ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بیوی جنسی تعلقات میں نہیں لے رہی ہے دلچسپی، شوہر سے کہتی ہے بوائے فرینڈ جیسا برتاو کرو

26 سال کی عمر میں ہم نے لو میرج کیا تھا اور عمر کے لحاظ سے ہم بہتر حالت میں ہیں۔ میری اہلیہ آج کل جنسی تعلقات میں دلچسپی نہیں لے رہی ہے اور وہ ان دنوں اس کے جم میں آنے والے کئی مانسل اور خوبصورت دکھنے والے لڑکوں کے بارے میں بات کرتی رہتی ہے۔ وہ ہمیشہ طعنے مارتی ہے کہ تم ایسے برتاو کرو جیسے میرے بوائے فرینڈ ہو نہیں تو میں کسی دوسرے کی تلاش کروں گی۔

  • Share this:
بیوی جنسی تعلقات میں نہیں لے رہی ہے دلچسپی، شوہر سے کہتی ہے بوائے فرینڈ جیسا برتاو کرو
علامتی تصویر

سوال نمبر 16: 26 سال کی عمر میں ہم نے لو میرج کیا تھا اور عمر کے لحاظ سے ہم بہتر حالت میں ہیں۔ میری اہلیہ آج کل جنسی تعلقات میں دلچسپی نہیں لے رہی ہے اور وہ ان دنوں اس کے جم میں آنے والے کئی مانسل اور خوبصورت دکھنے والے لڑکوں کے بارے میں بات کرتی رہتی ہے۔ وہ ہمیشہ طعنے مارتی ہے کہ تم ایسے برتاو کرو جیسے میرے بوائے فرینڈ ہو نہیں تو میں کسی دوسرے کی تلاش کروں گی۔ آج کل ہمارے درمیان ٹھیک سے بات چیت نہیں ہو رہی ہے کیونکہ میں اپنے اسٹارٹ اپ میں مصروف رہتا ہوں اور وہ بھی کام کرتی ہے۔ حالانکہ مجھے اس پر بھروسہ ہے، لیکن اس کا جنسی تعلقات میں کم دلچسپی لینا اور اس طرح کی باتیں کرنے کی وجہ سے میں حیران ہوں۔ میں دکھنے میں اوسط ہوں اور پیسے اور جنسی تعلقات کو لے کر اس کی مجھ سے امیدیں کافی زیادہ ہیں، اس لئے مجھے یہ سمجھ نہیں آرہا ہے کہ ان سب کے پس منظر میں کیا چل رہا ہے۔


سب سے پہلے تو میں وہ بات بتانا چاہوں گی، جو آپ کے سوال میں مجھے فوری طور پر نظر آرہا ہے کہ آپ کے اور آپ کی اہلیہ کے درمیان اس وقت صحتمند اور خوش آئند بات چیت نہیں ہے۔ تو ایک طرح سے آپ نے خود ہی اپنے سوالوں کا جواب دے دیا ہے۔ آپس میں صحتمند بات چیت آپ کی موجودہ پریشانی کو حل کرنے میں بہت زیادہ کامیاب ثابت ہوگی۔


واضح رہے کہ بیوی کے طعنے اور چڑھانے کا آپ پر اثر ہو رہا ہے۔ یہ آپ کو غیر محفوظ بنا رہا ہے۔ مجھے لگ رہا ہے کہ آپ کیسے دکھ رہے ہیں، آپ کی مالی حالت اور جنسی طاقت سے متعلقہ عدم تحفظ کو بھی یہ اور گہرا کر رہا ہے۔ ان باتوں پر آپ کو دھیان دینا چاہئے، میں آپ کو مشورہ دوں گی کہ آپ کسی تھیریپسٹ سے مشورہ کریں یا کسی ماہر نفسیات سے رابطہ کریں کیونکہ اس سے آپ کو اپنے سوابھیمان سے متعلق کچھ مدعوں کو ٹھیک کرنے میں مدد ملے گی۔ پھر، آپ کو اپنی بیوی کو یہ بتا دینا چاہئے کہ آپ کو یہ باتیں پریشان کر رہی ہیں۔ اگر وہ یہ کہتی ہیں کہ وہ تو یونہی مذاق کر رہی ہیں، تو بھی آپ انہیں بتا دیجئے کہ اس سے آپ کو واقعی نقصان ہو رہا ہے۔


اس موقع کا فائدہ اٹھا کر یہ جاننے کی کوشش کیجئے کہ اس طرح کے طعنے کی وجہ کیا ہے۔ آپ نے کہا ہے کہ وہ آپ سے ایک بوائے فرینڈ کی طرح برتاو کرنے کو کہتی ہیں، تو لگتا ہے کہ شادی کے بعد اب وہ شادی کے پہلے جیسے رومانس کی کمی محسوس کر رہی ہیں، جب آپ دونوں ایک دوسرے سے پیار کرتے تھے۔ جب ہم کافی مصروف ہوجاتے ہیں اور ہم اپنی روزی روٹی کمانے میں سب کچھ بھول جاتے ہیں، تو کئی بار ہم یہ سوچنا ہی چھوڑ دیتے ہیں کہ ہم پیسے کمانے کے لئے اتنی محنت کیوں کر رہے ہیں۔

آپ کچھ دنوں کے لئے کام چھوڑیئے اور انہیں بھی چھٹی لینے کو کہئے اور ایک ساتھ کہیں گھومنے یا پکنک پر جائیے۔ آپ اس کے لئے ایسی جگہ کا انتخاب کرسکتے ہیں جہاں آپ شادی سے پہلے جاتے تھے۔ اگر آپ دونوں کے لئے پوری طرح چھٹی لینا ممکن نہیں ہے تو آپ کم از کم اتنا یقینی بنائیے کہ آپ کی زندگی اور نوکری پیشے میں خوشگوار توازن ہو۔ یہ طے کیجئے کہ آپ آفس کا کوئی کام گھر نہیں لائیں گے، ساتھ ساتھ کھانا کھائیں گے اور صبح میں ایک ہی ساتھ سیر کو جائیں گے۔ یہ یقینی بنائیے کہ آپ ایک دوسرے کے ساتھ عموماً اچھا وقت گزاریں، بھلے ہی وہ چھوٹا ہی کیوں نہ ہو۔ آپ ایک دوسرے کے ساتھ رہیں اور ٹی وی یا فون کو اپنے بیچ میں نہ آنے دیں،

اپنی سوچ کے بارے واضح اور ایماندار ہونے اور اپنے پارٹنر کے بارے میں کسی طرح کے عدم تحفظ کے جذبے کی بات کرنے میں کسی نہ کسی طرح کی شرط کی کوئی بات نہیں ہے۔ ان کو خفیہ رکھنا اور اس کو لے کر دن رات فکر مند رہنے سے آپسی تعلقات مزید خراب ہوں گے۔ اس سے ہر طرح کا خدشہ اور عدم تحفظ کی صورتحال پیدا ہوگی۔ اگر وہ اچھی اور ہمدردی رکھنے والی ہیں تو وہ آپ کی تشویش کو ضرور ہی سمجھیں گی اور آپ کو طعنے دینا اور چڑھانا بند کردیں گی اور اپنے تعلقات کی بہتری کے لئے آپ کے تعاون کریں گی۔ ہر تعلقات میں، شادی کے بعد بھی بہت ساری باتوں کا خیال رکھنا ہوتا ہے۔ اس کے لئے وقت، آپسی بات چیت اور دونوں کے عزم کی ضرورت ہوتی ہے، تبھی یہ کامیاب ہوسکتا ہے۔

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 08, 2020 11:59 PM IST