உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Droupadi Murmu: ہندوستان کے صدور کی تاریخ میں 25 جولائی کو کیوں حاصل ہے خاص مقام؟ جانیے تفصیل

    دروپدی مرمو (تصویر: اے این آئی)

    دروپدی مرمو (تصویر: اے این آئی)

    راجندر پرساد نے 26 جنوری 1950 کو حلف لیا جس دن 1952 میں ہندوستان ایک جمہوری ملک بنا۔ انہوں نے پہلا صدارتی انتخاب جیتا اور دوسرے صدارتی انتخاب میں کامیابی حاصل کی۔

    • Share this:
      دروپدی مرمو (Droupadi Murmu) آج یعنی پیر کو ہندوستان کے صدر (President of India) کی حیثیت سے حلف لینے کے لیے تیار ہیں۔ سال 1977 کے بعد سے مسلسل دسویں صدر ہوں گی جو اسی تاریخ یعنی 25 جولائی کو حلف لیں گی۔ مرمو، رام ناتھ کووند (Ram Nath Kovind) کی جگہ لیں گی، جنہوں نے اپنا آخری خطاب کیا۔ انھوں قوم کے سامنے اپنے آبائی گاؤں کو یاد کرتے ہوئے اور اپنے اسکول کے استاد سے آشیرواد مانگا۔

      پارلیمنٹ کے سینٹرل ہال میں منعقد ہونے والی ہندوستان کی پہلی قبائلی خاتون صدر دروپدی مرمو کی حلف برداری کے لیے وسیع انتظامات کیے گئے ہیں۔ منتخب صدر، سبکدوش ہونے والے کووند کے ساتھ سیٹ کا تبادلہ کریں گے، تاکہ وہ ہندوستان کے 15ویں صدر بن سکیں۔

      25 جولائی ہندوستان کے صدور کی حلف برداری کے پیچھے کی تاریخ کیا ہے؟

      اگرچہ اس تاریخ کو ہونے والے صدور کی حلف برداری کی تقریبات کے پیچھے کوئی تحریری اصول نہیں ہے، لیکن 1977 کے ریکارڈ سے پتہ چلتا ہے کہ عام طریقہ کار سے منتخب ہونے والے ہر صدر نے 25 جولائی کو حلف اٹھایا ہے۔

      اس سے مستثنیٰ ہندوستان کے پہلے صدر راجندر پرساد اور ان کے جانشین سرو پلی رادھا کرشنن، ذاکر حسین اور فخر الدین علی احمد تھے۔

      ہندوستان کے صدور کی مکمل فہرست:

      راجندر پرساد نے 26 جنوری 1950 کو حلف لیا جس دن 1952 میں ہندوستان ایک جمہوری ملک بنا۔ انہوں نے پہلا صدارتی انتخاب جیتا اور دوسرے صدارتی انتخاب میں کامیابی حاصل کی۔

      13 مئی 1962 کو ان کے بعد سرو پلی رادھا کرشنن نے صدر کا عہدہ سنبھالا اور 13 مئی 1967 تک اس عہدے پر رہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      ہندوستان کے چھٹے صدر نیلم سنجیوا ریڈی نے 25 جولائی 1977 کو حلف لیا۔

      32 سال کی عمر میں کرکٹ تاریخ کی 10ویں سب سے بڑی اننگ، لارا۔برینڈن کی قطار میں شامل

      وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے چین پر پنڈت نہرو کی تنقید نہیں کرنے سے متعلق کہی یہ بڑی بات

      اس کے بعد گیانی زیل سنگھ، آر وینکٹارمن، شنکر دیال شرما، کے آر نارائنن، اے پی جے عبدالکلام، پرتیبھا پاٹل، پرنب مکھرجی اور رام ناتھ کووند سمیت یکے بعد دیگرے صدور نے ایک ہی تاریخ کو حلف اٹھایا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: