روہتک کی نربھیا کے سات قصورواروں کو پھانسی کی سزا

فرید آباد : روہتک کی نربھیا کے سات قصورواروں کو پھانسی کی سزا سنائی گئی ہے۔ تقریبا 9 ماہ بعد روہتک کی نربھیا کو انصاف ملا ہے۔ سال رواں فروری میں 9 درندوں نے نیپال کی رہنے والی ایک لڑکی پہلے ساتھ روہتک میں ایسا گھناؤنا کھیل کھیلا، جسے دیکھ انسانیت بھی شرما گئی ۔ دہلی کے واقعہ کی طرح ہی یہاں بھی قصورواروں میں ایک نابالغ شامل ہے۔

Dec 21, 2015 05:59 PM IST | Updated on: Dec 21, 2015 05:59 PM IST
روہتک کی نربھیا کے سات قصورواروں کو پھانسی کی سزا

فرید آباد : روہتک کی نربھیا کے سات قصورواروں کو پھانسی کی سزا سنائی گئی ہے۔ تقریبا 9 ماہ بعد روہتک کی نربھیا کو انصاف ملا ہے۔ سال رواں فروری میں 9 درندوں نے نیپال کی رہنے والی ایک لڑکی پہلے ساتھ روہتک میں ایسا گھناؤنا کھیل کھیلا، جسے دیکھ انسانیت بھی شرما گئی ۔ دہلی کے واقعہ کی طرح ہی یہاں بھی قصورواروں میں ایک نابالغ شامل ہے۔

اس معاملے میں 9 افراد کو ملزم بنایا گیا تھا ، جس میں سات کو پھانسی کی سزا سنائی گئی ہے۔ ایک ملزم نابالغ ہے اور ایک نے خودکشی کر لی تھی۔ پھانسی کی سزا نچلی عدالت نے سنائی ہے، جسے ہائی کورٹ میں چیلنج کیا جا سکتا ہے۔

غور طلب ہے کہ چار فروری کو روہتک کے بهواكبرپورگاؤں کے کھیتوں میں ایک لڑکی کی لاش عریاں حالت میں ملی تھی۔ لاش کی حالت انتہائی خراب تھی اور بالائی حصےکو جانوروں  نے نوچ رکھا تھا ، جس کی وجہ سے لاش کی شناخت کرنا ممکن نہیں ہو پا رہا تھا۔ تاہم بعد میں انکشاف ہوا کہ ذہنی طور پر کمزور ایک نیپالی لڑکی کی نہ صرف آبروریزی کی گئی ، بلکہ اس کے ساتھ درندگی کی ساری حدیں پار کی گئی تھیں۔

Loading...

Loading...