உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پنجاب میں قیادت کی تبدیلی کا ایک ماہ مکمل، کیا چرنجیت چنی بن پائیں گے ریاست کے نئے ’کیپٹن‘؟

    پنجاب میں قیادت کی تبدیلی کا ایک ماہ مکمل، کیا چرنجیت چنی بن پائیں گے ریاست کے نئے ’کیپٹن‘؟

    پنجاب میں قیادت کی تبدیلی کا ایک ماہ مکمل، کیا چرنجیت چنی بن پائیں گے ریاست کے نئے ’کیپٹن‘؟

    Charanjit Singh Channi's Regime: ایک سرکاری افسر نے بتایا کہ چرنجیت سنگھ چنی کی رفتار کے ساتھ تال میل بٹھانا بہت مشکل ہے۔ وہ بغیر سوئے گھنٹوں کام کرسکتے ہیں۔ کیونکہ وہ سکریٹریٹ میں دیر رات تک کام کرتے ہیں اور رات میں بھی افسران سے سوال وجواب کرتے ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: بیٹے کی شادی سے متعلق پروگرام ہونے والا ہے، چرنجیت سنگھ چنی کانگریس کے سینئر لیڈر راہل گاندھی (Rahul Gandhi) کے ساتھ لکھیم پور کھیری (Lakhimpur Kheri) میں ہیں۔ وہ شادی سے کچھ گھنٹے پہلے چندی گڑھ لوٹتے ہیں، شادی اور دعوت میں شامل ہوتے ہیں اور پھر اپنے دفتر میں کابینہ کی میٹنگ کی صدارت کر رہے ہوتے ہیں، آگے اسی دن وہ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر نوجوت سنگھ سدھو (Navjot Singh Sidhu) کے لکھیم پور کھیری جلوس میں شامل ہوتے ہیں۔ یہ وزیر اعلیٰ چرنجیت سنگھ چنی کے معمول ہیں، جس میں وہ گزشتہ دنوں بہت رفتار لاچکے ہیں اور اس طرح انہیں پنجاب کی کمان سنبھالے ایک ماہ ہوگیا ہے۔

      چرنجیت سنگھ چنی اس دوران میٹنگ، پارٹی کارکنان کے ساتھ، ریاست کا دورہ، دیر رات تک کام کرنا کل ملاکر گزشتہ ایک ماہ سے وہ رکے نہیں ہیں۔ وہ سابق وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ کی کمی کو پورا کرنے کی پوری کوشش میں لگے ہوئے ہیں۔ اتوار کے روز چرنجیت سنگھ چنی کی ضدی نوجوت سنگھ سدھو کے ساتھ پانچ گھنٹے تک میٹنگ چلی۔ اگلی صبح 10 بجے چنی سول سکریٹریٹ میں کابینہ کی میٹنگ کر رہے تھے۔ اس کے بعد وہ میڈیا سے مخاطب ہوئے اور شام کو اپنے انتخابی حلقہ میں جانے کے لئے چمکور صاحب کے لئے روانہ ہوئے۔

      انڈین ایکسپریس میں شائع خبر کے مطابق، ایک سرکاری افسر نے بتایا کہ ان کی رفتار کے ساتھ تال میل بٹھانا بہت مشکل ہے۔ وہ بغیر سوئے گھنٹوں کام کرسکتے ہیں۔ وہ سکریٹریٹ میں دیر رات تک کام کرتے ہیں، پھر گھر جاتے ہیں اور رات کے 2:30 بجے کسی سوال کے جواب کے لئے فون کرنے لگتے ہیں۔ صبح 5 بجے وہ پھر سے فائل اٹھاکر اس پر کام کرنے لگ جاتے ہیں۔ کئی افسر تو اب نیند پوری نہیں ہونے کی شکایت کرنے لگے ہیں۔ وزیر اعلیٰ کا آئندہ اسمبلی انتخابات سے متعلق ریاست میں بڑے پیمانے پر دورہ کرنے کا منصوبہ ہے اور وہ مانجھا، داوبا اور مالوا علاقے کا دورہ پہلے ہی کرچکے ہیں۔

       چرنجیت سنگھ چنی اس دوران میٹنگ، پارٹی کارکنان کے ساتھ، ریاست کا دورہ، دیر رات تک کام کرنا کل ملاکر گزشتہ ایک ماہ سے وہ رکے نہیں ہیں۔ وہ سابق وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ کی کمی کو پورا کرنے کی پوری کوشش میں لگے ہوئے ہیں۔

      چرنجیت سنگھ چنی اس دوران میٹنگ، پارٹی کارکنان کے ساتھ، ریاست کا دورہ، دیر رات تک کام کرنا کل ملاکر گزشتہ ایک ماہ سے وہ رکے نہیں ہیں۔ وہ سابق وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ کی کمی کو پورا کرنے کی پوری کوشش میں لگے ہوئے ہیں۔


      انڈین ایکسپریس کی خبر کے مطابق، ایک سینئر لیڈر کہتے ہیں کہ چرنجیت سنگھ چنی بیچ میں کھیل میدان میں اترے ہیں، انہیں دوسرے کھلاڑیوں کے ساتھ تال میل بٹھانے کے لئے دوڑتے ہوئے میدان میں اترنا تھا، لیکن انہوں نے اپنی اننگ کو اچھے سے سنبھالا ہے۔ وہیں اگر کپٹن امریندر سنگھ کی بات کی جائے تو توہ کانگریس کے قدآور لیڈر ہیں، پنجاب میں ان کا ایک وزن ہے، ان کے پاس سب کچھ دستیاب تھا، ان کی حکومت کو نتائج اور حلف برداری تقریب کے درمیان ہی ایک ہفتے کا وقت ملا تھا اور انہوں نے اس وقت کا استعمال اعلانات کے لئے کیا تھا۔

      وہیں اگر چرنجیت سنگھ چنی کی بات کی جائے تو جب سے انہوں نے کمان سنبھالی ہے، انہیں ہر طرف سے کھینچا جا رہا ہے۔ وہ ہائی کمان سے میٹنگ کے لئے دہلی کے چکر لگا رہے ہیں۔ نوجوت سدھو جیسے لیڈر کو سنبھال رہے ہیں اور ان سبھی کے درمیان ہی وزیر اعلیٰ نے غریبوں کے لئے بجلی کے بقایا میں چھوٹ اور لال ڈورا علاقے میں رہنے والوں کے لئے جائیداد کے افسر کے عمل کو شروع کرنے میں کامیابی بھی حاصل کرلی ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: