உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    قونصلر رسائی : کلبھوشن جادھو سے ملے ڈپٹی ہائی کمشنر ، دو گھنٹے ہوگی بات چیت

    قونصلر رسائی : کلبھوشن جادھو سے ملے ڈپٹی ہائی کمشنر ، دو گھنٹے ہوگی بات چیت

    قونصلر رسائی : کلبھوشن جادھو سے ملے ڈپٹی ہائی کمشنر ، دو گھنٹے ہوگی بات چیت

    پاکستان نے کلبھوشن جادھو کو قونصلررسائی دینے کی پیشکش کی ہے۔اس تجویز پرہندوستان نے اپنا رُخ صاف کیا ہے کہ پاکستان بنا نگرانی کے قونصلر رسائی دے۔ یہ دوسراموقع ہے جب پاکستان نے کلبھوشن کو قونصلرایکسس دینے کی بات کہی ہے

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      پاکستان کی جیل میں بند کلبھوشن جادھو کیلئے آج بڑا دن ہے ۔ عالمی عدالت کے حکم کے مطابق پاکستان نے پیر کو کلبھوشن جادھو کو قونصلر رسائی دی ہے ۔ اسلام آباد میں ہندوستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر گورو اہلووالیہ کلبھوشن سے ملنے کیلئے وزرات خارجہ کے دفتر میں پہنچ گئے ہیں ۔ ہندوستان کوامید ہے کہ ہے کہ اچھے ماحول میں ملاقات ممکن بنانے کیلئے پاکستان کی طرف سے تعاون کیا جائے گا ۔ دونوں کے درمیان دو گھنٹے تک ملاقات ہوگی ۔ جادھو کا جواب جاننے کے بعد ڈپٹی ہائی کمشنر اپنی حکومت کو رپورٹ بھیجیں گے ۔ پھر حکومت کی جانب سے آگے کی کارروائی کی جائے گی ۔

      پاکستان نے اتوار کے روز اعلان کیا ہے کہ کلبھوشن جادھو کو 2 ستمبر کو قونصلر رسائی فراہم کی جائے گی۔ پاکستان دفتر خارجہ کے ترجمان محمد فیصل نے کہا کہ 49 سالہ کلبھوشن جادھو کو سفارتی تعلقات، ویانا کنونشن برائے سفارتی تعلقات ، بین الاقوامی عدالت انصاف (آئی سی جے) کے فیصلوں اور پاکستان کے قوانین کے مطابق سفارتی رسائی فراہم کی جارہی ہے۔

      یاد رہے کہ اس سے پہلے یکم اگست کو پاکستان کے دفتر خارجہ نے کہا کہ ہندوستانی بحریہ کے ایک ریٹائرڈ افسر کلبھوشن کو سزائے موت سنائی گئی ہےاور انہیں کل یعنی (2 اگست ) کے دن سفارتخانے کی قونصلر رسائی فراہم کی جائے گی۔ تاہم ، دونوں ممالک کے مابین سفارتخانہ کی مدد کی شرائط پر اختلافات کی وجہ سے 2 اگست کو طے شدہ ملاقات نہیں ہوسکی۔

      چونکہ 2اگست کو طئے شدہ ملاقات نہیں ہوسکی لہذا پاکستان کے مقاصد پر سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔ اس کے فوراً بعد ہی  پاکستان نے دعویٰ کیا کہ تقریباً چھ ہفتوں کے بعد کلبھوشن جادھو کو سفارتخانے کے ذریعہ قونصلر رسائی فراہم کی جائیگی۔ اسلام آباد نے کہا کہ وہ اس معاملے پر ہندوستان سے رابطے میں ہے۔

      ہندوستان کا موقف

      جمعرات کوہندوستان نے کہا کہ اس نے پاکستان سے کہا ہے کہ وہ کلبھوشن جادھو کو فوری ، موثراوربلاتعطل سفارتی رسائی فراہم کرے اور سفارتی چینلز کے ذریعہ ہمسایہ ملک سے رابطے میں ہے۔ جولائی میں عالمی عدالت نے پاکستان کوبغیرکسی تاخیر کے ہندوستان کو جادھوتک سفارتی رسائی دینے کا حکم دیا تھا۔ وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے صحافیوں کوبتایا کہ ہم سفارتی چینلز کے ذریعے پاکستانی فریق سے رابطے میں ہیں۔ بین الاقوامی عدالت انصاف کے حکم کی تعمیل کرتے ہوئےفوری، مؤثراوربلا روک ٹوک سفارتی رسائی فراہم کرنے کی ہدایت دی ہے۔

      پاکستان کی عدالت نے2017 میں سنائی تھی سزائے موت

      ہندوستانی بحریہ کے 49 سالہ ریٹائرڈ آفیسر کلبھوشن جادھو کو اپریل 2017 میں پاکستانی فوجی عدالت نے 'جاسوسی اور دہشت گردی' کے الزام میں سزائے موت سنائی تھی۔ ہندوستان کا کہنا ہے کہ کلبھوشن جادھو کو ایران سے اغواکیا گیا تھا جہاں وہ بحریہ سے ریٹائر ہونے کے بعد کاروباری مقصد کے لئے گیا تھا اوراس پرغلط الزام لگایاگیا ہے۔ اس کے بعد ہندوستان نے عالمی عدالت سے رجوع کیا تھا۔
      First published: