ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : کیا پرائیویٹ اسپتال کے ڈاکٹروں کی لاپروائی سے گئی سوائن فلو کے کئی مریضوں کی جان

محکمہ صحت کے مطابق گزشتہ کچھ سالوں میں سوائن فلو نے ہزاروں افراد کی جان لی ہے اور آج بھی ایچ ون این ون وائرس کے انفیکشن کا خطرہ برقرار ہے ۔

  • Share this:
میرٹھ : کیا پرائیویٹ اسپتال کے ڈاکٹروں کی لاپروائی سے گئی سوائن فلو کے کئی مریضوں کی جان
میرٹھ : کیا پرائیویٹ اسپتال کے ڈاکٹروں کی لاپروائی سے گئی سوائن فلو کے کئی مریضوں کی جان

کیا سوائن فلو کے زیادہ تر مریض پرائیویٹ اسپتالوں کے ڈاکٹروں کی لاپروائی کا شکار ہو رہے ہیں ۔ میرٹھ کے چیف میڈیکل افسر کے مطابق سوائن فلو کی تصدیق کے لئے جانچ کے نمونے بھیجے جانے میں ہونے والی تاخیر وقت پر صحیح اور مکمل علاج نہ مل پانے کی ایک بڑی وجہ نظرآ رہی ہے ۔


سوائن فلو انسانی زندگی کے لئے ایک جان لیوا خطرہ ضرور ہے ، لیکن اب یہ بیماری لاعلاج نہیں ہے ۔ محکمہ صحت کے مطابق گزشتہ کچھ سالوں میں سوائن فلو نے ہزاروں افراد کی جان لی ہے اور آج بھی ایچ ون این ون وائرس کے انفیکشن کا خطرہ برقرار ہے ۔ صرف میرٹھ ضلع میں ہی جنوری سے لیکر اب تک 31 مریضوں میں سوائن فلو کی تصدیق ہو چکی ہے ، جن میں سے پانچ مریضوں کی موت بھی ہو چکی ہے ۔ تاہم میرٹھ کے چیف میڈیکل افسر کے مطابق سوائن فلو سے ہونے والی اموات کے زیادہ تر معاملوں میں یہی نظر آتا ہے کہ پرائیویٹ اسپتالوں میں ان مریضوں کا شروعاتی علاج فلو کے عام مریضوں کی طرح  کیا گیا اور سوائن فلو کی جانچ کافی تاخیر سے کرائی گئی ۔


گزشتہ روز سوائن فلو کے ایک اور مریض نے دم توڑ دیا ۔ حیرت کی بات یہ رہی کہ گزشتہ کئی روز سے میرٹھ کے ایک پرائیویٹ اسپتال میں زیر علاج اس مریض کی جانچ رپورٹ اس کی موت کے بعد آئی ، جس میں مریض کو سوائن فلو کی تصدیق ہوئی ۔ چیف میڈیکل افسر کے مطابق ضلع کے میڈیکل اسپتال کی لیب میں سوائن فلو کی جانچ  اور بہتر علاج کے لئے علاحدہ وارڈ کی سہولیات دستیاب ہے اور شروعاتی جانچ کے بعد ہی سوائن فلو کے مریض کا بہتر اور مکمّل علاج کیا جا سکتا ہے ، لیکن کچھ اسپتالوں کی لاپروائی مریضوں کی جان پر بھاری ثابت ہو رہی ہے ۔


کورونا کی طرح سوائن فلو بھی وائرل انفیکشن سے پھیلنے والی بیماری ہے ، لیکن شروعاتی جانچ ، احتیاط اور وقت پر دواؤں کے ذریعہ اس کا مکمل علاج ممکن ہے ، لیکن کئی پرائیویٹ اسپتالوں میں شروعاتی جانچ اور صحیح علاج کو لے کر برتی جا رہی لاپروائی مریضوں کے لئے جان لیوا ثابت ہو رہی ہے ۔
First published: Feb 19, 2020 08:16 PM IST