உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وسیم رضوی عرفJitendra Tyagi اب لیں گے سنیاس، سناتن دھرم کا پرچار کرنے کی ظاہر کی خواہش

    wasim rizvi urf jitendra Narayan Singh Tyagi: اس ملاقات کے بارے میں معلومات دیتے ہوئے رویندر پوری نے کہا، 'جتیندر تیاگی اب سنیاس لینا چاہتے ہیں اور سناتن دھرم کا پرچار کرنا چاہتے ہیں۔

    wasim rizvi urf jitendra Narayan Singh Tyagi: اس ملاقات کے بارے میں معلومات دیتے ہوئے رویندر پوری نے کہا، 'جتیندر تیاگی اب سنیاس لینا چاہتے ہیں اور سناتن دھرم کا پرچار کرنا چاہتے ہیں۔

    wasim rizvi urf jitendra Narayan Singh Tyagi: اس ملاقات کے بارے میں معلومات دیتے ہوئے رویندر پوری نے کہا، 'جتیندر تیاگی اب سنیاس لینا چاہتے ہیں اور سناتن دھرم کا پرچار کرنا چاہتے ہیں۔

    • Share this:
      ہریدوار۔ اتر پردیش کے شیعہ وقف بورڈ کے سابق چیئرمین اور مسلمان سے ہندو بنے وسیم رضوی عرف جتیندر نارائن سنگھ تیاگی (wasim rizvi urf jitendra Narayan Singh Tyagi) اب سنیاس sanyas لے سکتے ہیں۔ دراصل، تیاگی عرف رضوی ہریدوار کی پارلیمنٹ میں اشتعال انگیز تقریر کرنے کے معاملے میں ضمانت ملنے کے بعد منگل کو ہریدوار پہنچے تھے۔ یہاں انہوں نے نیرنجنی اکھاڑہ کے مہنت رویندر پوری سے ملاقات کی اور سنیاس لینے کی خواہش ظاہر کی۔

      اس ملاقات کے بارے میں معلومات دیتے ہوئے رویندر پوری نے کہا، 'جتیندر تیاگی اب سنیاس لینا چاہتے ہیں اور سناتن دھرم کا پرچار کرنا چاہتے ہیں۔ اکھاڑہ اور سنت سماج کے عہدیداروں سے بات چیت کے بعد ان کے سنیاس دلانے کے بارے میں فیصلہ لیا جائے گا۔

      یہ بھی پڑھئے: Juma Masjid 144 جمعہ مسجد کے باہر دفعہ 144 نافذ، تعمیر کے دوران ملا تھا مندر جیسا ڈیزائن

      شمبھاوی پیتھادھیشور اور شنکراچاریہ پریشد کے صدر نے کہا، “وسیم رضوی عرف جتیندر تیاگی ہندو بن گئے ہیں اور اب سنیاس لینا چاہتے ہیں۔ جیل سے باہر آنے کے بعد انہوں نے ایک بار پھر اپنی خواہش کا اظہار کیا ہے کہ وہ سنیاس لینا چاہتے ہیں۔ اس کے لیے اکھاڑہ پریشد اور اکھل بھارتیہ ودیا پریشد سے مشورہ لینا پڑے گا کہ وہ کیا رسم و رواج ہوں گی تحت سنیاس دلوایا جائے گا۔

      ٹیرر فنڈنگ معاملے میں JKLF کے Yasin Malik کو آج مل سکتی ہے گناہوں کی سزا۔۔۔

       

      غور طلب ہے کہ جتیندر نارائن تیاگی عرف وسیم رضوی کو 13 جنوری کو ہریدوار میں منعقدہ مذاہب کی پارلیمنٹ میں اشتعال انگیز تقریر کے معاملے میں گرفتار کیا گیا تھا۔ اس معاملے میں سپریم کورٹ نے انہیں 17 مئی کو 3 ماہ کی مشروط عبوری ضمانت دی تھی۔ سپریم کورٹ نے اپنے حکم میں یہ شرط رکھی ہے کہ وہ ضمانت کی اس مدت کے دوران کوئی اشتعال انگیز تقریر نہیں کرے گا۔ جس کے بعد وہ چند روز قبل ڈسٹرکٹ جیل سے رہا ہو کر باہر آیا تھا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: