உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    گیانواپی میں ڈسٹرکٹ جج نے ایک وکیل کو ہٹایا، مسلم فریق نے لگایا جذبات بھڑکانے کا الزام تو ہندو فریق نے بھی لگائے یہ الزامات

    Youtube Video

    Varanasi News: وارانسی ہی نہیں ملک کے اس مشہور کیس میں لوگوں کی نظریں اس کیس کو لے کر ضلع جج کی عدالت پر ٹکی ہوئی ہیں۔ اس کے ساتھ ہی ڈیڑھ گھنٹے تک سماعت کے بعد جمعرات کو گیانواپی کیس کی سماعت چار بجے ختم ہوئی۔ وہیں ضلع جج کی عدالت نے اب اس معاملے میں اگلی سماعت کی تاریخ 30 مئی پیر کی دی ہے۔

    • Share this:
    Gyanvapi Masjid case:  عدالت گیانواپی مسجد معاملے میں سماعت کر سکتی ہے یا نہیں، اس معاملے میں (Places of Worship Act 1991) کے تعلق سے ضلع جج کی عدالت میں کیس کی برقراری کو لے کر عدالت میں سماعت ہونی ہے۔ ممکن ہے کہ عدالت اس معاملے میں کسی فیصلے پر بھی پہنچ جائے۔ اس تناظر میں وارانسی ہی نہیں ملک کے اس مشہور کیس میں لوگوں کی نظریں اس کیس کو لے کر ضلع جج کی عدالت پر ٹکی ہوئی ہیں۔ اس کے ساتھ ہی ڈیڑھ گھنٹے تک سماعت کے بعد جمعرات کو گیانواپی کیس کی سماعت چار بجے ختم ہوئی۔ وہیں ضلع جج کی عدالت نے اب اس معاملے میں اگلی سماعت کی تاریخ 30 مئی پیر کی  دی ہے۔

    گیانواپی مسجد معاملے میں مسلم فریق کی عرضی پر جمعرات کو وارانسی کی عدالت میں سماعت ہوئی۔ وارانسی کورٹ (Varanasi Court) سے الہ آباد ہائی کورٹ تک سپریم کورٹ تک پہنچا گیا۔ گیانواپی معاملہ ایک بار پھر وارانسی پہنچ گیا ہے۔ حال ہی میں سپریم کورٹ کے حکم کی بنیاد پر وارانسی ڈسٹرکٹ واٹر کورٹ میں اس معاملے کی سماعت ہوئی۔ آرڈر 7/11 پر سماعت جمعرات کو ہو رہی ہے۔ اس میں عدالت کو فیصلہ کرنا ہے کہ شرنگر گوری کیس (Shringar Gauri Case) قابل سماعت ہے یا نہیں۔ عدالت نے نچلی عدالت کی طرف سے ایڈوکیٹ کمشنر کمیٹی کے سروے کے بعد پیش کی گئی رپورٹ پر ایک ہفتے میں فریقین سے اعتراضات طلب کئے۔
    مسلم فریق نے کہا کہ کیس قابل سماعت نہیں ہے۔
    ضلع جج کی عدالت میں جاری سماعت کے دوران ان پر مسلم فریق کی جانب سے جذبات بھڑکانے کا الزام لگایا گیا ہے۔ عدالت میں دلائل کے دوران مسجد کمیٹی کے وکیل ابھے ناتھ یادو نے کہا کہ یہ کیس قابل سماعت بھی نہیں ہے۔ شیولنگ Shivling کے بارے میں افواہیں پھیلائی گئیں۔ اس معاملے میں maintainability نہیں بنتی ہے۔ مسجد کے احاطے میں شیولنگ کی موجودگی ثابت نہیں ہوئی ہے۔ شیولنگ کا وجود بھی ثابت نہیں ہوا ہے۔ مسلم فریق نے الزام لگایا کہ شیولنگ کی افواہیں جذبات کو بھڑکانے کے لیے پھیلائی گئی ہیں۔

    اب دہلی میں مندر کے پاس نہیں بیچا جا سکے گا Non Veg کھانا، NDMC اٹھانے جارہی ہے یہ بڑا قدم

    ہندو فریق نے بھی لگائے سنگین الزامات
    گیانواپی مسجد کیس کی سماعت کے دوران ہندو فریق کی جانب سے سنگین الزامات لگائے گئے۔ وضو خانہ کمپلیکس میں پائے جانے والے کالے پتھر کو شیو لنگ بتاتے ہوئے ہندو فریق کی جانب سے وکیل نے الزام لگایا کہ اسے نقصان پہنچا ہے۔ وکیل وشنو جین نے عدالت کو بتایا کہ شیولنگ کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شیولنگ کو توڑنے کی سازش کی جارہی ہے۔ کیس کی سماعت ڈسٹرکٹ جج اے کے وشواس کی عدالت میں جاری ہے۔ ہندو جماعتوں کی جانب سے الزامات لگائے جانے کے بعد معاملہ گرما گیا ہے۔

    Modi@8:کشمیر میں Article-370 کو ہٹایا گیا، جانئے پی ایم مودی کےبڑے فیصلے کیسے بدلاہندستان

    مسلم فریق نے مقدمہ خارج کرنے کا مطالبہ کیا۔
    انجمن انتظامیہ مسجد کمیٹی کی جانب سے گیانواپی مسجد کیس کو آرڈر 7/11 کے تحت خارج کرنے کا مطالبہ کیا گیا ۔ مسلم فریق کی جانب سے دعویٰ کیا گیا کہ ہندو فریق کی جانب سے دائر مقدمہ ناقابل سماعت ہے۔ اسے خارج کیا جانا چاہیے۔

     
    Published by:Sana Naeem
    First published: