உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اپنے گڑھ میں قریبی میئر کی کرسی نہیں بچا سکے کیپٹن ، کیسے جیتیں گے اسمبلی کی جنگ ؟

    اپنے گڑھ میں قریبی میئر کی کرسی نہیں بچا سکے کیپٹن ، کیسے جیتیں گے اسمبلی کی جنگ ؟

    اپنے گڑھ میں قریبی میئر کی کرسی نہیں بچا سکے کیپٹن ، کیسے جیتیں گے اسمبلی کی جنگ ؟

    Punjab Politics: پنجاب کے سابق وزیر اعلی امریندر سنگھ اپنی ریاست پٹیالہ میں ہی اپنے پہلے امتحان میں ناکام ہوتے نظر آرہے ہیں ۔ پٹیالہ میں کیپٹن اپنے قریبی یئر سنجیو شرما بٹو کی کرسی نہیں بچا سکے ۔

    • Share this:
      پٹیالہ : پنجاب کے سابق وزیر اعلی امریندر سنگھ اپنی ریاست پٹیالہ میں ہی اپنے پہلے امتحان میں ناکام ہوتے نظر آرہے ہیں ۔ پٹیالہ میں کیپٹن اپنے قریبی یئر سنجیو شرما بٹو کی کرسی نہیں بچا سکے ۔ دراصل جمعرات کو پٹیالہ نگر نگم کی میٹنگ بلائی گئی تھی ، جس میں کیپٹن گروپ اکثریت ثابت نہیں کرسکا ۔ کیپٹن امریندر سنگھ اور ممبر پارلیمنٹ پرنیت کور کے حامی مانے جانے والے بٹو کو کرسی پر بنائے رکھنے کیلئے سابق وزیر اعلی نے ایڑی چوٹی کا زور لگایا تھا ۔ اس کیلئے وہ خود بھی ووٹ دینے کیلئے پٹیالہ پہنچے تھے ۔ حالانکہ کیپٹن کی محنت کام نہیں آئی ۔ بٹٹو کی جگہ سینئر ڈیپی میئر یوگیندر سنگھ کو کارگزار میئر بنادیا گیا ہے ۔

      پٹیالہ میونسپل کارپوریشن میں 60 کونسلرز ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ کیپٹن امریندر سنگھ، وزراء برہما موہندرا اور ہریندرپال چندو ماجرا یہ تین ایم ایل اے ارکین ہیں۔ ایسی صورت حال میں 63 ارکان میں سے بٹو کو جیت درج کرنے کے لیے دوتہائی  42 ووٹ درکار تھے۔ لیکن وہ صرف 25 ووٹ حاصل کر سکے۔ جبکہ ان کے خلاف 36 ووٹ ڈالے گئے۔ جس کے بعد انہیں معطل کر کے سینئر ڈپٹی میئر کو میئر کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔

      پٹیالہ کارپوریشن میں کانگریس اور کیپٹن کے حامیوں کی طاقت کے شو کے لیے کیپٹن امریندر سنگھ چنڈی گڑھ سے خصوصی طور پر پہنچے تھے۔ تاہم ایوان میں ناکامی کے بعد ان کے مخالفین بھی اس بات پر متفق ہیں کہ وہ اپنا گڑھ نہیں بچا سکے۔ ایسے میں کیپٹن کے نئی پارٹی بنا کر پٹیالہ سے اسمبلی الیکشن جیتنے پر بھی سوالیہ نشان لگ رہے ہیں ۔

      کیپٹن امریندر سنگھ خود کو پنجاب کے لوگوں سے جڑا ہوا بتاتے ہیں۔ کچھ عرصہ قبل سونیا گاندھی کو اپنے سات صفحات پر مشتمل استعفیٰ نامہ میں انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا تھا کہ کانگریس نے ان کی قیادت میں کئی بلدیاتی انتخابات جیتے ہیں۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: