உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    راجستھان بحران: سونیا گاندھی کو رپورٹ سونپیں گے آبزرور، گہلوت حامیوں پر گر سکتی ہے گاج

    گہلوت حامی اراکین اسمبلی کے خلاف تادیبی کارروائی کر سکتی ہیں سونیا گاندھی

    گہلوت حامی اراکین اسمبلی کے خلاف تادیبی کارروائی کر سکتی ہیں سونیا گاندھی

    کانگریس کی راجستھان یونٹ میں بحران سے متعلق پارٹی کے دونوں آبزرور ملیکا ارجن کھڑگے اور اجے ماکن منگل تک اپنی تحریری رپورٹ پارٹی صدر سونیا گاندھی کو سونپیں گے۔ اس کے بعد ‘تادیبی کارروائی‘ کے لئے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کے وفادار مانے جانے والے کچھ لیڈران کے خلاف کارروائی ہونے کا امکان ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی جے پور: کانگریس کی راجستھان یونٹ میں بحران سے متعلق پارٹی کے دونوں آبزرور ملیکا ارجن کھڑگے اور اجے ماکن منگل تک اپنی تحریری رپورٹ پارٹی صدر سونیا گاندھی کو سونپیں گے۔ اس کے بعد ‘تادیبی کارروائی‘ کے لئے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کے وفادار مانے جانے والے کچھ لیڈران کے خلاف کارروائی ہونے کا امکان ہے۔ پارٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ سونیا گاندھی کے حکم کے مطابق، دونوں آبزرور اپنی رپورٹ کل انہیں سونپیں گے۔

      یہ پوچھے جانے پر کیا گہلوت حامی کچھ لیڈران کے خلاف کارروائی ہوسکتی ہے تو کانگریس کے ایک سینئر لیڈر نے کہا، ’اگر پارٹی نے اتوار کے حادثہ کو نظم وضبط کی خلاف ورزی مانا ہے تو پھر ایسے میں کارروائی ہونا ممکن ہے۔ اس درمیان اپنی راجستھان یونٹ میں چل رہے بحران کو دور کرنے کے لئے پارٹی قیادت کوشش کر رہا ہے اور اسی ضمن میں پارٹی صدر سونیا گاندھی نے مدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ کمل ناتھ کے ساتھ غوروخوض کیا۔ مانا جا رہا ہے کہ کمل ناتھ کے گہلوت سے اچھے رشتے ہیں اور وہ بحران کو حل کرنے میں اپنا اہم کردار نبھا سکتے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      راجستھان بحران: اشوک گہلوت سے اعلیٰ کمان ناراض، کانگریس صدر عہدے کی دوڑ سے ہوئے باہر 

      یہ بھی پڑھیں۔

      کانگریس صدارتی الیکشن: ششی تھرور کا حوصلہ بڑھا، کہا- کوئی نہیں ہے ٹکر میں، گاندھی فیملی کی حمایت میرے ساتھ 

      جے پور میں اراکین اسمبلی کی میٹنگ نہیں ہوپانے اور وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کے حامی اراکین اسمبلی کے باغی رخ اپنانے کے بعد ملیکا ارجن کھڑگے اور اجے ماکن پیر کے روز دہلی لوٹے اور 10 جن پتھ پہنچ کر سونیا گاندھی سے ملاقات کی۔ کانگریس کے تنظیمی جنرل سکریٹری کے سی وینو گوپال راو بھی میٹنگ میں موجود تھے۔ سونیا گاندھی کے ساتھ ڈیڑھ گھنٹے سے زیادہ وقت تک چلی ملاقات کے بعد اجے ماکن نے کہا کہ جے پور میں اتوار شام اراکین اسمبلی کی میٹنگ وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کی رضامندی سے بلائی گئی تھی۔

      اجے ماکن نے صحافیوں سے کہا، ’میں نے اور کھڑگے نے راجستھان کے سیاسی حالات کے بارے میں سونیا گاندھی کو تفصیل سے بتایا۔ کانگریس صدر نے ہم سے پورے حادثے سے متعلق تحریری رپورٹ مانگی ہے۔ آج رات یا کل صبح تک ہم یہ رپورٹ دے دیں گے‘۔ انہوں نے کہا- ’کانگریس اراکین اسمبلی کی کل شام جو میٹنگ ہوئی تھی وہ ان کے وزیر اعلیٰ کہنے پر اور ان کی رضامندی کی بنیاد پر اور ان کے بتائے ہوئے مقام پر رکھی گئی تھی۔ کانگریس صدر کا حکم تھا کہ ہ رکن اسمبلی کی الگ الگ رائے جان کر رپورٹ دی جائے۔ سب سے بات کرکے فیصلہ ہوتا‘۔ ایک سوال کے جواب میں اجے ماکن نے کہا- ’جب کانگریس اراکین اسمبلی کی رسمی میٹںگ کی جاتی ہے تو اس کے مساوی کوئی بھی میٹنگ بلائی جاتی ہے تو وہ پہلی نظر میں تادیبی کارروائی ہے۔ یہ بات ہم نے کانگریس صدر کے سامنے رکھی ہے‘۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: