உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Weather News Updates: شمال مشرقی ریاستوں میں شدید بارش، سیلاب میں 3 افراد ہلاک، 25,000 کے قریب متاثر

    Weather Changing: کیسا قہر ڈھانے والا ہے موسم؟ تیزی سے بڑھ رہے ہیں گرمی وا لے دن، پارہ چھو رہا ریکارڈ توڑ بلندی ۔ تصویر : سوشل میڈیا ۔

    Weather Changing: کیسا قہر ڈھانے والا ہے موسم؟ تیزی سے بڑھ رہے ہیں گرمی وا لے دن، پارہ چھو رہا ریکارڈ توڑ بلندی ۔ تصویر : سوشل میڈیا ۔

    آسام اور پڑوسی ریاستوں میگھالیہ اور اروناچل پردیش میں کئی دنوں سے ہونے والی شدید بارش کے بعد مختلف ندیوں کے پانی کی سطح بتدریج بڑھ رہی ہے اور کوپلی ندی میں پانی خطرے کی سطح سے اوپر جا رہا ہے۔

    • Share this:
      موسم کی خبروں کی تازہ ترین خبریں (Weather News Updates): بڑے پیمانے پر گرمی کی لہر اور شدید گرمی ہفتہ کو ہند-گنگا کے میدانی علاقوں اور شمال مغربی ہندوستان کے میدانی علاقوں پر غالب رہی۔ اتر پردیش کے بانڈہ میں سب سے زیادہ درجہ حرارت 48.8 ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا۔ اس سے قبل دہلی میں اتوار کے لیے اورنج الرٹ جاری کیا گیا اور آئی ایم ڈی کا کہنا ہے کہ 16 اور 17 مئی کو بھی گرمی جاری رہنے کا امکان ہے۔

      ہندوستان کے محکمہ موسمیات (India Meteorological Department) نے کہا کہ مغربی راجستھان، ہریانہ، چندی گڑھ، دہلی، مشرقی راجستھان کے بہت سے حصوں، مشرقی اتر پردیش کے جنوبی حصوں، مشرقی مدھیہ پردیش کے شمالی حصوں، اور پنجاب کے کچھ حصوں میں گرمی کی لہر سے لے کر شدید گرمی کی لہر کے حالات دیکھے گئے۔ آئی ایم ڈی نے کہا کہ شمال مغربی مدھیہ پردیش اور جنوب مغربی اتر پردیش کے زیادہ تر حصوں میں بھی گرمی کی لہر کے حالات دیکھے گئے۔

      تازہ ترین اپ ڈیٹس:

      • اس سال آسام میں سیلاب کی پہلی لہر نے چھ اضلاع میں تقریباً 25,000 افراد کو متاثر کیا ہے۔ ہفتہ کو دیما ہاساو ضلع کے ہافلونگ علاقے میں مٹی کے تودے گرنے سے تین افراد ہلاک ہو گئے تھے جن میں ایک خاتون بھی شامل تھی۔

      آسام اور پڑوسی ریاستوں میگھالیہ اور اروناچل پردیش میں کئی دنوں سے ہونے والی شدید بارش کے بعد مختلف ندیوں کے پانی کی سطح بتدریج بڑھ رہی ہے اور کوپلی ندی میں پانی خطرے کی سطح سے اوپر جا رہا ہے۔

      آسام اسٹیٹ ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (اے ایس ڈی ایم اے) کے سیلاب کے اعداد و شمار کے مطابق سیلاب کے پہلے اسپیل نے چھ اضلاع کے 94 دیہاتوں میں 24,681 افراد کو متاثر کیا۔ جس میں کاچار، دھیماجی، ہوجائی، کاربی انگلونگ ویسٹ، ناگون، اور کامروپ (میٹرو) شامل ہے۔ سیلاب سے متاثرہ اضلاع میں سیلابی پانی سے 1732.72 ہیکٹر فصلیں زیر آب آگئی ہیں۔

      مزید پڑھیں: National Education Policy:قومی تعلیمی پالیسی کی تقریباً 200 سفارشوں پر اسی سال ہوگا عمل

      • آئی ایم ڈی وارننگ میں کہا گیا ہے کہ شدید گرمی کی لہر کے ساتھ بہت سے حصوں میں گرمی کی لہر کے حالات 15 مئی کو اسی علاقے میں الگ تھلگ جیبوں میں شدت اور مقامی میں کمی کے ساتھ دیکھے جائیں گے۔ 15 مئی کو مدھیہ پردیش میں 16 اور 17 مئی کو کچھ/ الگ تھلگ حصوں میں گرمی کی لہر کے حالات الگ تھلگ جیبوں میں شدید گرمی کی لہر کے ساتھ بہت سے حصوں میں حالات بہت زیادہ امکان ہیں۔

      مزید پڑھیں: Green Hydrogen Mission:مستقبل کے ایندھن ہائیڈروجن سے ہندوستان کی ہوگی اونچی پرواز

      • وہ مقامات جہاں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 47 ڈگری سیلسیس سے زیادہ ریکارڈ کیا گیا وہ ہیں: گنگا نگر (48.3)، بیکانیر (48.2)، چورو (47.5)، پھلودی، جیسلمیر (دونوں 47.4)، پیلانی (47.3) - سبھی راجستھان، بھنڈ (48.7)، نوگانگ , کھجوراہو (دونوں 47.6) - سبھی مدھیہ پردیش میں، منگیش پور (47.2)، نجف گڑھ (47) - دونوں دہلی میں؛ سرسا (47.8)، حصار (47.5) - دونوں ہریانہ، اور جھانسی (47.3) اتر پردیش شامل ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: