ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

چدمبرم کا کرن رجیجو پر طنز ، ہم نے لشکر کے ساتھ ناشتہ کیا اورانہیں ڈنر پر بھی بلایا

نئی دہلی ـ: مرکزی وزیر داخلہ کرن رجيجو کے پی چدمبرم کی قیادت والی اس وقت کی وزارت داخلہ پر دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کے ساتھ چلنے کا الزام لگانے پر سابق وزیر داخلہ نے طنز کسا ہے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: May 28, 2016 04:44 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
چدمبرم کا کرن رجیجو پر طنز ، ہم نے لشکر کے ساتھ ناشتہ کیا اورانہیں ڈنر پر بھی بلایا
نئی دہلی ـ: مرکزی وزیر داخلہ کرن رجيجو کے پی چدمبرم کی قیادت والی اس وقت کی وزارت داخلہ پر دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کے ساتھ چلنے کا الزام لگانے پر سابق وزیر داخلہ نے طنز کسا ہے۔

نئی دہلی : مرکزی وزیر داخلہ کرن رجيجو کے پی چدمبرم کی قیادت والی اس وقت کی وزارت داخلہ پر دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کے ساتھ چلنے کا الزام لگانے پر سابق وزیر داخلہ نے طنز کسا ہے۔ سابق وزیر داخلہ چدمبرم نے کہا کہ ہاں ... ہم نے لشکر کے ساتھ ناشتہ کیا تھا اور انہیں ڈنر کے لئے بھی بلایا تھا۔ چدمبرم نے کرن کے بیان کو غیر ذمہ دارانہ قرار دیا۔ کانگریس نے اس الزام کی پرزور مخالفت کرتے ہوئے وزیر کو ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے۔

خیال رہے کہ ایک انٹرویو میں وزیر داخلہ رجيجو نے عشرت جہاں معاملہپر کہا تھا کہ شروع میں لشکر طیبہ نے دعوی کیا تھا کہ وہ فدائین ہے ، لیکن سی بی آئی کے ایک خاص افسر کو تفتیش کا انچارج بنائے جانے کے دن تنظیم نے اپنا بیان بدل دیا۔مالیگاؤں دھماکہ کی جانچ کو لے کر بھی کرن رجیجو نے کانگریس پر نشانہ سادھا۔ ان کا کہنا تھا کہ 2008 میں بم دھماکہ کی تحقیقات کے نام پر کانگریس نوٹنکی کر رہی تھی۔ اس کے پیچھے فرقہ وارانہ تقسیم کی سوچی سمجھی حکمت عملی تھی ۔

وزیر مملکت رجیجو نے کہا کہ 'سپریم کورٹ نے این آئی اے سے کہا ہے کہ اس کا رول صرف مقدمے کو آگے بڑھانا نہیں ہے بلکہ اسے عوام کے سامنے حقائق کو بھی لانا چاہئے۔ این آئی اے نے یہی کیا ہے۔ خیال رہے کہ اپنے پہلے موقف کے برعکس 13 مئی کو این آئی اے نے سادھوی پرگیہ ٹھاکر کو بڑی راحت دیتے ہوئے کلین چٹ دیدی تھی ۔ علاوہ ازیں لیفٹیننٹ کرنل پروہت سمیت 10 لوگوں پر مکوکا کے تحت لگائے گئے الزام بھی واپس لے لئے گئے تھے۔

First published: May 28, 2016 04:44 PM IST