உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کالندی کنج علاقے میں ڈمپر نے دواسکولی بچوں کو کچل دیا، ایک کی موقع پرہی موت

    ہلاک عشرت اور زخمی نشاط کی فائل فوٹو

    ہلاک عشرت اور زخمی نشاط کی فائل فوٹو

    کالندی کنج علاقے ڈمپر نے دو اسکولی بچوں کو کچل دیا، جس میں سے ایک 12 سالہ بچی عشرت کی موقع پر ہی موت ہوگئی جبکہ اس کا بھائی بری طرح زخمی ہوگیا جو اپولو اسپتال میں زیر علاج ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: دارالحکومت دہلی کے مختلف علاقوں میں ٹریفک جام کا مسئلہ انتہائی سنگین ہے۔ جام کی وجہ  سے لوگوں کو بہت پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اسی کی خطرناک فرید آباد کالندی کنج روڈ پر دیکھنے کو ملی۔

      اس علاقے کے لئے پریشانی بنی ٹریفک نے دو اسکولی بچوں کو کچل دیا، جس میں سے ایک 12 سالہ بچی عشرت کی موقع پر ہی موت ہوگئی جبکہ اس کا بھائی بری طرح زخمی ہوگیا جو اپولو اسپتال میں زیر علاج ہے۔ 12سالہ بچی عشرت کی موت ہونے سے اس کی ماں تبسم کا برا حال ہے۔

      کالندی کنج سے متصل شرم وہار علاقے کی جھونپڑی میں رہنے والی عشرت کی ماں تبسم کا رو روکر براحال ہوگیا ہے، اس کا کہنا ہے کہ کوئی میری بچی عشرت کو واپس لادے اور اس کے بیٹے نشاط عرف راجو کو کوئی ٹھیک کردے۔ جھونپڑی میں جمع ہوئے ہرشخص اور خاتون کی آنکھوں میں آنسو دیکھنے کو ملا۔  تمام لوگوں یہی فریاد کرتے نظر آئے کہ انہیں انصاف چاہئے اور غریب خاندان کو حکومت معاوضہ دے کر سہارا دے۔

      دراصل 12 سال کی عشرت اور اس کا سگا بھائی نشاط عرف راجو صبح سویرے اسکول کے لئے نکلے تھے، اس دوران یہ دونوں بچوں ڈئیواڈر کے درمیان میں کھڑے تھے، تبھی ایک ڈمپرنے ڈیوائیڈر توڑ کر انہیں کچل دیا۔ عشرت کی موقع پر ہی موت ہوگئی جبکہ راجو کو اپولو اسپتال میں داخل کرایا گیا، جہاں اس کی حالت نازک بنی ہوئی ہے۔

      بچوں کے والد محمد اسحاق بہار گئے ہوئے ہیں۔ بھابھی کی موت کے بعد دو دن پہلے ہی اسحاق بہار کے بیگوسرائے چلے گئے تھے، وہیں ایک بار پھر ان پر دوسرا پہاڑ ٹوٹ  گیا ہے۔

      خرم شہزاد کی رپورٹ

       

       
      First published: