உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مانسون سیشن: وزیر اعظم مودی نے کہا- اپوزیشن کے ذریعہ پارلیمنٹ نہ چلنے دینا آئین اور جمہوریت کی توہین

    Parliament Monsoon Session: بی جے پی پارلیمنٹری بورڈ کی میٹنگ میں وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ حکومت اور پارٹی اراکین پارلیمنٹ کو ہر وہ اقدام کرنا چاہئے، جس سے ایوان کو بہتر طریقے سے چلایا جاسکے۔

    Parliament Monsoon Session: بی جے پی پارلیمنٹری بورڈ کی میٹنگ میں وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ حکومت اور پارٹی اراکین پارلیمنٹ کو ہر وہ اقدام کرنا چاہئے، جس سے ایوان کو بہتر طریقے سے چلایا جاسکے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پارلیمنٹ کے مانسون اجلاس (Parliament Monsoon Session) میں اپوزیشن کے ہنگامے کو وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) نے آئین اور جمہوریت کی توہین قرار دیا ہے۔ منگل کو بی جے پی پارلیمانی بورڈ کی میٹنگ میں وزیر اعظم مودی نے اپوزیشن کے ذریعہ پارلیمنٹ نہیں چلنے دینے کو آئین اور جمہوریت کی توہین بتایا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت اور پارٹی اراکین پارلیمنٹ کو ہر وہ اقدام کرنا چاہئے، جس سے ایوان کو بہتر طریقے سے چلایا جاسکے۔ اس سے پہلے بی جے پی پارلیمنٹری بورڈ کی میٹنگ میں او بی سی طبقے کو میڈیکل کی پڑھائی میں 27 فیصد اور اقتصادی طور پر کمزور لوگوں کے لئے 10 فیصد ریزرویشن دینے کے لئے اراکین پارلیمنٹ نے وزیر اعظم نریندر مودی کو مبارکباد پیش کی۔

      میٹنگ کے بعد اطلاع دیتے ہوئے مرکزی وزیر وی مرلی دھرن نے کہا کہ پارلیمانی کمیٹی کی میٹنگ میں وزیر اعظم نریندر مودی نے خطاب کا آغاز اچھی خبر سے کیا تھا۔ ہمارا جی ایس ٹی کلیکشن 1.16 لاکھ کروڑ پہنچ گیا ہے۔ ٹوکیو اولمپک میں پی وی سندھو کا کانسے کا تمغہ جیتنا اور ہاکی ٹیم کی حصولیابی کے بارے میں بھی وزیر اعظم نے بات کی۔ مرلی دھرن نے کہا کہ پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں اپوزیشن کا ہنگامہ پارلیمنٹ کی توہین ہے، جس شخص نے کاغذ چھینا اور اسے پھاڑ دیا، اسے اپنے اعمال پر کوئی پچھتاوا نہیں ہے۔ بلوں کو منظور کرانے سے متعلق ایک سینئر رکن پارلیمنٹ کے ذریعہ کیاگیا تبصرہ قابل توہین ہے۔

      مرکزی وزیر وی مرلی دھرن نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے اس بات کو دوہرایا کہ لوگوں کی امیدوں کو پورا کرنے کے لئے ہم کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے۔ وزیر اعظم مودی نے اس کے ساتھ ہی ای - روپی کی بھی بات کی اور کہا کہ اس سے لوگوں کو خصوصی طور پر فائدے ملیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کئی ساری اسکیموں کا استعمال کئی دیگر مقاصد کے لئے ہو رہا ہے، لیکن ای - روپی سے ان سب کا ازالہ ہوجائے گا۔

      وہیں مرکزی وزیر پرہلاد جوشی نے ترنمول کانگریس کے راجیہ سبھا رکن پارلیمنٹ ڈیریک اوبرائن کے ذریعہ پیر کے روز کئے گئے ٹوئٹ کا ذکر کرتے ہوئے کہا، ’وزیر اعظم نے اسے ان لوگوں کی توہین قرار دیا، جنہوں نے اراکین پارلیمنٹ کو منتخب کیا ہے۔ انہوں نے اس پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ ’پاپڑی چاٹ بنا رہے ہیں‘، کہنا قابل توہین ہے۔ کاغذ پھاڑنا اور انہیں پھینکنا اور پھر معافی نہیں مانگنا، یہ سب غرور کی بات ہے۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: