ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جی ڈی پی کے غوطہ کھانے سے کیا بڑھنے لگی ہے مہنگائی ، اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں کیوں ہونے لگا اضافہ

گزشتہ ماہ سے روز مرہ کی ضرورت کی اشیاء اور سبزی کی قیمتوں میں مسلسل ہو رہے اضافے نے آنے والے دنوں میں حالات کے اور مشکل ہونے کا اندیشہ پیدا کر دیا ہے۔

  • Share this:
جی ڈی پی کے غوطہ کھانے سے کیا بڑھنے لگی ہے مہنگائی ، اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں کیوں ہونے لگا اضافہ
گزشتہ ماہ سے روز مرہ کی ضرورت کی اشیاء اور سبزی کی قیمتوں میں مسلسل ہو رہے اضافے نے آنے والے دنوں میں حالات کے اور مشکل ہونے کا اندیشہ پیدا کر دیا ہے۔

کورونا وبا کے قہر سے بچنے کی کوشش میں جہاں لاک ڈاؤن نے اقتصادی ترقی کی رفتار کو دھیما کر دیا وہیں اشیاء ضروریہ کی بڑھتی قیمتوں سے مہنگائی کی مار نے عام لوگوں کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے۔ گزشتہ ماہ سے روز مرہ کی ضرورت کی اشیاء اور سبزی کی قیمتوں میں مسلسل ہو رہے اضافے نے آنے والے دنوں میں حالات کے اور مشکل ہونے کا اندیشہ پیدا کر دیا ہے۔ ملک کی جی ڈی پی کے ریکارڈ سطح تک غوطہ لگانے کے بعد اب آنے والے دنوں میں ملک کے اقتصادی حالت اور ترقی کی رفتار کو لیکر ماہرین طرح طرح کے خطرے ظاہر کر رہے ہیں لیکن سیدھا اثر اب اشیاء ضروریہ کی قیمتوں پر بھی نظر آنے لگا ہے۔


گزشتہ ماہ سے راشن کے سامان اور سبزی کی قیمتوں میں مسلسل ہو رہے اضافے نے لوگوں میں مہنگائی کے اور زیادہ بڑھنے کا خوف پیدا کر دیا ہے اور اسکا اثر بازار میں بھی نظر آ رہا ہے۔ وہیں ماہرین کا ماننا ہے کہ کورونا وبا قہر نے دنیا کے ہر ملک کے اقتصادی حالت کو بری طرح متاثر کیا ہے لیکن ہندوستان جیسے بڑی اور غریب آبادی والے ملک میں اسکا اثر زیادہ نظر آ رہا ہے جو آنے والے دنوں کے لیے خطرے کی گھنٹی ہے۔

ملک کی جی ڈی پی کے منفی ہونے کے اثرات کاروبار اور روزگار پر نظر آنے لگے ہیں ایسے میں بڑھتی مہنگائی کی دوہری مار عوام پر پڑنا لازمی ہے۔


ایک طرف عام لوگ بڑھتی مہنگائی کی وجوہات سمجھ پانے سے قاصر ہیں لوگوں کا کہنا ہے کہ جہاں لاک ڈاؤن کے دوران سبزی کی قیمتیں کافی کم ہو گئی تھی جبکہ سب کچھ بند تھا۔ وہیں ان لاک کی شروعات کے بعد سے سبزیوں کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے ، جبکہ ماہر اقتصادیات مانتے ہیں کہ جی ڈی پی کے غوطہ کھانے سے اسکا اثر ہر سیکٹر پر پڑنا لازمی ہے جو آنے والے دنوں میں نظر آئے گا۔
Published by: sana Naeem
First published: Sep 09, 2020 03:14 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading