ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : تبلیغی جماعت سے تعلق رکھنے والے کیوں ہیں پریشان

میرٹھ میں جمعیت علماء ہند شہر کے صدر قاضی زین الراشدین کا کہنا ہے کہ شہر کے مختلف علاقوں ہمایوں نگر، مومن نگر ، سمر گارڈن ،ارا گارڈن جیسے علاقوں کے لوگوں نے شکایت کی ہے کہ مخبروں کی غلط نشان دہی پر ان علاقوں میں رہنے والے ایسے افراد کو بھی پولیس نشانہ بنا رہی ہے جو ایک سال یا چھ ماہ قبل جماعت میں گئے تھے۔

  • Share this:
میرٹھ : تبلیغی جماعت سے تعلق رکھنے والے کیوں ہیں پریشان
میرٹھ : تبلیغی جماعت سے تعلق رکھنے والے کیوں ہیں پریشان

میرٹھ۔ دہلی واقع نظام الدین مرکز میں کورونا انفیکشن کے مریضوں کے معاملے سامنے آنے  کے بعد سے ہی تبلیغی جماعت میں شامل ہونے والوں کی تلاش شروع ہو گئی تھی جہاں انفیکشن کو پھیلنے سے روکنے کے لئے ٹیسٹ بھی کیے جا رہے تھے اور رابطے میں آنے والوں کو کوارنٹین بھی کیا جا رہا تھا، وہیں اب میرٹھ میں اس طرح کی بھی خبریں مل رہی ہیں جہاں کئی علاقوں میں ایسے افراد بھی پولیس کے نشانے پر آ رہے ہیں جو چھ ماہ یا ایک سال پہلے جماعت میں گئے تھے لیکن غلط نشاندہی کے سبب پریشانی میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی سماجی اور ملی تنظیموں کے ذمہ داران نے یہ الزام بھی لگایا ہے کہ کوارنٹین میں رکھے گئے جماعتیوں کو ان مراکز پر انتظامیہ کی بدنظمی کا بھی شکار ہونا پڑ رہا ہے ، جبکہ ڈی ایم میرٹھ نے اس طرح کے معاملوں کی جانکاری ہونے سے انکار کردیا ہے۔


میرٹھ میں جمعیت علماء ہند شہر کے صدر قاضی زین الراشدین کا کہنا ہے کہ شہر کے مختلف علاقوں ہمایوں نگر، مومن نگر ، سمر گارڈن ،ارا گارڈن جیسے علاقوں کے لوگوں نے شکایت کی ہے کہ مخبروں کی غلط نشان دہی پر ان علاقوں میں رہنے والے ایسے افراد کو بھی پولیس نشانہ بنا رہی ہے جو ایک سال یا چھ ماہ قبل جماعت میں گئے تھے۔ قاضی زین الراشدین کا کہنا ہے کہ اس طرح کے معاملوں میں احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔


قاضی زین الراشدین کا کہنا ہے کہ اس طرح کے معاملوں میں احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔


قاضی زین الراشدین نے بتایا کہ کوارنٹین میں رکھے گئے جماعت سے تعلق رکھنے والے افراد نے یہ بھی شکایت کی ہے کہ کوارنٹین سینٹروں پر بدنظمی کے سبب ان کو دشواریوں کا سامنا ہے ، کھانے پینے کے واجب انتظامات سے لے کر صاف صفائی تک کا مسئلہ پیدا ہو رہا ہے ، سماجی تنظیموں کے ان ذمہ داران نے ان افراد کے مطالبات پر غور کرنے کی ضلع انتظامیہ سے اپیل کی ہے۔
First published: Apr 16, 2020 05:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading