உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    China: پینگونگ تسو ریجن میں دوسری چین کی طرف سے پل بنانے کی کوشش؟ ’ہم کررہےہیں نگرانی‘

    ہندوستانی طلبا کے لئے اچھی خبر، پڑھائی کے لئے واپس چین لوٹنے کی ملی اجازت

    ہندوستانی طلبا کے لئے اچھی خبر، پڑھائی کے لئے واپس چین لوٹنے کی ملی اجازت

    باغچی نے یہ بھی کہا کہ ہندوستان نے چینی فریق کے ساتھ سفارتی اور فوجی سطح پر بات چیت کے مختلف دور کیے ہیں اور یہ سلسلہ جاری رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ آپ کو یہ بھی معلوم ہے کہ وزیر خارجہ وانگ یی اس سال مارچ میں یہاں تھے اور وزیر خارجہ نے ان سے ہماری توقعات سے آگاہ کیا تھا۔

    • Share this:
      ان خبروں کے سامنے آنے کے بعد کہ چین مشرقی لداخ میں پینگونگ تسو (Pangong Tso) پر دوسرا پل بنا رہا ہے، ہندوستان نے جمعرات کو کہا کہ جس علاقے کی تعمیر کی اطلاع دی جارہی ہے وہ کئی دہائیوں سے اس ملک کے قبضے میں ہے۔ ایک میڈیا بریفنگ میں وزارت خارجہ کے ترجمان ارندم باغچی (Arindam Bagchi) نے کہا کہ ہندوستان اس طرح کی پیش رفت پر نظر رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے نام نہاد پل کے بارے میں میڈیا رپورٹس اور دیگر رپورٹس دیکھی ہیں… کسی نے کہا کہ دوسرا پل ہے یا اگر یہ موجودہ پل کی توسیع ہے۔

      باغچی نے کہا کہ ہندوستان نے ہمیشہ محسوس کیا کہ رپورٹوں میں جس علاقے کا حوالہ دیا گیا ہے وہ کئی دہائیوں سے چین کے قبضے میں ہے۔ وہ پینگونگ تسو کے علاقے میں چین کی جانب سے تعمیر کیے جانے والے پل پر سوالات کا جواب دے رہے تھے۔

      باغچی نے یہ بھی کہا کہ ہندوستان نے چینی فریق کے ساتھ سفارتی اور فوجی سطح پر بات چیت کے مختلف دور کیے ہیں اور یہ سلسلہ جاری رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ آپ کو یہ بھی معلوم ہے کہ وزیر خارجہ وانگ یی اس سال مارچ میں یہاں تھے اور وزیر خارجہ نے ان سے ہماری توقعات سے آگاہ کیا تھا۔

      باغچی نے کہا کہ وزیر خارجہ نے اس کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ اپریل 2020 سے چین کی تعیناتیوں سے پیدا ہونے والے رگڑ اور تناؤ کو دو پڑوسیوں کے درمیان معمول کے تعلقات کے ساتھ نہیں ملایا جا سکتا۔ انہوں نے مزید کہا کہ لہذا ہم چینی فریق کے ساتھ سفارتی اور فوجی دونوں سطحوں پر رابطے میں رہیں گے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ دونوں وزراء کی طرف سے دی گئی ہدایات پر پوری طرح عمل کیا جائے۔

      مزید پڑھیں: Shahi Eidgah Case: متھراضلعی عدالت نے ہندو فریق کی درخواست کی قبول ، اب ہوگی سماعت

      بدھ کے روز چینی تعمیرات سے واقف لوگوں نے کہا کہ چین مشرقی لداخ میں تزویراتی طور پر اہم پینگونگ تسو کے آس پاس اپنے زیر قبضہ علاقے میں دوسرا پل بنا رہا ہے۔

      مزید پڑھیں: دو سال بعد جیل سے رہا ہوئے Azam Khan، اکھلیش نے کیا پرتپاک استقبال، بولے! جھوٹ کے لمحات ہوتے ہیں صدیاں نہیں

      یہ پل مشرقی لداخ میں کئی رگڑ پوائنٹس پر ہندوستانی اور چینی فوجوں کے درمیان دو سال سے زائد عرصے سے جاری تعطل کے درمیان تعمیر کیا جا رہا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: