உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لندن کی گوری میم نے ہریانہ کے کسان سے ٹھگے 1.20 لاکھ روپئے، ہندوستان آنے کے بہانے مانگے تھے پیسے

    Fraud with Farmer: پولیس کو دی شکایت میں رشی پال نے بتایا کہ وہ گاوں کرانا کا رہنے والا ہے۔ اس کی تقریباً تین ماہ پہلے سوشل میڈیا پر لندن کی رہنے والی خاتون سے دوستی ہوئی تھی۔ دوستی کے بعد دونوں نے موبائل نمبر شیئر کرلئے۔ اس کے بعد دونوں کی واٹس اپ پر ویڈیو کال کے ذریعہ سے بات چیت ہونے لگی۔

    Fraud with Farmer: پولیس کو دی شکایت میں رشی پال نے بتایا کہ وہ گاوں کرانا کا رہنے والا ہے۔ اس کی تقریباً تین ماہ پہلے سوشل میڈیا پر لندن کی رہنے والی خاتون سے دوستی ہوئی تھی۔ دوستی کے بعد دونوں نے موبائل نمبر شیئر کرلئے۔ اس کے بعد دونوں کی واٹس اپ پر ویڈیو کال کے ذریعہ سے بات چیت ہونے لگی۔

    Fraud with Farmer: پولیس کو دی شکایت میں رشی پال نے بتایا کہ وہ گاوں کرانا کا رہنے والا ہے۔ اس کی تقریباً تین ماہ پہلے سوشل میڈیا پر لندن کی رہنے والی خاتون سے دوستی ہوئی تھی۔ دوستی کے بعد دونوں نے موبائل نمبر شیئر کرلئے۔ اس کے بعد دونوں کی واٹس اپ پر ویڈیو کال کے ذریعہ سے بات چیت ہونے لگی۔

    • Share this:
      پانی پت: ہریانہ کے پانی پت ضلع میں ایک کسان (Farmer) لندن کی گوری میم کے چکر میں لاکھوں روپئے کی ٹھگی کا شکار ہوگیا۔ کسان کی ایوا براون (Eva Brown) نام کی خاتون کے ساتھ تین ماہ سے بات چیت ہو رہی تھی، جس کے بعد گوری میم نے ہندوستان گھومنے آمنے کی بات کہی۔ اس نے کسان سے ہندوستان آنے کے بعد ممبئی ایئر پورٹ (Mumbai Airport) پر محکمہ کسٹم کے ہتھے چڑھنے اور چھڑانے کے لئے رقم کا مطالبہ کیا۔

      اس دوران ملزم خاتون نے کسان کو ویڈیو کال کرکے دکھایا کہ وہ ایئر پورٹ پر ہے، جس کے سبب کسان اس کے جھانسے میں آگیا اور اس نے اس کے ذریعہ دیئے گئے بینک اکاونٹ میں روپئے ڈلوا دیئے۔ اس کے بعد نہ خاتون کا پتہ لگا اور نہ روپئے واپس ملے۔ پولیس نے شکایت کی بنیاد پر دھوکہ دہی سمیت کئی دفعات کے تحت کیس درج کرکے ملزم خاتون کی تلاش شروع کردی ہے۔

      پولیس کو دی شکایت میں رشی پال نے بتایا کہ وہ گاوں کرانا کا رہنے والا ہے۔ اس کی تقریباً تین ماہ پہلے سوشل میڈیا پر لندن کی رہنے والی خاتون سے دوستی ہوئی تھی۔ دوستی کے بعد دونوں نے موبائل نمبر شیئر کرلئے۔ اس کے بعد دونوں کی واٹس اپ پر ویڈیو کال کے ذریعہ سے بات چیت ہونے لگی۔ بات چیت کے دوران دونوں کے درمیان دوستی گہری ہوتی چلی گئی۔

      رشی پال خاتون پر بھروسہ کرنے لگا۔ اسی سال جنوری کے آخری ہفتے میں اس نے ہندوستان گھومنے کے بارے میں کہا۔ 31 جنوری کو ایک کال آئی۔ کال کرنے والے نے خود کو کسٹم ڈپارٹمنٹ ممبئی ایئر پورٹ سے بات کرنے کے بارے میں بتایا۔ کال کرنے والے نے کہا کہ آپ کی دوست ممبئی ایئر پورٹ پر آئی ہوئی ہے۔ اس کو دہلی بھیجنے کے لئے 1.20 لاکھ روپئے ٹکٹ کی ضرورت ہے۔ ورنہ آپ کی دوست کو ڈیپوٹ کردیا جائے گا۔ رشی پال ان کے جھانسے میں آگیا۔ جھانسے میں لینے کے بعد ٹھگوں نے اس کے پاس ایک بینک اکاونٹ نمبر بھیجا۔

      تین بار میں الگ الگ ضرورتوں کے نام پر اس سے 1.20 لاکھ روپئے اکاونٹ میں ڈلوا لئے۔ کھاتے میں روپئے ڈلوانے کے بعد ٹھگ خاتون دو دن تک تو رشی پال سے بات کرتی رہی، لیکن اب اس کا نمبر سوئچ آف ہوگیا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: