پٹھان کوٹ حملہ: ائیر بیس میں گھسے باقی دو دہشت گردوں کے مارے جانے کی خبر

نئی دہلی۔ پٹھان کوٹ میں ایئر فورس اسٹیشن پر حملے کے تین دن گزرنے کے باوجود دہشت گردوں کے خلاف آپریشن جاری ہے۔

Jan 04, 2016 11:04 AM IST | Updated on: Jan 04, 2016 04:04 PM IST
پٹھان کوٹ حملہ: ائیر بیس میں گھسے باقی دو دہشت گردوں کے مارے جانے کی خبر

نئی دہلی۔ پٹھان کوٹ میں ایئر فورس اسٹیشن پر حملے کے تین دن گزرنے کے باوجود دہشت گردوں کے خلاف آپریشن جاری ہے۔ گزشتہ رات سیکورٹی فورسز کے جوانوں نے مسلسل دہشت گردوں کی تلاشی مہم کو جاری رکھا۔ ذرائع کے حوالے سے خبر آ رہی ہے کہ سکیورٹی فورسز نے آج پانچویں دہشت گرد کو بھی مار گرایا ہے۔ چھٹے دہشت گرد کو بھی مارے جانے کی خبر ہے۔

فضائیہ کے اڈے کی دومنزلہ عمارت میں اب بھی چھپے دہشت گرد کو باہر نکالنے کے لئے مہم کو تیز کئے جانے کے درمیان عمارت میں آج ایک طاقتور دھماکہ ہو گیا۔ دہشت گردوں کے خلاف چلائی جا رہی مہم کا آج تیسرا دن ہے۔ این ایس جی، ہندستانی فضائیہ اور فوج کے حکام نے کہا کہ فضائیہ کے اسٹریٹجک اثاثوں کو کوئی نقصان نہیں ہوا ہے۔

فوج نے ان دہشت گردوں کو ڈھونڈنے میں پورا زور لگا دیا  لیکن ساتھ ہی وہ اس بات کا خیال بھی رکھ رہی ہے کہ کسی طرح کا کوئی حادثہ نہ ہو۔ 25 ایکڑ میں پھیلے اس ائیر بیس میں دہشت گردوں کی سرچ آپریشن کے دوران سیکورٹی ایجنسی کسی طرح کی کوتاہی نہیں برتنا چاہتی ہے۔ اس کی وجہ سے فوج نے اس علاقے کو مکمل طور پر اپنے قبضے میں لے رکھا ہے۔ پٹھان کوٹ میں باہر کی کسی بھی گاڑیوں کو انٹری نہیں دی جا رہی ہے۔ انہیں دوسرے روٹ پر جانے کے لئے کہا جا رہا ہے۔

Loading...

دہشت گردوں کے خلاف مہم تیز کرنے کے لئے دن میں بلڈوزر اور جے سی بی کے ساتھ فوج کی پانچ کمپنیاں علاقے میں بھیجی گئیں۔ ہیلی کاپٹر کی مدد سے فوجی ٹھکانوں پر نگرانی کی جا رہی ہے جس سے دہشت گردوں کے خلاف مہم میں لگے زمینی فوجیوں کو فضائی تعاون مل سکے۔

اس آپریشن میں اب تک فوج کے 7 جانباز شہید ہو گئے ہیں۔ ان میں این ایس جی کا ایک لیفٹیننٹ کرنل بھی شامل ہے۔ اس دہشت گردانہ حملے کے بعد سوال اٹھ رہے ہیں کہ کیا سیکورٹی ایجنسیوں نے دہشت گردانہ حملے سے متعلق الرٹ کو ہلکے میں لیا کیونکہ انٹیلی جنس ایجنسیوں نے بہت پہلے ہی بتا دیا تھا کہ سرحد پار سے آنے والے دہشت گرد نئے سال کے ارد گرد دہشت گردانہ حملے کو انجام دے سکتے ہیں۔

 فضائیہ کی پریس کانفرنس

جوائنٹ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سکیورٹی کے اہلکاروں نے بتایا کہ این ایس جی، آرمی اور ایئر فورس کی طرف سے مشترکہ سرچ آپریشن ہموار طورپر جاری ہے، جس میں پولس اور انٹلیجنس ایجنسیوں کی مدد لی جارہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ فضائیہ کے اڈے کا علاقہ بہت بڑا ہے ، اس لئے آپریشن مکمل کرنے میں وقت لگ رہا ہے اور اس انجام تک پہنچانے میں لگتا ہے کچھ وقت اور لگے گا۔

سلامتی دستہ کے اہلکاروں نے قوم کو یقین دلایا کہ ایئر بیس کمپاؤنڈ میں سکونت پذیر تمام اہلکار، اسٹراٹیجک املاک اور ان کے اہل خانہ پورے طورپر محفوظ ہیں۔

Loading...