உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وسیم رضوی کا وصیت نامہ! بولے، موت کے بعد دفنانے کی بجائے میری ہندو رسم و رواج سے ادا ہو آخری رسوم، جانیں کسے دیا مکھ اگنی دینے کا حق

    انہوں نے مرنے کے بعد قبرستان میں دفنانے کے بجائے شمشان گھاٹ میں جلائے جانے کی خواہش ظاہر کی ہے۔ رضوی نے اپنی وصیت میں ڈاسنا مندر کے مہنت نرسمہا نندا سرسوتی کو مکھ اگنی دینے کا حق دیا ہے۔ ا

    انہوں نے مرنے کے بعد قبرستان میں دفنانے کے بجائے شمشان گھاٹ میں جلائے جانے کی خواہش ظاہر کی ہے۔ رضوی نے اپنی وصیت میں ڈاسنا مندر کے مہنت نرسمہا نندا سرسوتی کو مکھ اگنی دینے کا حق دیا ہے۔ ا

    وسیم نے کہا کہ یہ میرا جرم ہے کہ میں نے پیغمبر اسلام حضرت محمدﷺ پر کتاب لکھی ہے اس لیے بنیاد پرست مجھے قتل کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے اعلان کیا ہے کہ وہ مجھے قبرستان میں جگہ نہیں دیں گے۔

    • Share this:
      اپنے بیانات کی وجہ سے سرخیوں میں رہنے والے اتر پردیش شیعہ سینٹرل وقف بورڈ کے رکن اور سابق چیئرمین وسیم رضوی (Waseem Rizvi) ایک بار پھر خبروں میں ہیں۔ وسیم رضوی نے اپنی وصیت کر دی ہے۔ اس میں انہوں نے مرنے کے بعد قبرستان میں دفنانے کے بجائے شمشان گھاٹ میں جلائے جانے کی خواہش ظاہر کی ہے۔ رضوی نے اپنی وصیت میں ڈاسنا مندر کے مہنت نرسمہا نندا سرسوتی کو مکھ اگنی دینے کا حق دیا ہے۔ اس حوالے سے وسیم رضوی نے ایک ویڈیو بھی جاری کی ہے۔

      وسیم رضوی نے اتوار کو ویڈیو جاری کرتے ہوئے کہا کہ ملک اور دنیا میں مجھے قتل کرنے اور سر قلم کرنے کی سازش کی جا رہی ہے اور اس پر انعام کی بات ہو رہی ہے۔ رضوی کا کہنا ہے کہ میں نے سپریم کورٹ میں قرآن مجید کی 26 آیات ہٹانے کو چیلنج کیا تھا۔ وسیم نے کہا کہ یہ میرا جرم ہے کہ میں نے پیغمبر اسلام حضرت محمدﷺ پر کتاب لکھی ہے اس لیے بنیاد پرست مجھے قتل کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے اعلان کیا ہے کہ وہ مجھے قبرستان میں جگہ نہیں دیں گے۔ اس لیے میری موت کے بعد ملک میں امن رہے، اس لیے میں نے وصیت نامہ لکھ کر انتظامیہ کو بھیج دیا ہے کہ میری موت کے بعد ہندو رسم و رواج کے مطابق میرا آخری رسومات ادا کیا جائے۔



      ان کا مزید کہنا ہے کہ 'میرے مرنے کے بعد بھی امن قائم رہے، اس لیے میں نے وصیت نامہ لکھا ہے کہ جو میرا جسم ہے وہ ہندو دوست ہیں، وہ ان کو لکھنؤ میں دے دیا جائے اور مجھے چتا بنا کر آخری رسوم ادا کر دیجائے۔ اور ہمارے یتی نرسمہا نندا سرسوتی جی چتا کو مکھ اگنی دیں گے، میں نے ان کو اجازت دیدی ہے۔ آپ کو بتاتے چلیں کہ جب سے وسیم رضوی کی یہ کتاب منظر عام پر آئی ہے، مسلم کمیونٹی ان کے خلاف احتجاج سے بھڑک اٹھی ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: