உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان میں کورونا سے کیوں ہوئیں اتنی زیادہ اموات؟ ریسرچ میں ہوا یہ بڑا انکشاف

    ہندوستان میں کورونا سے کیوں ہوئیں اتنی زیادہ اموات؟ ریسرچ میں ہوا یہ بڑا انکشاف۔ علامتی تصویر ۔ اے پی ۔

    ہندوستان میں کورونا سے کیوں ہوئیں اتنی زیادہ اموات؟ ریسرچ میں ہوا یہ بڑا انکشاف۔ علامتی تصویر ۔ اے پی ۔

    ہندوستان میں کورونا کے کچھ بڑے پیمانے کی اسٹڈیز میں سے ایک کے نتیجہ سے پتہ چلتا ہے کہ مدورے کے جنوبی ضلع کے مریضوں میں چین ، یوروپ ، جنوبی کوریا اور امریکہ کے موازنہ میں مرنے کا زیادہ رسک تھا ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : کورونا وائرس کا قہر ابھی کم نہیں ہوا ہے ۔ ہندوستان میں کورونا کی تیسری لہر کو لے کر ہورہی گفتگو کے درمیان یہ بات سامنے آئی ہے کہ ہندوستان میں انفیکشن کی لہروں میں اتنی تیزی کے پیچھے وجہ کیا ہے ۔ لینسیٹ کی ایک رپورٹ کے مطابق ہندوستان میں ہائی لیول کی پرانی بیماریوں جیسے ڈائبٹیز اور بلڈ پریشر کی وجہ سے وبا کے دوران دنیا کے دیگر سب سے زیادہ آبادی والے ممالک میں کورونا کی لہروں کو پھیلنے میں مدد ملی ۔

      بلومبرگ کی ایک رپورٹ کے مطابق ہندوستان میں کورونا کے کچھ بڑے پیمانے کی اسٹڈیز میں سے ایک کے نتیجہ سے پتہ چلتا ہے کہ مدورے کے جنوبی ضلع کے مریضوں میں چین ، یوروپ ، جنوبی کوریا اور امریکہ کے موازنہ میں مرنے کا زیادہ رسک تھا ، بھلے ہی ان میں سے 63 فیصد متاثرین میں علامتیں نہیں تھیں ۔ دی لینسیٹ میں شائع رپورٹ کے مطابق اس کے پیچھے کمیونٹی میں پرانی صحت صورتحال کا بڑا رول ہوسکتا ہے ۔

      ریسرچ کرنے والوں نے پایا کہ کم از کم ایک موجودہ طبی حالت یا بلڈ پریشر اور ذیابیطس وغیرہ میں مبتلا کووڈ 19 مریضوں میں اموات کی شرح 5.7 فیصد تھی جو کہ صحت مند لوگوں کے لیے 0.7 فیصد تھی۔ یہ ڈیٹا ہندوستان کی پہلی لہر کے دوران 20 مئی سے 31 اکتوبر 2020 تک مدورے میں آر ٹی ۔ پی سی آر ٹیسٹ سے گزرنے والے 400000 سے زیادہ لوگوں سے لیا گیا تھا ۔

      محققین نے اس جانب بھی توجہ مبذول کرائی ہے کہ ہندوستان میں کورونا کے معاملات اور اس سے ہونے والی اموات کو درج کرنے میں بھی گڑبڑی پائی گئی ہے ۔ کچھ سائنسدانوں کا ماننا ہے کہ ہندوستان میں کورونا وائرس کی وجہ سے پچاس لاکھ لوگوں کی موت ہوئی ہے ۔

      ملک میں کورونا کے سرگرم معاملوں میں اضافہ

      ادھر ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس (کووڈ 19) کے نئے معاملوں کے مقابلہ اس سے ٹھیک ہونے والے لوگوں کی تعداد ایک بار پھر کم رہی، جس کی وجہ سے فعال معاملات میں تقریباً ڈھائی ہزار کا اضافہ ہوا ، جس سے یہ تعداد 38767 ہو گئی ہے۔ جمعہ کو ملک میں 63 لاکھ 80 ہزار 937 افراد کو کورونا کی ویکسین لگائی گئی اور اب تک 53 کروڑ 61 لاکھ 89 ہزار 903 افراد کو ویکسین دی جا چکی ہے۔

      مرکزی وزارت صحت کی جانب سے ہفتہ کی صبح جاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا کے 38667 نئے معاملوں کی آمد کے ساتھ ہی متاثرہ افراد کی تعداد تین کروڑ 21 لاکھ 46 ہزار 493 ہو گئی ہے۔ اس دوران 35 ہزار 743 مریضوں کی صحت یابی کے بعد اس وبا کو شکست دینے والے افراد کی کل تعداد تین کروڑ 13 لاکھ 38 ہزار 88 ہو گئی ہے۔ سرگرم معاملے 2446 بڑھ کر تین لاکھ 87 ہزار 673 ہو گئے ہیں۔ اسی عرصے میں 478 مریضوں کی موت کے باعث اموات کی تعداد بڑھ کر چار لاکھ 30 ہزار 732 ہو گئی ہے۔ ملک میں ہفتہ وار پازیٹیو شرح 2.05 فیصد رہی۔

      یو این آئی ان پٹ کے ساتھ ۔ 
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: