ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کھلاڑیوں کے کھلاڑی پٹیل محمد الیاس کو تہنیت پیش، لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ سے سرفراز

کھیل کے میدان میں کئی ہزاروں نوجوانوں کا مستقبل سنوارنے والے، مسلسل 33 سالوں سے بنگلور یونیوسٹی میں الامین کالج کا نام روشن کرنے والے، دیہات سے ابھر کر کرناٹک اور قومی سطح پر مقام پانے والے پٹیل محمد الیاس کو ان کے آبائی مقام کیرے بیلچی میں تہنیت پیش کی گئی۔ پٹیل محمد الیاس کی دیرینہ خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے 2 نومبر 2020 کو کرناٹک حکومت نے انہیں لائف ٹائم ایچیومنٹ ایوارڈ سے تفویض کیا ہے۔

  • Share this:
کھلاڑیوں کے کھلاڑی پٹیل محمد الیاس کو تہنیت پیش، لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ سے سرفراز
کھلاڑیوں کے کھلاڑی پٹیل محمد الیاس کو تہنیت پیش

بنگلورو: کھیل کے میدان میں کئی ہزاروں نوجوانوں کا مستقبل سنوارنے والے، مسلسل 33 سالوں سے بنگلورو یونیورسٹی میں الامین کالج کا نام روشن کرنے والے، دیہات سے ابھر کر کرناٹک اور قومی سطح پر مقام پانے والے پٹیل محمد الیاس کو ان کے آبائی مقام کیرے بیلچی میں تہنیت پیش کی گئی۔ پٹیل محمد الیاس کی دیرینہ خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے 2 نومبر 2020 کو کرناٹک حکومت نے انہیں لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ سے تفویض کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ بی ایس یدی یورپا کے ہاتھوں یہ ایوارڈ پیش کیا گیا ہے۔ اس سرکاری اعزاز کے ملنے پر پٹیل محمد الیاس کے آبائی مقام کیرے بیلچی میں گاؤں والوں نے ہی مل کر 28 نومبر 2020 کو تہنیتی اجلاس منعقد کیا۔ کیرے بیلچی نامی دیہات کرناٹک کے داونگیرے ضلع میں واقع ہے۔ ملک کے ایک بڑے تالاب شانتی ساگر کے کنارے پر یہ دیہات آباد ہے۔ اس گاؤں میں 90 فیصد مسلمان ہیں، جو تعلیم اور زراعت کے شعبہ میں نمایاں ترقی حاصل کئے ہوئے ہیں۔

کیرے بیلچی کے رضیہ شادی محل میں منعقدہ پر وقار تقریب میں الامین ایجوکیشنل سوسائٹی کے سکریٹری ڈاکٹر سبحان شریف، مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر پروفیسر کے آر اقبال احمد کی موجودگی میں ڈاکٹر پی محمد الیاس کو شاندار طریقے سے تہنیت پیش کی گئی۔ یہ موقع تمام گاؤں والوں کیلئے ایک یادگار اور تاریخی لمحہ تھا۔ اس تہنیت کو قبول کرنے کے بعد ڈاکٹر پی محمد الیاس نے کہا کہ اب تک انہیں کئی انعامات اور اعزازات سے نوازا گیا ہے۔ حال ہی میں کرناٹک ریاستی حکومت نے لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ سے بھی سرفرازکیا ہے، لیکن تمام گاؤں والوں نے مل کر جو تہنیت انہیں پیش کی ہے، یہ ان کے لئے سب سے بڑی خوشی کا مقام ہے۔ محمد الیاس نے کہا کہ ان کے والد پی امیر حسین جن کی عمر اب 94 سال ہے، ان کی موجودگی میں آبائی مقام میں اعزاز کا دیا جانا، ان کے لئے اور ان کے پورے خاندان کیلئے فخر کی بات ہے۔


وزیر اعلیٰ بی ایس یدی یورپا کے ہاتھوں یہ ایوارڈ پیش کیا گیا ہے۔ اس سرکاری اعزاز کے ملنے پر پٹیل محمد الیاس کے آبائی مقام کیرے بیلچی میں گاؤں والوں نے ہی مل کر 28 نومبر 2020 کو تہنیتی اجلاس منعقد کیا۔
وزیر اعلیٰ بی ایس یدی یورپا کے ہاتھوں یہ ایوارڈ پیش کیا گیا ہے۔ اس سرکاری اعزاز کے ملنے پر پٹیل محمد الیاس کے آبائی مقام کیرے بیلچی میں گاؤں والوں نے ہی مل کر 28 نومبر 2020 کو تہنیتی اجلاس منعقد کیا۔


ڈاکٹر پٹیل محمد الیاس گزشتہ 40 سالوں سے الامین ڈگری کالج، بنگلورو میں فزیکل ایجوکیشن کے ڈائریکٹر کی حیثیت سے خدمات انجام دیتے ہوئے آرہے ہیں۔ چار سال قبل وظیفہ یابی کے باوجود بھی الامین ایجوکیشنل سوسائٹی نے ڈگری کالج کیلئے ان کی خدمات کو جاری رکھا ہے۔ پٹیل محمد الیاس کی تربیت میں الامین ڈگری کالج بنگلورو یونیورسٹی میں گزشتہ 33 سالوں سے اتھلیٹک چمپئن شپ کا خطاب جیتتے ہوئے آرہی ہے، جو اپنے آپ میں ایک بڑا کارنامہ ہے۔ ان کی تربیت اور نگرانی میں کئی کھلاڑی ریاستی، قومی اور بین الاقوامی سطح پر کامیابی حاصل کئے ہوئے ہیں۔ سال 2018 میں جموں کشمیر پبلک سروس کمیشن نے ڈاکٹر پٹیل محمد الیاس کو سلیکیشن کمیٹی کے رکن کے طور پر مدعو کیا تھا۔ اس کمیٹی کے ذریعہ ایک ہزار سے زائد امیدواروں میں 84 نوجوانوں کا انتخاب عمل میں آیا ہے۔ اسپورٹس میں ان کے نمایاں کارناموں کو دیکھتے ہوئے بنگلورو سینٹرل یونیورسٹی نے انہیں فزیکل ایجوکیشن کے ڈائریکٹر کے عہدے پر چند ماہ قبل فائز کیا ہے۔

ملک کے ایک بڑے تالاب شانتی ساگر کے کنارے پر یہ دیہات آباد ہے۔ اس گاؤں میں 90 فیصد مسلمان ہیں، جو تعلیم اور زراعت کے شعبہ میں نمایاں ترقی حاصل کئے ہوئے ہیں۔
ملک کے ایک بڑے تالاب شانتی ساگر کے کنارے پر یہ دیہات آباد ہے۔ اس گاؤں میں 90 فیصد مسلمان ہیں، جو تعلیم اور زراعت کے شعبہ میں نمایاں ترقی حاصل کئے ہوئے ہیں۔


اس موقع پر مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر پروفیسر کے آر اقبال احمد نے کہا کہ ان کا تعلق بھی ایک دیہات سے ہے۔ کیرے بیلچی دیہات سے صرف پانچ کلومیٹر کی دوری پر واقع نیلور مقام میں ان کی پیدائش اور وہیں ابتدائی تعلیم اردو میڈیم میں ہوئی۔ پروفیسر اقبال احمد نے کہا کہ تعلیم ہی ایک ایسا ذریعہ ہے، جو کسی ادنیٰ شخص کو اعلیٰ بناتی ہے۔ اس کی مثال وہ خود اور ڈاکٹر پی محمد الیاس ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دیگر طبقوں کے مقابلے مسلمان تعلیم کے شعبہ میں کافی پیچھے ہیں، اس وجہ سے مسلمانوں کو سماجی، معاشی مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ کے آر اقبال احمد نے کہا کہ ضرورت بس اس بات کی ہے کہ مسلمان تعلیم کی رسی کو مضبوطی سے تھامیں۔

پٹیل محمد الیاس کی تربیت میں الامین ڈگری کالج بنگلورو یونیورسٹی میں گزشتہ 33 سالوں سے اتھلیٹک چمپئن شپ کا خطاب جیتتے ہوئے آرہی ہے، جو اپنے آپ میں ایک بڑا کارنامہ ہے۔
پٹیل محمد الیاس کی تربیت میں الامین ڈگری کالج بنگلورو یونیورسٹی میں گزشتہ 33 سالوں سے اتھلیٹک چمپئن شپ کا خطاب جیتتے ہوئے آرہی ہے، جو اپنے آپ میں ایک بڑا کارنامہ ہے۔


واضح رہے کہ کرناٹک کا کیرے بیلچی دیہات مسلمانوں کی تعلیمی ترقی کے لحاظ سے ایک مثالی مقام ہے۔ یہاں مسلم طبقے کی خواندگی کی شرح تقریباً صد فیصد بتائی جاتی ہے۔ اس دیہات سے تعلق رکھنے والے ٹیچرز، پروفیسرس، ڈاکٹرز، انجنیئرس کرناٹک کے مختلف مقامات میں اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ کیرے بیلچی پروگریسیو فورم کے تحت ہوئے اس تہنیتی اجلاس میں سالانہ امتحانات میں امتیازی کامیابی حاصل کرنے والے طلبہ اور دینی مدارس سے فارغ ہونے والے 8 حفاظ کو بھی تہنیت پیش کی گئی۔ تقریب میں مقامی پولیس انسپکٹر شیو ردرپا میٹی نے جو تاثرات پیش کئے، وہ ہر کسی کی توجہ کا مرکز تھے۔ شیوردرپا نے کہا کہ کیرے بیلچی کے متعلق انہیں ایسی ویسی باتیں سننے کو ملی تھیں، لیکن جب انہوں نے اس گاؤں کا دورہ کیا، لوگوں سے ملاقاتیں کیں اور آج کی تقریب حصہ لینے کے بعد ان میں موجود غلط فہمیاں دور ہوئی ہیں۔ کیونکہ اس مقام سے ایک سابق وائس چانسلر، کھیل کے میدان میں نمایاں کارنامہ انجام دینے والی جیسی شخصیات پیدا ہوئی ہیں۔ انہوں نے کہا پورے داونگیرے ضلع کیلئے کیرے بیلچی ایک فخر کا مقام ہے، جہاں اعلی تعلیم یافتہ اور انتہائی ذہین لوگ موجود ہیں۔ اس اجلاس میں کئی برادران وطن نے بھی شرکت کی۔ نہ صرف مسلمان علاقے کے ہندو بھائیوں کی جانب سے بھی ڈاکٹر پٹیل محمد الیاس کو تہنیت پیش کی گئی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 29, 2020 11:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading