ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بریلی: تین طلاق کا ایک اور معاملہ آیا سامنے، گڑگڑانے پر سسر نے کہا، اب میری ہو جاو

اترپردیش کے بریلی ضلع سے تین طلاق کا ایک اور معاملہ سامنے آیا ہے۔

  • Share this:
بریلی: تین طلاق کا ایک اور معاملہ آیا سامنے، گڑگڑانے پر سسر نے کہا، اب میری ہو جاو
تین طلاق متاثرہ شادنا بی

اترپردیش کے بریلی ضلع سے تین طلاق کا ایک اور معاملہ سامنے آیا ہے۔ سی بی گنج پولیس اسٹیشن کے کانشی رام کالونی میں رہنے والی خاتون کے شوہر نے پہلے سے شادی شدہ ہونے کی بات چھپا کر نکاح کر لیا۔ اس کے بعد عورت کے حاملہ ہونے پر اسے مار پیٹ کر گھر سے نکال دیا۔ چھ ماہ بعد اسے فون پر تین طلاق دے دیا۔ بیٹی کے پیدا ہونے کے بعد جب وہ سسرال پہنچی تو شوہر نے اسے اپنانے سے انکار کر دیا۔ شوہر کے سامنے گڑگڑانے سے بھی جب وہ نہیں پگھلا تو متاثرہ اپنے سسر کے پاس گہار لگانے پہنچی۔ اس پر سسر نے کہا کہ وہ تو رکھے گا نہیں میرے ساتھ رہ لے۔ زندگی بھر رکھنے کو تیار ہوں۔ اس کے بعد متاثرہ نے ایس ایس پی دفتر میں انصاف کی گہار لگائی ہے۔


یہ پوری کہانی ہے شادنا بی کی۔ شادنا بی کا کہنا ہے کہ اس کی شادی 2013 ء میں میرگنج کے محمد عارف سے ہوئی تھی۔ اس کا الزام ہے کہ عارف نے اپنے شادی شدہ ہونے کی اصلیت کو چھپا کر اس سے نکاح کر لیا تھا۔ اس کے بعد جب شادنا چار مہینے کی حاملہ ہوئی تو اسے مارپیٹ کر گھر سے نکال دیا۔ چھ مہینے پہلے عارف نے فون پر اسے تین بار طلاق دے دیا۔ بیٹی کی پیدائش کے بعد جب شادنا بی سسرال پہنچی تو شوہر نے اسے ساتھ رکھنے سے انکار کر دیا۔


شادنا نے بچی کا واسطہ بھی دیا لیکن عارف نہیں پگھلا اور بولا 'میں نے تجھے طلاق دے دی ہے۔ اب میں سات شادیاں کروں گا۔ اس کے بعد شادنا جب شوہر کی شکایت لے کر سسر کے پاس پہنچی تو اس نے کہا کہ وہ تو رکھے گا نہیں، میرے ساتھ رہ لے۔


اس کے بعد شادنا بی نے 'عام آواز' تنظیم کی بانی سے مل کر انصاف کی فریاد لگائی۔ اس کے بعد بدھ کو 'عام آواز' تنظیم کی بانی فہیم یاسمین اور صدر سید شارق علی متاثرہ کو لے کر ایس ایس پی آفس پہنچے۔

شکایت پینل کے انچارج جے پرکاش نے بتایا کہ جانچ کر کارروائی کے لئے سی بی گنج تھانہ کو ہدایت دی گئی ہے۔ جلد ہی قانونی کارروائی کی جائے گی۔
First published: Jul 19, 2018 01:41 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading