ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

الہ آباد: کیشو پرساد موریا نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے بارے میں کہی یہ بڑی بات

گذشتہ دسمبر میں لکھنؤ میں شہریت قانون کے خلاف ہونے والے پر تشدد مظاہرے کے دوران یو پی پولیس نے پی ایف آئی کے تین کارکنان کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔

  • Share this:
الہ آباد: کیشو پرساد موریا نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے بارے میں کہی یہ بڑی بات
یوگی حکومت نے پاپولر فرنٹ پر پابندی لگانے کی تیاری کی

الہ آباد۔ یو پی حکومت نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا پر پابندی لگانے کی پوری تیاری کرلی ہے۔ اس بارے میں یو پی کے نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریا نے ایک بڑا بیان دیتے ہوئے کہا کہ پاپولر فرنٹ آف انڈیا ( پی ایف آئی ) پر بہت جلد پابندی لگا دی جائے گی۔ الہ آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے نائب وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یو پی حکومت نے پی ایف آئی پر پابندی لگانے کے بارے میں اپنی سفارشات مرکزی حکومت کو بھیج دی ہیں۔


انہوں نے کہا کہ سی اے اے کے خلاف ہونے والے احتجاجی مظاہرے کے دوران جو تشدد ہوا تھا ، اس کے پیچھے پاپولر فرنٹ  اور سیمی کا ہاتھ سامنے آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاپولر فرنٹ آف انڈیا سیمی  کا ہی بدلا ہو ا روپ ہے ۔ کیشو پرساد موریا نے ریاست کی اپوزیشن پارٹیوں پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ کانگریس ، سماج وادی پارٹی اور بی ایس پی ریاست میں سی اے اے مخالف احتجاج کو ہوا دے رہی ہیں۔کیشو پرساد موریا نے کہا کہ انفورسمنٹ ڈیپارٹمنٹ (ای ڈی ) کی جانچ رپورٹ آنے کے بعد یہ واضح ہو گیا ہے کہ شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ہونے والے مظاہروں کے پیچھے پاپولر فرنٹ کا ہاتھ ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہریت مخالف احتجاجی مظاہروں کے لئے پی ایف آئی مالی مدد کر رہا ہے ۔ کیشو پرساد موریا کا کہنا تھا کہ ریاستی حکومت نے پاپولر فرنٹ کی تخریبی اور ملک مخالف سرگرمیوں کو دیکھتے ہوئے  اپنی سفارش مرکزی حکومت کے پاس بھیج دی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پی ایف آئی پر پابندی لگانے کا فیصلہ بہت جلد لے لیا جائے گا ۔


کیشو پرساد موریا نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے بارے میں کہی یہ بڑی بات


واضح رہے کہ گذشتہ دسمبر میں لکھنؤ میں شہریت قانون کے خلاف ہونے والے پر تشدد مظاہرے کے دوران یو پی پولیس نے پی ایف آئی کے تین کارکنان کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔ یو پی پولیس نے پی ایف آئی پر مظاہرے کے دوران تشدد بھڑکانے کا الزام لگایا تھا ۔ پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے کارکنان نے اپنی گرفتاری کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل کر رکھی ہے ۔ اس عرضی پر آئندہ 17 فروری کو سماعت ہونی ہے ۔
First published: Jan 28, 2020 04:48 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading