ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

طلاق ثلاثہ : خواتین مسلم پرسنل لا بورڈ نے کی مسلم پرسنل لا بورڈ کے موقف کی مخالفت ، سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ

آل انڈیا مسلم ویمن پرسنل لاء بورڈ (اے آئی ایم ڈبلیو پی ایل بی) نے سپریم کورٹ میں داخل حلف نامہ طلاق ثلاثہ کی حمایت میں پیش کئے گئے مسلم پرسنل لاء بورد کے موقف پر سخت تنقید کرتے ہوئے اس کی مخالفت کی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 04, 2016 01:44 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
طلاق ثلاثہ : خواتین مسلم پرسنل لا بورڈ نے کی مسلم پرسنل لا بورڈ  کے موقف کی مخالفت ، سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ
آل انڈیا مسلم ویمن پرسنل لاء بورڈ (اے آئی ایم ڈبلیو پی ایل بی) نے سپریم کورٹ میں داخل حلف نامہ طلاق ثلاثہ کی حمایت میں پیش کئے گئے مسلم پرسنل لاء بورد کے موقف پر سخت تنقید کرتے ہوئے اس کی مخالفت کی ہے۔

لکھنؤ : آل انڈیا مسلم ویمن پرسنل لاء بورڈ (اے آئی ایم ڈبلیو پی ایل بی) نے سپریم کورٹ میں داخل حلف نامہ طلاق ثلاثہ کی حمایت میں پیش کئے گئے مسلم پرسنل لاء بورد کے موقف پر سخت تنقید کرتے ہوئے اس کی مخالفت کی ہے۔ خواتین مسلم پرسنل لاء بورڈ نے کہا کہ مردوں کے غلبہ والے مسلم پرسنل لاء بورڈ کا یہ رجعت پسندانہ اقدام ہے۔

آل انڈیا خواتین مسلم پرسنل لاء بورڈ کی چیئر پرسن شائستہ عنبر نے کہا کہ آل انڈيا مسلم پرسنل لاء بورڈ نے مسلم معاشرے میں سماجی اصلاحات کو نافذ کرنے اور شرعی عدالتوں کے نظام کو مؤثر بنانے میں اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالنے کے لئے سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کیا ہے۔

محترمہ شائستہ عنبر نے کہا کہ وہ بھی سپریم کورٹ میں عرضی دائر کریں گی، جس میں خواتین مسلم پرسنل لاء بورڈ کو بھی عدالت عظمی میں زیر غور مسئلے میں فریق بنانے کی درخواست کی جائے گی، تاکہ طلاق ثلاثہ کے قانونی جواز اور مسلم پرسنل لاء بورڈ کے ديگر مسائل کو چیلنج کیا جاسکے۔

First published: Sep 04, 2016 01:44 PM IST