உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پرشانت کشور کو لے کر سافٹ نظر آرہی ہے JDU لیکن اتحادی BJP نے لی چٹکی، کہہ دی یہ بڑی بات

    پرشانت کشور کو لے کر سافٹ نظر آرہی ہے JDU پر اتحادی BJP نے لی چٹکی

    پرشانت کشور کو لے کر سافٹ نظر آرہی ہے JDU پر اتحادی BJP نے لی چٹکی

    Bihar News: ظاہر ہے کہ اوپیندر کشواہا جے ڈی یو کے سینئر لیڈر ہیں اور وزیر اعلیٰ نتیش کمار کے قریبی مانے جاتے ہیں، اس لئے پرشانت کشور کو لے کر ان کے بیان کو ہلکے میں نہیں لیا جاسکتا۔ پرشانت کشور کو لے کر جے ڈی یو سافٹ نظر آرہی ہے تو وہیں اتحادی بی جے پی نے پی کے کے بہار سے دوبارہ سیاست کی شروعات کرنے پر چٹکی لی ہے۔

    • Share this:
      پٹنہ: انتخابی پالیسی ساز پرشانت کشور (Prashant Kishor) بہار سے سیاست کی اپنی دوسری اننگ کی شروعات کرنے کا اعلان کرچکے ہیں۔ پیر کو اس پر جیسے ہی ان کا ٹوئٹ آیا، بہار کی سیاسی جماعتوں (Bihar Politics) میں ہلچل اور رد عمل کا دور بڑھنے لگا۔ سیاسی پارٹیاں اپنے اپنے لحاظ سے پرشانت کشور کو لے کر بیانات دے رہی ہیں، لیکن اسی درمیان جے ڈی یو کے پارلیمانی بورڈ کے چیئرمین اوپیندر کشواہا (Upendra Kushwaha) کا پرشانت کشور کو لے کر بڑا بیان آیا ہے، جس سے سیاست گرم ہوگئی ہے۔

      اوپیندر کشواہا نے نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پرشانت کشور نے بہار سے سیاست کا دوبارہ آغاز کرنے کی بات کہی ہے، اچھی بات ہے، جو بھی سیاست میں دلچسپی رکھتا ہے ویسے کسی بھی شخص کو سیاست میں آرہے ہیں تو اس کا استقبال ہونا چاہئے، اس میں غلط کیا ہے۔ ان سے جب یہ پوچھا گیا کہ کیا پرشانت کشور اور جے ڈی یو کے درمیان مستقبل میں کوئی تال میل ہوسکتا ہے تو اس پر انہوں نے کہا کہ اگر ایسی کوئی صورتحال ہوتی ہے تو کسی کے لئے منع تھوڑی ہی ہے۔ پارٹی کو کسی کی افادیت اس وقت نظر آتی ہے، تو پارٹی فیصلہ لے سکتی ہے۔ پرشانت کشور کو لے کر بھی اس وقت پارٹی نظر آئے گی اور کوئی فیصلہ لے گی۔ حالانکہ اوپیندر کشواہا نے یہ بھی زور دے کر کہا کہ پرشانت کشور تو پہلے جے ڈی یو کے ساتھ تھے، پتہ نہیں تب کیوں چلے گئے تھے۔ اس وقت میں جے ڈی یو میں نہیں تھا۔ اس وقت کے حالات کیسے تھے، لیکن فی الحال پرشانت کشور کو لے کر ابھی کچھ نہیں کہا جاسکتا ہے۔

      ظاہر ہے کہ اوپیندر کشواہا جے ڈی یو کے سینئر لیڈر ہیں اور وزیر اعلیٰ نتیش کمار کے قریبی مانے جاتے ہیں، اس لئے پرشانت کشور کو لے کر ان کے بیان کو ہلکے میں نہیں لیا جاسکتا۔ پرشانت کشور کو لے کر جے ڈی یو سافٹ نظر آرہی ہے تو وہیں اتحادی بی جے پی نے پی کے کے بہار سے دوبارہ سیاست کی شروعات کرنے پر چٹکی لی ہے۔

      نتیش حکومت میں بی جے پی کوٹے سے وزیر سمراٹ چودھری نے کہا کہ وہ (پرشانت کشور) کے بیٹے ہیں، بہار میں آئے ہیں، بہار کے عوام کے درمیان کام کریں، عوام کے درمیان جائے، اچھی بات ہے۔ اس کا استقبال ہونا چاہئے، لیکن یہ تو پرشانت کشور بھی جانتے ہوں گے کہ سیاست میں لمبے وقت تک جس نے جدوجہد کیا ہے، وہی عوام میں مقبول ہوا ہے۔ تاہم صرف آکر جس نے بھی سیاست کی ہے، اسے عوام کی کس طرح سے ناراضگی جھیلنی پڑی ہے، اسے پرشانت کشور بھی جانتے ہوں گے۔ سیاست میں جدوجہد کرنا پڑتا ہے، کام کرنا پڑتا ہے۔ بہار کے ہمارے بھائی ہیں، آکر کام کریں۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: