سال سے بھی پرانی براس بینڈ صنعت اور کاروبار لاک ڈاؤن کے سبب اب اپنے سب سے خراب دور سے گزر رہی ہے۔

نوٹ بندی کے بعد سے ہی بدحالی کے دور سے گزر رہی میرٹھ کے ایک سو تیس سال سے بھی پرانی براس بینڈ صنعت اور کاروبار لاک ڈاؤن کے سبب اب اپنے سب سے خراب دور سے گزر رہی ہے۔ لاک ڈاؤن کے شروعاتی دور سے  شادی بیاہ اور دیگر تقاریب کے جشن پر پابندی عائد ہونے کے بعد سے ہی جہاں بینڈ باجے والوں کا ذریعہ معاش ختم ہو گیا ہے۔ وہیں اس سے وابستہ پھول ہار اور بینڈ باجا کاروبار بھی بری طرح متاثر ہوا ہے۔

بتادیں کہ شادیوں میں  بینڈ باجا بجانے کے پشتینی کاروبار سے جُڑے میرٹھ کے رضوان کی دکان گزشتہ تین ماہ سے مستقل طور پر بند رہی ہے۔ اب جب کہ دکانوں کو ہفتے میں تین روز کھولنے کی اجازت مل گئی ہے تو رضوان کے پاس کوئی کام نہیں ہے۔ شادیوں اور پارٹیوں میں بینڈ باجا بجا کر اور سجاوٹ کا انتظام کرکے روزگار حاصل کرنے والے رضوان اور ان کے جیسے دوسرے ہزاروں افراد اب کام نہ ہونے سے پریشان ہیں۔

وہیں بینڈ باجا پارٹی والوں کے لیے ساز و سامان تیار کرنے والے کاروباری اور کاریگروں کا کام بھی متاثر ہے ، پرانے آرڈر کینسل ہونے اور نئے ساز و سامان کی مانگ نہ ہونے سے اب میرٹھ کی براس بینڈ صنعت بھی بدحالی کے دور سے گزر رہی ہے۔ میرٹھ براس بینڈ اینڈ میوزیکل انسٹرومنٹ ایسوسیشن کے سیکرٹری عنایت اللہ بتاتے ہیں۔


گزشتہ 15 برسوں میں چین کے ساز و سامان نے زیادہ تر بازار پر قبضہ کر لیا لیکن اچھی کوالٹی کے ساز و سامان بنانے کی وجہ سے میرٹھ کے کاروباری بازار میں بنے رہے لیکن نوٹ بندی کے بعد سے حالات خستہ ہونا شروع ہو گئے لیکن لاک ڈاؤن نے تو براس بینڈ صنعت اور کاروبار کی کمر ہی توڑ کر رکھ دی۔ ان حالات میں اگر اس صنعت کو حکومت کی مدد حاصل نہیں ہوئی تو بینڈ باجا کاروبار ختم ہو سکتا ہے۔

First published: Jun 27, 2020 02:30 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading