உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Omicron in India: اومیکران بنا رہا ہے خطرناک شبیہ، ملک میں دوسری لہر سے زیادہ تیزی سے بڑھ رہا ہے کووڈ

    ہندوستان ٹائمس کی رپورٹ کے مطابق، ہندوستان میں اتوار کو 33 ہزار 647 نئے مریض ملے ہیں۔ 17 ستمبر یا کہیں کہ 107 دنوں کے بعد ایک دن میں یہ اعدادوشمار سب سے زیادہ ہے۔ دو جنوری کو ختم ہوئے ہفتے میں ہر روز اوسطاً کووڈ کے 18 ہزار 290 نئے معاملے سامنے آئے۔

    ہندوستان ٹائمس کی رپورٹ کے مطابق، ہندوستان میں اتوار کو 33 ہزار 647 نئے مریض ملے ہیں۔ 17 ستمبر یا کہیں کہ 107 دنوں کے بعد ایک دن میں یہ اعدادوشمار سب سے زیادہ ہے۔ دو جنوری کو ختم ہوئے ہفتے میں ہر روز اوسطاً کووڈ کے 18 ہزار 290 نئے معاملے سامنے آئے۔

    ہندوستان ٹائمس کی رپورٹ کے مطابق، ہندوستان میں اتوار کو 33 ہزار 647 نئے مریض ملے ہیں۔ 17 ستمبر یا کہیں کہ 107 دنوں کے بعد ایک دن میں یہ اعدادوشمار سب سے زیادہ ہے۔ دو جنوری کو ختم ہوئے ہفتے میں ہر روز اوسطاً کووڈ کے 18 ہزار 290 نئے معاملے سامنے آئے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: کورونا وائرس (Coronavirus) کا نیا ویریئنٹ ’اومیکران‘ (Omicron) انفیکشن کے معاملے میں گزشتہ سال سبھی متبادل کو پیچھے چھوڑتا ہوا نظر آرہا ہے۔ حال ہی میں سامنے آئے کچھ اعدادوشمار سے اس بات کے اشارے ملے ہیں۔ حالانکہ ماہرین کا ماننا ہے کہ اومیکران کے سبب اعدادوشمار میں اضافہ ہونے کے بعد بھی اسپتال میں داخل ہونے کی شرح کم ہے۔ وہیں انفیکشن ہونے کے بعد سنگین طور پر بیمار ہونے کی رپورٹس بھی کم سامنے آئی ہیں۔

      ہندوستان ٹائمس کی رپورٹ کے مطابق، ہندوستان میں اتوار کو 33 ہزار 647 نئے مریض ملے ہیں۔ 17 ستمبر یا کہیں کہ 107 دنوں کے بعد ایک دن میں یہ اعدادوشمار سب سے زیادہ ہے۔ دو جنوری کو ختم ہوئے ہفتے میں ہر روز اوسطاً کووڈ کے 18 ہزار 290 نئے معاملے سامنے آئے۔ ہندوستان ٹائمس کے اعادوشمار کے مطابق، 12 اکتوبر کے بعد یہ سات دنوں کے اوسط سب سے زیادہ ہے۔

      اعدادوشمار کے لحاظ سے گزشتہ ڈھائی ماہ میں معاملوں کی یہ سب سے خراب شرح ہے۔ وہیں جس شرح سے یہ بڑھ رہے ہیں، وہ بھی باعث تشویش ہے۔ 25 دسمبر کو ختم ہوئے ہفتے میں سات دنوں کا قومی اوسط 6 ہزار 641 پر تھا۔ اس لحاظ سے صرف ایک ہفتے میں نئے انفیکشن کی شرح 175 فیصدی تک بڑھ گئی۔ 9 اپریل 2020 کے بعد یہ سب سے بڑا ہفتہ وار اضافہ ہے۔ دوسری لہر کے دوران بھی اعدادوشمار 75 فیصدی کی شرح میں اضافہ ہوا تھا۔ رپورٹ کے مطابق، اگر کورونا انفیکشن کی موجودہ شرح بنی رہتی ہیں تو سات دنوں کے اندر روز ملنے والے معاملوں کی تعداد دوگنی ہوکر 36 ہزار ہوسکتی ہے۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: