ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Drone: اسلام آبادمیں ہندوستانی ہائی کمیشن کےپاس ڈرون نظرآنےکادعویٰ بے بنیاد: پاکستان

پاکستان کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ، "ہندوستانی وزارت خارجہ اور بھارتی میڈیا کا ایک خاص طبقہ الزام لگا رہا ہے کہ اسلام آباد میں ہندوستانی ہائی کمیشن کے احاطے میں ایک ڈرون اڑ رہا تھا۔ یہ دعوے بے بنیاد ہیں اور ان میں کوئی حقیقت نہیں ہے۔

  • Share this:
Drone: اسلام آبادمیں ہندوستانی ہائی کمیشن کےپاس ڈرون نظرآنےکادعویٰ بے بنیاد: پاکستان
پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی

جموں میں ڈرون کے ذریعے دہشت گردوں کے حملے کے بعد ، جمعہ کے روز یہ خبر آئی کہ اسلام آباد میں ہندوستانی ہائی کمیشن پر ایک ڈرون نظر آیا۔ ہندوستان نے اس معاملے کو سنجیدگی سے لیا ہے اور حکومت پاکستان کے ساتھ سخت اعتراض جتایا ہے۔ اب پاکستان کی وزارت خارجہ نے اس پر وضاحت پیش کی ہے۔ یادر ہے کہ اتوار کے روز جموں ائیر بیس پر ڈرون حملہ ہوا۔ ڈرون کے ذریعے کیے گئے دھماکے میں ایر بیس کو نقصان پہنچا تھا۔


پاکستان کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ، "ہندوستانی وزارت خارجہ اور بھارتی میڈیا کا ایک خاص طبقہ الزام لگا رہا ہے کہ اسلام آباد میں ہندوستانی ہائی کمیشن کے احاطے میں ایک ڈرون اڑ رہا تھا۔ یہ دعوے بے بنیاد ہیں اور ان میں کوئی حقیقت نہیں ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان نے ٹویٹ کیا ، "یہ پروپیگنڈا مہم ہندوستان ایک ایسے وقت میں چلا رہا ہے جب 23 جون کے لاہور دھماکوں میں اب تک جمع ہونے والے ثبوت بیرونی قوتوں کی طرف اشارہ کررہے ہیں ۔



ٹویٹ میں ، لکھا گیاہے، 'پاکستان ان جھوٹے الزامات اور ہندوستانی تدبیروں کو کھلے دل سے مسترد کرتا ہے اورانڈیا کے زیرِ انتظام کشمیر کے عوام کے ساتھ حق خود ارادیت کے حق میں اپنی جدوجہد میں کھڑا ہوگا جیسا کہ یو این ایس سی کی قراردادوں میں درج ہے۔' ایئربیس پر حملے کے اگلے ہی دن ، دہشت گردوں نے بھی ڈرون سے فوجی اسٹیشن پر حملہ کرنے کی کوشش کی۔ جموں کے کالوچک اسٹیشن پر صبح 3 بجے ڈرونز دیکھے گئے۔

اتوار کی دیر رات دہشت گردوں نے جموں کے ائیر بیس پر ڈرون سے حملہ کیا۔ ایئر فورس اسٹیشن پر دو دھماکے ہوئے ، جس میں چھت کو نقصان پہنچا۔ پہلا دھماکا دوپہر 1.37 بجے ہوا۔ اس کے پانچ منٹ کے اندر ہی دوسرا دھماکہ ہوا۔ دو فوجیوں کو معمولی چوٹیں بھی آئیں۔ یہ پہلا موقع تھا جب سرحد پار بیٹھے دہشت گردوں نے حملہ کرنے کے لئے ڈرون کا استعمال کیا۔

حملے میں پہلی بار استعمال ہوا ڈرون

اس سے پہلےدہشت گرد حملوں میں ڈرون کا استعمال نہیں دیکھا گیا تھا۔ اس معاملے کی تفتیش این آئی اے کے حوالے کردی گئی ہے۔ ڈرونز کے ذریعے حملہ کرنے میں بھی زیادہ قیمت نہیں آتی ہے جبکہ اس طرح کے حملوں میں خطرہ کم ہے۔ ڈرون بعض افراد ہی اڑ سکتے ہیں اور وہ راڈار میں بھی نہیں پکڑے جاتے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Jul 03, 2021 07:45 AM IST