ہوم » نیوز » وطن نامہ

ہندوستانی آرمی چیف کے بیان پربوکھلاہٹ کا شکار ہوا پاکستان۔ کہی یہ بات

جنرل منوج مکندنرونے نے کہا کہ ہندوستان نے دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے صفر رواداری کی پالیسی (زیرو ٹالرنس پالیسی) اپنائی ہے۔

  • Share this:
ہندوستانی آرمی چیف کے بیان پربوکھلاہٹ کا شکار ہوا پاکستان۔ کہی یہ بات
جنرل منوج مکندنرونے نے کہا کہ ہندوستان نے دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے صفر رواداری کی پالیسی (زیرو ٹالرنس پالیسی) اپنائی ہے۔

پاکستان نے بدھ کے روزہندوستان کے نئے آرمی چیف کے بیان کوغیرذمہ دارانہ قراردیاہے کہ لائن آف کنٹرول کے پاراحتیاطًٰ حملے کرنے کاہندوستان کو حق ہے۔ منگل کے روز آرمی چیف کا عہدہ سنبھالنے کے صرف چند گھنٹوں کے بعد ، جنرل منوج مکند نروانے، نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ دہشت گردی کے خطرے نمٹنے کے لیے ہندوستان لائن آف کنٹرول کے پارحملہ کرنے کا حق رکھتاہے۔


جنرل منوج مکند نروانے، نے کہا تھا کہ سرحد پار سے ہونے والی دہشت گردی کے خلاف، ہندوستان نئی سوچ کی جھلک مضبوطی سے ظاہرکرسکتاہے۔ آرمی چیف نے کہا تھا،"اگرپاکستان اپنی سرپرستی میں ہونے والی دہشت گردی کی اپنی پالیسی ختم نہیں کرتاہے تو ، ہمیں ایسی صورتحال میں دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے حملہ کرنے کا حق ہے اور سرجیکل اسٹرائک اور بالاکوٹ آپریشن جیسی کارروائیوں سے ہندوستان نے اپنے عزائم ظاہرکردیئے ہیں۔


اس بیان پرپاکستان کی وزارت خارجہ ردعمل ظاہرکیاہے۔ وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا،"ہندوستان کے نئے آرمی چیف کے مقبوضہ کشمیر پرہم لائن آف کنٹرول کے پاراحتیاطی طورپر حملہ کرنے کے غیر ذمہ دارانہ بیان کو مسترد کرتے ہیں۔ اس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کے مقبوضہ کشمیر میں ہندوستان کے جارحانہ اقدام کو ناکام بنانے کے لئے پاکستان کے عزم اور تیاری کے بارے میں کوئی شک نہیں ہونا چاہئے۔ پاکستان کی وزارت خارجہ نے کہا "کسی کو ہندوستان کے بالاکوٹ میں ڈھٹائی کے بعد پاکستان کے جواب کو فراموش نہیں کرنا چاہئے۔"


دہشت گردی سے نٹمنے کےلیے حملہ کرنے کا حق: آرمی چیف

جنرل منوج مکندنرونے نےکہا کہ ہندوستان نے دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے صفر رواداری کی پالیسی (زیرو ٹالرنس پالیسی) اپنائی ہے۔ ہندوستان، پاکستانی حکومت کی سرپرستی کا سہارا لیکرہونے والی دہشت گردی کوبرداشت نہیں کریں گے۔جنرل منوج مکندنرونے، نے کہا کہ ہندوستان نے ماضی میں سراجیکل اسٹرائیک اور بالاکوٹ آپریشن کرتے ہوئے اپنے عزائم صاف کردیئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستانی فوج پاکستان کی جانب سے کیے گئے کسی بھی کارروائی کا منہ توڑجواب دینے کے لیے تیارہیں۔

لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے بنے آرمی چیف، سنبھالاعہدہ ۔ (تصویر:نیوز18)۔
لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے بنے آرمی چیف، سنبھالاعہدہ ۔ (تصویر:نیوز18)۔


یادرہے کہ جنرل منوج مکندنرونے کو ستمبر میں فوج کا ڈپٹی کمانڈر مقرر کیاگیا تھا۔اس سے پہلے وہ فوج کی مشرقی کمان کی قیادت کررہے تھے،جو چین کے ساتھ لگتی ہندوستان کی تقریباً 4000کلومیٹر سرحد کی نگرانی کرتی ہے۔وہ قومی دفاعی اکاڈمی اور ہندوستانی فوج اکاڈمی کے کیڈٹ رہے ہیں۔انہیں جون 1980میں سکھ لائٹ انفنٹری ریجیمنٹ کی ساتویں بٹالین میں کمیشن ملاتھا۔نئی فوجی سربراہ نے 37سال کی فوجی خدمات کے دوران جموں وکشمیر اورشمال مشرق میں امن کا دوراورحدسے زیادہ فعال انسداد دہشت گردی حالات میں کئی کمان اوراسٹاف تقرریوں پر کام کیاہے۔وہ جموں و کشمیر میں قومی رائفلس اور مشرقی مورچے پر ایک پیدل فوج بریگیڈ کی کمان بھی سنبھال چکے ہیں۔جموں و کشمیر میں خصوصی قیادت کےلئے جنرل نرونے کو ’فوجی تمغہ‘(اسپیشل)سے نوازا گیاتھا۔انہیں ناگالینڈ میں آسام رائفلس (شمال)کے انسپیکٹرجنرل کے طورپر اپنی خدمات کےلئے ’خصوصی خدمات تمغہ‘ اور پریسٹیجیس اسٹرائک کور کی کمان سنبھالنے کےلئے ’بےحد خاص خدمات تمغہ‘سے بھی نوازا جاچکا ہے۔
First published: Jan 02, 2020 10:32 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading