حیران مت ہوں، اس گاؤں کے ہر گھر میں ہیں آئی اے ایس

۔ اترپردیش کے ضلع جون پورمیں واقع مادھوپٹی ایک ایسا گاؤں ہے جہاں کئی آئی اے ایس آفیسر ہیں۔ اس گاؤں میں محض 75 گھر ہیں، لیکن یہاں کے 47 آئی اے ایس افسر مختلف محکموں میں اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔

Aug 07, 2015 08:45 AM IST | Updated on: Aug 07, 2015 08:46 AM IST
حیران مت ہوں، اس گاؤں کے ہر گھر میں ہیں آئی اے ایس

جون پور۔ اترپردیش کے ضلع جون پورمیں واقع مادھوپٹی ایک ایسا گاؤں ہے جہاں کئی آئی اے ایس آفیسر ہیں۔ اس گاؤں میں محض 75 گھر ہیں، لیکن یہاں کے 47 آئی اے ایس افسر مختلف محکموں میں اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔

اتنا ہی نہیں، مادھوپٹی کی سرزمین پر پیدا ہوئے بچے اسرو، بھابھا، کائی منیلا اور عالمی بینک تک میں افسر ہیں۔ سركوني وکاس کھنڈ کا یہ گاؤں ملک کی انگوٹھی میں نگينے کی طرح جگمگا رہا ہے۔

Loading...

دراصل، یہاں مشہور شاعر رہے وامک جونپور کے والد مصطفی حسین سن 1914 میں پی سی ایس اور 1952 میں اندو پرکاش سنگھ کا آئی اے ایس کی دوسری رینک میں سلیکشن کیا ہوا گویا یہاں نوجوان طبقہ میں خود کو ثابت کرنے کی ہوڑ سی لگ گئی۔

چار سگے بھائی بنے آئی اے ایس

آئی اے ایس بننے کے بعد اندو پرکاش سنگھ فرانس سمیت کئی ممالک میں ہندوستان کے سفیر رہے۔ اس گاؤں کے چار سگے بھائیوں نے آئی اے ایس بن کر جو تاریخ رقم کی ہے وہ آج بھی ہندوستان میں ریکارڈ ہے۔ان چاروں سگے بھائیوں میں سب سے پہلے 1955 میں آئی اے ایس کے امتحان میں 13 ویں رینک حاصل کرنے والے ونے کمار سنگھ کا سلیکشن ہوا۔ ونے سنگھ بہار کے چیف سکریٹری کے عہدے تک پہنچے۔

سن 1964 میں ان کے دو سگے بھائی چھترپال سنگھ اور اجے کمار سنگھ ایک ساتھ آئی اے ایس افسر بنے۔ چھترپال سنگھ تمل ناڈو کے چیف سیکرٹری رہے۔

ونے سنگھ کے چوتھے بھائی ششی كانت سنگھ 1968 میں آئی اے ایس افسر بنے۔ ان کے خاندان میں آئی اے ایس بننے کا سلسلہ یہیں نہیں تھما۔ 2002 میں ششی كانت کے بیٹے یشسوی نہ صرف آئی اے ایس بنے بلکہ اس مشکل ترین امتحان میں انہوں نے 31 واں رینک حاصل کیا۔ اس کنبے کا ریکارڈ آج تک قائم ہے۔

اس کے علاوہ اس گاؤں کی آشا سنگھ 1980، اوشا سنگھ 1982، كنور چدرمول سنگھ 1983 اور ان کی بیوی اندو سنگھ 1983، بیٹے اندو پرکاش سنگھ 1994 آئی پی ایس، ان کی بیوی سرتا سنگھ 1994 میں آئی پی ایس امتحان میں منتخب ہوکر اس گاؤں کا حوصلہ مزید بڑھایا۔

پی سی ایس افسران کی یہاں تو پوری فوج ہے۔ اس گاؤں کے راج مورتی سنگھ، ودياپركاش سنگھ، پریم چندر سنگھ پی سی ایس، مہندر پرتاپ سنگھ، جے سنگھ پروین سنگھ اور ان کی اہلیہ پارول سنگھ ،ريتو سنگھ، اشوک کمار، پرجاپتی پرکاش سنگھ، راجیو سنگھ، سنجیو سنگھ،آنند سنگھ، وشال سنگھ اور ان کے بھائی وکاس سنگھ ،وید پركاش سنگھ اور نیرج سنگھ پی سی ایس افسر بن  چکے تھے۔ ابھی حال ہی میں 2013 کے امتحان میں اس گاؤں کی بہو شوانی سنگھ نے پی سی ایس امتحان پاس کر کے اس کارواں کو آگے بڑھایا ہے۔

اس گاؤں کے انمجے سنگھ عالمی بینک منیلا میں، ڈاکٹر نرو سنگھ لالیندر اور پرتاپ سنگھ بھابھا انسٹی ٹیوٹ تو گیان مشرا اسرو میں اپنی خدمات دے رہے ہیں۔ یہیں کے رہنے والے دیو ناتھ سنگھ گجرات میں انفارمیشن ڈائریکٹر کے عہدے پر تعینات ہیں۔

Loading...