உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سپا سینٹر کی آڑ میں چل رہا تھا بڑا سیکس ریکیٹ ، ایسی حالت میں ملی لڑکیاں ، پولیس بھی رہ گئی حیران

    سپا سینٹر کی آڑ میں چل رہا تھا بڑا سیکس ریکیٹ ، 9 لڑکیوں سمیت 11 گرفتار

    پولیس نے چھاپہ ماری کی تو سپا سینٹر کا مالک خود ایک لڑکی کے ساتھ قابل اعتراض حالت میں ملا ۔ اب پولیس نے سپا سینٹر کو سیل کرکے سبھی کو گرفتار کرلیا ہے ۔

    • Share this:
      ہلدوانی : اتراکھنڈ کے ہلدوانی شہر میں سپا سینٹر کی آڑ میں سیکس ریکیٹ کا پولیس نے پردہ فاش کیا ہے ۔ شہر کی پولیس نے پیر کو کاٹھ گودام کے پاس واقع ایک سپا سینٹر پر چھاپہ ماری کرکے گیارہ افراد کو گرفتار کیا ۔ ان میں نو لڑکیاں اور دو مرد شامل ہیں ۔ پولیس نے بتایا کہ گرفتار کئے گئے لوگوں میں سپا سینٹر کا مالک بھی ہے ۔ سپا سینٹر کا مالک خود بھی ایک لڑکی کے ساتھ قابل اعتراض حالت میں پولیس کو ملا ، جس کے بعد اس کو گرفتار کرلیا گیا ۔ جانکاری کے مطابق یہ کارروائی جنگل لگزری سپا سینٹر میں کی گئی ۔ گرفتار لڑکیوں میں دو یوپی ، تین ہریانہ ، ایک میزور ، ایک منی پور ، ایک مغربی بنگال اور ایک مدھیہ پردیش کی رہنے والی ہے ۔

      پولیس نے بتایا کہ کسی بھی لڑکی کا پولیس ویریفیکیشن نہیں کیا گیا ہے ۔ پولیس نے کئی مرتبہ سپا سینٹر کے مالک کو اپنے ملازمین کا ویریفیکیشن کرانے کیلئے بھی کہا تھا ، لیکن اس نے ایسا نہیں کیا ۔ وہیں اس درمیان پولیس کو اس مساج سینٹر میں سیکس ریکیٹ چلائے جانے کی بھی خبریں  ملنے لگیں ، جس کے بعد اینٹی ہیومن ٹریفکنگ سیل نے چھاپہ ماری کی کارروائی کی ۔

      سپا سینٹر میں مساج کرنے والی لڑکیوں کو ایک انتہائی چھوٹے کمرے میں رکھا گیا تھا ۔ پولیس کے مطابق ان کیلئے کسی بھی طرح کا انتظام نہیں کیا گیا تھا ۔ سبھی لڑکیاں کافی خراب حالت میں رہتی تھیں ۔ وہیں سپا سینٹر میں آنے والے کسٹمرس کیلئے الگ الگ کیبن بنے ہوئے تھے ۔ ان کیبنوں میں سبھی طرح کی سہولیات تھیں ۔

      وہیں پولیس کو ان کبینوں میں سے قابل اعتراض سامان کے ساتھ کچھ فحش لٹریچرس بھی ملے ہیں ۔ وہیں پولیس نے بتایا کہ سپا سینٹر میں کون آرہا تھا اور کون جارہا تھا ، اس کا بھی کوئی ریکارڈ نہیں رکھا جارہا تھا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: