امریکی سفیر سمیت تین رکنی وفد کا دارالعلوم دیوبند کا دورہ ، ملک کی موجودہ صورتحال پر بھی تبادلہ خیال

دیوبند :ملک کے دارالحکومت دہلی میں واقع امریکی سفارت خانے کے سفیر سمیت تین اراکین کے ایک وفد نے عالمی شہرت یافتہ اسلامی ادارہ دارالعلوم دیوبند کا دورہ کر کے یہاں دی جانے والی تعلیم کے بارے میں تفصیلی معلومات حاصل کیں ۔

Oct 08, 2015 05:26 PM IST | Updated on: Oct 08, 2015 05:26 PM IST
امریکی سفیر سمیت تین رکنی وفد کا دارالعلوم دیوبند کا دورہ ، ملک کی موجودہ صورتحال پر بھی تبادلہ خیال

دیوبند :ملک کے دارالحکومت دہلی میں واقع امریکی سفارت خانے کے سفیر سمیت تین اراکین کے ایک وفد نے عالمی شہرت یافتہ اسلامی ادارہ دارالعلوم دیوبند کا دورہ کر کے یہاں دی جانے والی تعلیم کے بارے میں تفصیلی معلومات حاصل کیں ۔ علاوہ ازیں وفد نے ملك میں مسلمانوں کے ساتھ ہو رہی زیادتیوں اور بگڑتے ہوئے حالات پر بھی تبادلہ خیال کیا ۔ وفد نے دارالعلوم دیوبند کے نائب مہتمم مولانا عبدالخالق سنبھلي سے بھی ملاقات کی ۔ وفد نے ایشیا کی اس عظیم دینی درسگاه کے دیدار کو اپنے لئے خوش قسمتی قرار دیا۔

اس موقع پر امریکی افسر جان ایل سكینڈر نے بتایا کہ عربی زبان سے خصوصی لگاؤ ​​ہونے کی وجہ سے انہیں جنوبی افریقہ اور عرب ممالک کی خصوصی ذمہ داری دی گئی ہے۔ دارالعلوم دیوبند کو قریب سے جاننے کی ان کی دیرینہ خواہش تھی ، جس کی وجہ سے آج وہ یہاں آئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ یہاں آکر اس دینی درسگاه کو قریب سے جاننے کا موقع ملنے کو وہ اپنی خوش قسمتی سمجھتے ہیں۔

مسلم مجلس اترپردیش کے نائب صدر بدر کاظمی نے بتایا کہ میں نے امریکی وفد کے ساتھ ملک کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا اور وفد سے کہا کہ جس طرح ملک کے مسلمانوں پر ہو رہے مظالم پر وزیر اعظم نے خاموشی اختیار رکھی ہے، اس سے صاف ظاہر ہوجاتا ہے کہ مسلمان اس ملک میں محفوظ نہیں ہیں۔ ریاست کے ایک سینئر وزیر اقوام متحدہ جانے کی بات کر رہے ہیں ، جو کہ ان کی ایک مجبوری ہو گی ۔ ورنہ کوئی اتني بڑی بات نہیں کرے گا۔

Loading...

Loading...