ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

چلتی کار میں خاتون کے ساتھ درندگی، ریپ کے بعد سڑک پر چھوڑ کر مجرم ہوئے فرار

اسپتال میں نرس کے طور پر خدمات انجام دینے والی یہ خاتون رات میں ڈیوٹی ختم ہونے کے بعد رجت نام کے اس شخص کے ساتھ گھر جانے کے لیے کار میں سوار ہوئی تھی لیکن کچھ دیر بعد رجت کے تین اور دوست کار میں سوار ہو گئے اور پھر جاگراتی وہار علاقے میں چلتی کار میں چاروں افراد نے خاتون کے ساتھ درندگی کرنے کے بعد سڑک پر اُتار کر فرار ہو گئے۔

  • Share this:
چلتی کار میں خاتون کے ساتھ درندگی، ریپ کے بعد سڑک پر چھوڑ کر مجرم ہوئے فرار
چلتی کار میں خاتون کے ساتھ درندگی، ریپ کے بعد سڑک پر چھوڑ کر مجرم ہوئے فرار

میرٹھ ۔ چلتی کار میں ایک خاتون سے درندگی کا ایک معاملہ میرٹھ میں سامنے آیا ہے۔ میڈیکل تھانہ علاقے کے جاگرتی وہار میں کار سوار چار افراد پر خاتون کے ساتھ درندگی کی واردات کو انجام دینے کا الزام ہے۔ پولیس کے مطابق ماچھرا گاؤں کے رہنے والے رجت تیاگی سے خاتون کی پہلے سے جان پہچان تھی۔ اسپتال میں نرس کے طور پر خدمات انجام دینے والی یہ خاتون رات میں ڈیوٹی ختم ہونے کے بعد رجت نام کے اس شخص کے ساتھ گھر جانے کے لیے کار میں سوار ہوئی تھی لیکن کچھ دیر بعد رجت کے تین اور دوست کار میں سوار ہو گئے اور پھر جاگراتی وہار علاقے میں چلتی کار میں چاروں افراد نے خاتون کے ساتھ درندگی کرنے کے بعد سڑک پر اُتار کر فرار ہو گئے۔


بدحواسی کی حالت میں کسی طرح اسپتال پہنچ کر خاتون نے اپنے ساتھ ہوئی واردات کی جانکاری دی۔ جس کے بعد پولیس نے میڈیکل کرا کر معاملہ درج کیا اور رات میں ہی پولیس ٹیم نے دبش  دیکر دو ملزمین کو گرفتار کر لیا اور کار بھی برآمد کر لی ہے۔ کار سے ایک فرضی چینل کی آئی ڈی بھی برآمد ہوئی ہے جس کی پولیس تحقیقات کر رہی ہے۔


پولیس کے مطابق متاثرہ خاتون کی رجت نام کے اس شخص کے ساتھ دوستی تھی۔ ڈیوٹی ختم ہونے کے بعد رجت اپنے ایک اور ساتھی واسو کے ساتھ دیا وتی نرسنگ ہوم کے باہر موجود تھا۔ خاتون کے گاڑی میں سوار ہونے کے بعد راستے سے رجت نے اپنے دو اور دوستوں رنکو اور وجے کو بھی گاڑی میں سوار کر لیا اور چار کلومیٹر دور لے جا کر باری باری سے خاتون کی عصمت ریزی کی۔ چاروں افراد خاتون کو بدحواس حالت میں سڑک پر چھوڑ کر فرار ہو گئے۔ خاتون نے کسی طرح اسپتال پہنچ کر آپ بیتی سنائی تو پولیس نے کارروائی کی اور دبش دیکر دو ملزمین کو گرفتار کر لیا۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 17, 2020 12:34 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading