உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Uniform Civil Code:اویسی نے کہا’مسلموں کو کوئی پنچنگ بیگ نہیں سمجھ سکتا، یکساں سول کوڈ کی ضرورت نہیں‘

    Asaduddin Owaisi  نےیکساں سول کوڈ کی کردی سختی سے مخالفت۔

    Asaduddin Owaisi نےیکساں سول کوڈ کی کردی سختی سے مخالفت۔

    Asaduddin Owaisi on Uniform Civil Code: اسدالدین اویسی کے مطابق، ہمارے آئین میں مسلم ثقافت کے تحفظ کے لیے آئین میں بھی ہمیں تحفظ دیا گیا ہے۔ ہم یکساں سول کوڈ کے خلاف ہیں۔ قانون کی حکمرانی کو مضبوط کرنے کی ضرورت ہے۔ قانون سپریم ہے، جوخراب نہیں ہونا چاہیے۔ کسی مائی کا لال میں اتنی ہمت نہیں کہ وہ ہمیں پنچنگ بیگ بنا سکے۔

    • Share this:
      Asaduddin Owaisi on Uniform Civil Code:مہاراشٹر کے اورنگ آباد میں افطار پارٹی کے دوران اے آئی ایم آئی ایم کے قومی صدر اسد الدین اویسی نے یکساں سول کوڈ کی مخالفت کرتے ہوئے کہا، 'ملک کو اس قانون کی ضرورت نہیں ہے۔ مسلمانوں کو پنچنگ بیگ نہیں سمجھا جا سکتا۔ یہ پارٹی امتیاز جلیل کے گھر پر منعقد ہوئی، جس میں اے آئی ایم آئی ایم لیڈر اسد الدین اویسی بھی پہنچے تھے۔

      اویسی نے لاؤڈ اسپیکر تنازعہ کے بارے میں کہا کہ جب مہاراشٹر میں بھارتیہ جنتا پارٹی اور شیوسینا کی مخلوط حکومت تھی، کیا مہاراشٹر میں لوگوں کو لاؤڈ اسپیکر سے کوئی مسئلہ نہیں تھا یا پھر انہیں لاؤڈ اسپیکر کا احساس نہیں تھا۔ بی جے پی پر حملہ کرتے ہوئے اویسی نے کہا، "بی جے پی کو نفرت کا ادارہ بنایا جا رہا ہے اور مہاراشٹر نو نرمان لیڈر راج ٹھاکرے صرف اس نفرت کو ادارہ بنانے کو بڑھاوا دے رہے ہیں۔"

      یہ بھی پڑھیں:
      Hanuman Chalisa Row:مذہب کے نام پرہورہی سیاست،مہنگائی-بے روزگاری پرنہیں ہورہی بات: شردپوار

      مسلمانوں کو پنچنگ بیگ نہیں بننے دیں گے: اویسی
      اویسی نے شراب پر سوال اٹھایا اور کہا کہ شراب پر پابندی کیوں نہیں؟ جہاں بھی بی جے پی کی حکومت ہے، وہ شراب پر پابندی کیوں نہیں لگاتے؟ یونیفارم سول کوڈ اور کامن کوڈ میں فرق ہے۔ میگھالیہ، میزورم اور ناگالینڈ کی ثقافت کے تحفظ کا وعدہ کیا ہے۔


      یہ بھی پڑھیں:
      ملک میں حالیہ فرقہ وارانہ واقعات پر امام بخاری نے توڑی خاموشی، کریں گے PM Modi سے ملاقات

      اسدالدین اویسی کے مطابق، ہمارے آئین میں مسلم ثقافت کے تحفظ کے لیے آئین میں بھی ہمیں تحفظ دیا گیا ہے۔ ہم یکساں سول کوڈ کے خلاف ہیں۔ قانون کی حکمرانی کو مضبوط کرنے کی ضرورت ہے۔ قانون سپریم ہے، جوخراب نہیں ہونا چاہیے۔ کسی مائی کا لال میں اتنی ہمت نہیں کہ وہ ہمیں پنچنگ بیگ بنا سکے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: