سوچی سمجھی پالیسی کے تحت دہشت گردی کی پرورش کررہا ہے پاکستان : اجیت ڈوبھال

ومی سلامتی کے مشیراجیت ڈوبھال نے آج پاکستان پر الزام لگایا کہ وہ سوچی سمجھی پالیسی کے تحت دہشت گردی کی پرورش کررہا ہے لیکن فائنانشیل ایکشن ٹاسک فورس یعنی ایف اے ٹی ایف کے گھیرے میں آنے کے بعد سے اس پردہشت گردوں کے خلاف اقدامات کرنے کا دباؤ بڑھ رہا ہے۔

Oct 14, 2019 04:33 PM IST | Updated on: Oct 14, 2019 04:33 PM IST
سوچی سمجھی پالیسی کے تحت دہشت گردی کی پرورش کررہا ہے پاکستان : اجیت ڈوبھال

قومی سلامتی کے مشیراجیت ڈوبھال۔(تصویر:نیوز18)۔

قومی سلامتی کے مشیراجیت ڈوبھال نے آج پاکستان پر الزام لگایا کہ وہ سوچی سمجھی پالیسی کے تحت دہشت گردی کی پرورش کررہا ہے لیکن فائنانشیل ایکشن ٹاسک فورس یعنی ایف اے ٹی ایف کے گھیرے میں آنے کے بعد سے اس پردہشت گردوں کے خلاف اقدامات کرنے کا دباؤ بڑھ رہا ہے۔اجیت ڈوبھال نے پیر کو یہاں انسداد دہشت گردی اسکواڈ اور خصوصی ورک فورسز کے سربراہان کے قومی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر مجرموں کو کسی ملک کی حمایت حاصل ہوتی ہے تو یہ ایک بہت بڑا چیلنج بن جاتا ہے۔ کچھ ممالک کو اس میں مہارت حاصل ہے۔ پاکستان نے بھی اسے اپنی پالیسی کا حصہ بنا لیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب پاکستان پر سب سے بڑا دباؤ اےایف ٹی ایف کی جانب سے پڑا ہے اور اس پر دہشت گردوں کے خلاف قدم اٹھانے کا دباؤ ہے۔ وزیر داخلہ امت شاہ کو بھی اس کانفرنس سے خطاب کرنا تھا لیکن ناگزیر وجوہات سے وہ کانفرنس میں نہیں آسکے۔

قومی سلامتی کے مشیر نے کہا کہ دہشت گردی سے متعلق معاملات کی تحقیقات میں سب سے بڑا چیلنج یہ ہے کہ عدلیہ انہیں بھی دیگر جرائم کی تحقیقات سے متعلق کسوٹی پر تولتي ہے۔ اس میں سب سے بڑا مسئلہ گواہ کا آتا ہے۔ ان معاملات میں گواہی دینے کی ہمت کون کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ لیکن قومی جانچ ایجنسی این آئی اے نے اس چیلنج کا کافی حد تک سامنا کیا ہے اور اس کا نتیجہ کشمیر میں دیکھنے کو مل رہا ہے۔

Loading...

Loading...