உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    National Panchayati Raj Day:منموہن سنگھ نے آخر24اپریل کی کیوں منتخب کی تھی تاریخ؟

    پنچایتوں کو آئینی حقوق فراہم کرنے والا بل 24 اپریل 1992 سے وجود میں آیا تھا، اس لیے اس تاریخ کو ہر سال یوم پنچایت کے طور پر منایا جاتا ہے۔

    پنچایتوں کو آئینی حقوق فراہم کرنے والا بل 24 اپریل 1992 سے وجود میں آیا تھا، اس لیے اس تاریخ کو ہر سال یوم پنچایت کے طور پر منایا جاتا ہے۔

    National Panchayati Raj Day:اس وقت ہمارے ملک میں 2.51 لاکھ پنچایتیں ہیں، جن میں 2.39 لاکھ گرام پنچایتیں، 6904 بلاک پنچایتیں اور 589 ضلع پنچایتیں شامل ہیں۔پنچایتوں کو آئینی حقوق فراہم کرنے والا بل 24 اپریل 1992 سے وجود میں آیا تھا، اس لیے اس تاریخ کو ہر سال یوم پنچایت کے طور پر منایا جاتا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: National Panchayati Raj Day:آج قومی پنچایتی راج دن ہے۔ یہ دن 24 اپریل کو گاؤں کی ترقی کے لیے منایا جاتا ہے۔ لیکن کیا آپ ہندوستان میں پنچایتی راج سے متعلق دلچسپ حقائق جانتے ہیں؟ ہندوستان میں کب شروع ہوا، کتنی پنچایتیں ہیں؟ آخر ملک میں یہ دن ہر سال 24 اپریل کو کیوں منایا جاتا ہے؟ ہم آپ کو 'قومی پنچایتی راج دن' سے متعلق کچھ دلچسپ حقائق بتا رہے ہیں۔

      ملک میں کب لاگو ہوا پنچایتی راج
      ملک میں پہلی بار پنچایتی راج راجستھان سے شروع ہوا تھا۔ ملک میں پنچایتی راج نظام کی پہلی بنیاد راجستھان کے ناگور ضلع میں رکھی گئی۔ 2 اکتوبر 1959 کو ملک کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو نے پنچایتی راج نظام متعارف کرایا۔ آپ کو بتاتے چلیں کہ بابائے قوم مہاتما گاندھی کی پیدائش 2 اکتوبر کو ہوئی تھی۔
      یہ بھی پڑھیں :
      Panchayati Raj Diwas 2022:جموں کشمیر کے پللی گاوں سے آج ملک بھر کی پنچایتوں سے خطاب کریں گے پی ایم مودی۔ سخت حفاظتی انتظامات

      کب سے شروع ہوا یوم پنچایت راج
      گاندھی جی کے دیہی ہندوستان کے خواب کو پورا کرنے کے لیے، 1992 میں آئین میں 73ویں ترمیم کی گئی اور پنچایتی راج ادارے کا تصور پیش کیا گیا۔ اس قانون کی مدد سے بلدیاتی اداروں کو زیادہ سے زیادہ اختیارات دیے گئے۔ 24 اپریل کا دن ہندوستانی آئین کے 73ویں ترمیمی ایکٹ 1992 کی منظوری کا دن ہے۔ قومی پنچایتی راج دن منانے کی شروعات 2010 میں وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ نے کی تھی۔

      پنچایتی راج میں کتنے مراحل ہیں؟
      ہندوستان میں پنچایتی راج تین مراحل پر مشتمل ہے۔ یہ تین درجے پنچایتی راج نظام کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ ان تین سطحوں میں گرام پنچایت (گاؤں کی سطح پر)، پنچایت سمیتی (انٹرمیڈیٹ سطح پر) اور ضلع پریشد (ضلع کی سطح پر) شامل ہیں۔ 20 لاکھ سے زیادہ آبادی والی تمام ریاستوں میں گاؤں، بلاک اور ضلع کی سطح پر پنچایتیں بنتی ہیں۔

      ملک میں مجموعی طور پر کتنی پنچایتیں ہیں؟
      اس وقت ہمارے ملک میں 2.51 لاکھ پنچایتیں ہیں، جن میں 2.39 لاکھ گرام پنچایتیں، 6904 بلاک پنچایتیں اور 589 ضلع پنچایتیں شامل ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں :

      پنچایتوں کی معیاد
      پنچایتی راج کی مدت پانچ سال ہے۔ اسے پہلے بھی تحلیل کیا جا سکتا ہے۔ پنچایت کی مدت پوری ہونے یا تحلیل ہونے کے 6 ماہ کے اندر انتخابات کرانا لازمی ہے۔

      پنچایتی راج کیسے چلتا ہے؟
      گاؤں کی سطح پر تمام اختیارات سرپنچ کے پاس تھے۔ لیکن اب گاؤں، بلاک اور ضلع کی سطح پر انتخابات ہوتے ہیں اور نمائندے منتخب ہوتے ہیں۔ پنچایت میں SC/ST اور خواتین کے لیے ریزرویشن ہے۔ پنچایتی راج اداروں کو مختلف اختیارات دیے گئے ہیں تاکہ وہ موثر طریقے سے کام کرسکیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: