ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

خواتین کے تحفظ کیلئے مودی حکومت کا بڑا فیصلہ ، ہر تھانہ میں ہوگی خاتون ہیلپ ڈیسک

خواتین کی سیکورٹی کو لے کر اٹھ رہے سوالات کے درمیان مرکزی حکومت نے بڑا فیصلہ کیا ہے ۔ اب ملک کے ہر تھانہ میں خاتون ہیلپ ڈیسک بنایا جائے گا ۔

  • Share this:
خواتین کے تحفظ کیلئے مودی حکومت کا بڑا فیصلہ ، ہر تھانہ میں ہوگی خاتون ہیلپ ڈیسک
خواتین کے تحفظ کیلئے مودی حکومت کا بڑا فیصلہ ، ہر تھانہ میں ہوگی خاتون ہیلپ ڈیسک ۔ فائل فوٹو ۔

خواتین کی سیکورٹی کو لے کر اٹھ رہے سوالات کے درمیان مرکزی حکومت نے بڑا فیصلہ کیا ہے ۔ اب ملک کے ہر تھانہ میں خاتون ہیلپ ڈیسک بنایا جائے گا ۔ اس کے ساتھ ہی مرکزی وزارت داخلہ نے نربھیا فنڈ کیلئے 100 کروڑ روپے جاری کئے ہیں ۔


حیدرآباد میں ویٹنری خاتون ڈاکٹر کی آبروریزی اور قتل کے معاملہ کے بعد اناو میں آبروریزی متاثرہ کو زندہ جلا کر مارنے کی کوشش کے بعد ملک میں خواتین کے تحفظ کو لے کر لوگوں میں غصہ ہے ۔ اس کے بعد حکومت سے قصورواروں کے خلاف سخت سے سخت قدم اٹھانے کا مطالبہ کیا جارہا ہے ۔ پارلیمنٹ میں بھی اس مرتبہ سخت قانون بنانے کا مطالبہ کیا گیا ۔


ادھر سپریم کورٹ کے سابق جج جے چیلمیشور نے کہا کہ جب بھی سنسنی خیز جرائم ہوتے ہیں تو مجرموں کو سخت سزا دینے کا مطالبہ ہوتا ہے ، لیکن نظام کو مزید کامیاب طریقہ سے کام کرنے کے لائق بنانا خواتین کے خلاف جرائم پر لگام لگانے کیلئے ضروری ہے ۔


تلنگانہ میں خاتون ڈاکٹر کی اجتماعی آبروریزی اور قتل کے تناظر میں سی آر فاونڈیشن کے ذریعہ خواتین کے تحفظ پر منعقدہ ایک میٹنگ میں چیلمیشور نے کہا کہ خواتین کے خلاف جرائم کثیر جہتی مسئلہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب بھی کوئی سنسنی خیز جرم ہوتا ہے تو مجرموں کو سخت سزا دینے کا مطالبہ ہوتا ہے ، لیکن ان باتوں پر غور کئے بغیر نظام کو مزید کامیاب طریقہ سے کام کرنے کے لائق بنانا چاہئے ۔

انہوں نے کہا کہ اترپردیش جیسی ریاستوں میں جرائم کے معاملات تقریبا 30 سالوں تک ان سلجھے رہتے ہیں اور ایک مرتبہ 24 سالوں سے زیر التوا ایک معاملہ بطور جج ان کے سامنے آیا تھا ۔ سابق جج نے معاملہ میں طویل تاخیر ، ان میں ان کے ذریعہ نمٹائے گئے معاملات بھی ہیں ، کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ معاملہ کسی کی تنقید کا نہیں ہے ۔
First published: Dec 05, 2019 10:24 PM IST