ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : يس بینک پراکاؤنٹ ہولڈروں کی لمبی قطاریں، بینکنگ سسٹم پر کم ہوتا لوگوں کا بھروسہ

میرٹھ میں بھی صبح سے ہی بینک کی برانچ میں اکاؤنٹ ہولڈروں کی لمبی قطاریں لگنی شروع ہو گئی تھی۔ خبر آنے بعد بے اطمینانی کے ماحول میں یس بینک کے اکاؤنٹ ہولڈر کافی پریشان نظر آئے۔

  • Share this:
میرٹھ : يس بینک پراکاؤنٹ ہولڈروں کی لمبی قطاریں، بینکنگ سسٹم پر کم ہوتا لوگوں کا بھروسہ
میرٹھ میں بھی صبح سے ہی بینک کی برانچ میں اکاؤنٹ ہولڈروں کی لمبی قطاریں لگنی شروع ہو گئی تھی۔ خبر آنے بعد بے اطمینانی کے ماحول میں یس بینک کے اکاؤنٹ ہولڈر کافی پریشان نظر آئے۔

فنڈ کی کمی کا شکار ایک اور بینک یس بینک کے اکاؤنٹ اور شیئر ہولڈر آر بی آئی کے نئے فیصلے سے پریشان ہو گئے ہیں۔ یس بینک اکاؤنٹ ہولڈروں کے لئے ایک ماہ میں محض پچاس ہزار روپے تک ہی نکال سکنے کی بندش لگا دیے جانے کے بعد سے یس بینک کے اکاؤنٹ ہولڈر پریشان ہے۔ میرٹھ میں بھی صبح سے ہی بینک کی برانچ میں اکاؤنٹ ہولڈروں کی لمبی قطاریں لگنی شروع ہو گئی تھی۔ خبر آنے بعد بے اطمینانی کے ماحول میں یس بینک کے اکاؤنٹ ہولڈر کافی پریشان نظر آئے۔ اے ٹی ایم کارڈ اور مشینوں کے کام نہ کرنے اور آن لائن بینکنگ سسٹم میں ٹرانزیکشن کے بند ہو جانے سے بینک کی برانچ میں لوگوں کی بھیڑ بڑھ  گئی۔ ان میں خاص طور پر کرنٹ اکاؤنٹ والے کاروباری کافی پریشان نظر آئے اور اس معاملے کو جلد حل کیے جانے کا حکومت سے مطالبہ کیا۔


یس بینک کے اکاؤنٹ ہولڈروں کا کہنا ہے کہ بینکوں کے سامنے پیش آ رہے اس طرح کے حالات سے عام لوگوں کا بینکنگ سسٹم پر یقین کم ہوتا جا رہا ہے۔ یس بینک میں کاروباری تقاضوں سے کرنٹ اکاؤنٹ رکھنے والے مقامی کاروباریوں کا کہنا ہے کہ 50 ہزار کی حدطے کر دیے جانے سے اب ان کے سامنے کاروباری لین دین کرنے میں کافی پریشانی پیدا ہو گئی ہے۔ مال خریدنے سے لیکر ملازموں کو اجرت دینے تک میں ان کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔

وہیں سیونگ اور سیلری  اکاؤنٹ ہولڈروں کا کہنا ہے کہ لوگوں کو خرچے کیلئے  روزانہ پیسوں کی ضرورت درکار ہوتی ہے۔ خاص طور پر شادی بیاہ اور بچوں کی تعلیم اسپتال کے اخراجات کے لئے لوگوں کو زیادہ رقم نکالنے کی ضرورت پڑتی ہے ایسے میں 50 ہزار کی لمٹ طے ہونے سے بینک اکاؤنٹ ہولڈروں کے لئے بڑی پریشانی کھڑی ہو گئی ہے۔

First published: Mar 06, 2020 09:20 PM IST