بھارت ماتا کی جے کے نعرے پر اب باغپت کی پنچایت کا تغلقی فرمان ، نہ بولنے والوں کا سماجی و اقتصادی بائیکاٹ کا اعلان

باغپت : ملک میں بھارت ماتا کی جے نعرے کو لے کر جاری سیاسی ہنگامہ آرائی کے دوران اب کھاپ پنچایتیں بھی کود پڑی ہیں ۔

Apr 03, 2016 12:48 PM IST | Updated on: Apr 03, 2016 12:48 PM IST
بھارت ماتا کی جے کے نعرے پر اب باغپت کی پنچایت کا تغلقی فرمان ، نہ بولنے والوں کا سماجی و اقتصادی بائیکاٹ کا اعلان

باغپت : ملک میں بھارت ماتا کی جے نعرے کو لے کر جاری سیاسی ہنگامہ آرائی کے دوران اب کھاپ پنچایتیں بھی کود پڑی ہیں ۔ یوپی کے باغپت کی پنچایت نے اس کو لے کر تغلقی فرمان جاری کیا ہے ۔ پنچایت نے اپنے فرمان میں کہا ہے کہ اس نعرے کو نہیں کہنے والوں کا سماجی اور اقتصادی طور پر بائیکاٹ کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ اس تنازع کی شروعات موہن بھاگوت نے کی تھی اور اس کے بعد اسد الدین اویسی نے بیان سے سیاست گرماگئی تھی ۔ مگر بھاگوت اور اویسی کے بیانوں کے بعد تو ملک بھر میں بیان بیازیوں کا دور ہی شروع ہوگیا ہے ۔ بی جے پی کے تقریبا اکثر و بیشتر لیڈران اس معاملہ پر متنازع بیانات دے چکے ہیں۔

اس سلسلہ میں گزشتہ روزمہاراشٹر کے وزیر اعلی دیویندر فرنويس نے متنازع بیان دیا ۔ فرنويس نے کہا کہ اس ملک میں سب کو بھارت ماتا کی جے بولنا ہی پڑے گا۔ جے نہیں بولنے والوں کو ملک میں رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ فرنويس نے ایک پروگرام کے دوران سوالیہ لہجے میں کہا کہ کون کہہ رہا کہ بھارت ماتا کی جے نہیں بولوں گا؟ جو لوگ بھارت ماتا کی جے نہیں بول سکتے، وہ ملک میں نہیں رہ سکتے۔

Loading...

Loading...