ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ میں سی اے اے اور این آر سی کے خلاف جاری مظاہروں کے خلاف نکڑ ناٹک

یووا ابھیو دے مشن نے نکّڑ ناٹک کے ذریعہ سی اے اے اور این آر سی کے خلاف ہو رہے احتجاجی دھرنوں کو صاف طور پر نشانہ بنایا اور اس طرح کے مظاہروں کو ملک مخالف قرار دیا ۔

  • Share this:
میرٹھ میں سی اے اے اور این آر سی کے خلاف جاری مظاہروں کے خلاف نکڑ ناٹک
میرٹھ میں سی اے اے اور این آر سی کے خلاف جاری مظاہروں کے خلاف نکڑ ناٹک

شہریت ترمیمی قانون اور این آر سی کو لیکر ایک طرف ملک کے مختلف مقامات پر احتجاجی دھرنوں کا سلسلہ مسلسل جاری ہے تو وہیں دوسری طرف اب ان مظاہروں کے خلاف مختلف تنظیمیں اپنے اپنے طریقہ سے احتجاج درج کرا رہی ہیں ۔ میرٹھ میں آج یووا ابھیو دے  مشن کی جانب سے نکّڑ ناٹک کے ذریعہ اپنی بات رکھتے ہوئے اس مہم سے لوگوں کو جوڑنے کی کوشش کی گئی ۔


یووا ابھیو دے  مشن کی جانب سے مختلف شہروں میں نکّڑ ناٹکوں کے انعقاد کا سلسلہ گزشتہ کچھ وقت سے جاری ہے ۔ یووا ابھیو دے  مشن سے وابستہ افراد کے مطابق اس طرح کے پروگراموں کے ذریعہ وہ لوگوں کو اس مہم سے جوڑنے کی کوشش کر رہے ہیں ، جو سوشل میڈیا اور دوسرے ذریعہ سے عوام تک پہنچ کر ملک کے اصل مدعوں تک لوگوں کو متوجہ کر سکے ۔ یووا ابھیو دے مشن کے ان کارکنان کے مطابق وہ احتجاجی مظاہروں کے خلاف نہیں ہیں لیکن احتجاج کی آڑ میں انجام دئے جانے والے تشدد کے خلاف ہیں اور اسی مقصد کے تحت لوگوں کو بیدار کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔


یووا ابھیو دے مشن سے وابستہ ان نوجوانوں کے مطابق ان کی یہ ایک مثبت پہل کا اشارہ ہے جو خاص طور پر اس ملک کے نوجوانوں کو بیدار کر سکے ۔ یووا ابھیو دے مشن نے ہاتھوں میں تختیاں لیکر نعرے بھی لگائے ۔ یووا ابھیو دے مشن نے نکّڑ ناٹک کے ذریعہ سی اے اے اور این آر سی کے خلاف ہو رہے احتجاجی دھرنوں کو صاف طور پر نشانہ بنایا اور اس طرح کے مظاہروں کو ملک مخالف قرار دیا ۔


یووا ابھیو دے  مشن کی جانب سے مختلف شہروں میں نکّڑ ناٹکوں کے انعقاد کا سلسلہ گزشتہ کچھ وقت سے جاری ہے ۔ تصویر : تنظیر انصار ۔
یووا ابھیو دے مشن کی جانب سے مختلف شہروں میں نکّڑ ناٹکوں کے انعقاد کا سلسلہ گزشتہ کچھ وقت سے جاری ہے ۔ تصویر : تنظیر انصار ۔


یووا ابھیودے مشن سے وابستہ افراد کا یہ بھی کہنا تھا کہ سی اے اے اور این آر سی کی مخالفت کی آڑ میں ہندوؤں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔ یووا ابھیو دے مشن کی اس مہم کا مقصد کچھ بھی ہو لیکن یہ حقیقت ہے کہ سی اے اے اور این آر سی کے خلاف اب تک ہوئے احتجاجی مظاہرے اور دھرنے حکومت کی پالیسی کے خلاف ہیں ، نہ کہ کسی مخصوص طبقے کے لوگوں کے ۔ یہاں تک کہ مظاہروں کے دوران کچھ مقامات پر پیش آئے تشدد کے واقعات کو بھی ہندو مسلم فساد کا رنگ نہیں دیا جا سکا ۔
First published: Feb 10, 2020 10:04 PM IST