ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

حج کرائے میں اضافہ مایوس کن ، مودی حکومت پر عازمین کے ساتھ بے اعتنائی برتنے کا الزام

آل انڈیا حج سیوا سمیتی نے حج 2018 کے اعلان کو عازمین کے لئے مہنگا بتاتے ہوئے کرائے میں کمی کے مطالبے پر توجہ دینے کے برعکس کرائے میں اضافہ کر دینے کو مایوس کن قرار دیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 13, 2017 06:20 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
حج کرائے میں اضافہ مایوس کن ، مودی حکومت پر عازمین کے ساتھ بے اعتنائی برتنے کا الزام
خانہ کعبہ ۔ فائل فوٹو

وارانسی : آل انڈیا حج سیوا سمیتی نے حج 2018 کے اعلان کو عازمین کے لئے مہنگا بتاتے ہوئے کرائے میں کمی کے مطالبے پر توجہ دینے کے برعکس کرائے میں اضافہ کر دینے کو مایوس کن قرار دیا ہے۔ یہاں اردلی بازار میں حاجیوں کے استقبالیہ جلسے سے خطاب کر تے ہوئے سمیتی کے صدر اور حج کمیٹی آف انڈیا کے سابق رکن حافظ نوشاد اعظمی نے آج کہا کہ وارانسی سے فی عازم کرایہ جہاں 92387روپے طے کیا گیا ہے وہیں سری نگر کے عازم کو سفر حج کے کئے 190692 روپے ادا کرنے ہوں گے۔اسی طرح کلکتے سے 83027 روپے اور 115646 روپے کرایا کسی طرح مناسب نہیں۔یہ اطلاع یہاں جاری ایک ریلیز میں دی گئی ہے۔

مسٹر اعظمی نے موجودہ حکومت پرعازمین کے ساتھ بے اعتنائی برتنے اور وارانسی امبارکیشن پوائنٹ بند کرنے کی سوچ رکھنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ 2013 میں کی جانے والی 20 فیصد کی تخفیف 2017 میں بحال تو کر دی گئی لیکن حج کوٹے میں کوئی اضافہ نہیں کیا گیا ۔ اسی طرح پانی کے جہاز سے سفر حج کے معلنہ منصوبے پر بھی عمل نہیں ہوا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ سپریم کورٹ نے 2022 تک مرحلہ وار سبسڈی ختم کرنے کا جو حکم دیا ہے اسے ابھی جاری رکھنا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ سمیتی ہندستانی عازمین کی سہولت اور انصاف کی جدو جہد جاری رکھتے ہوئے امبارکیشن پوائنٹ بند کرنے کی کسی طرح کی کوشش کامیاب نہیں ہونے دے گی۔

First published: Nov 13, 2017 06:20 PM IST