ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

دیشااجتماعی عصمت ریزی وقتل کیس: ملزمین کی انکاونٹر میں ہلاکت کی سویشل میڈیا پرستائش

ملزمین کی انکاونٹر میں ہلاکت کی خبر پر سماجی رابطہ کے ذرائع واٹس ایپ،ٹوئیٹر اور دیگر پر مسرت کا اظہار کیاجارہا ہے

  • Share this:
دیشااجتماعی عصمت ریزی وقتل کیس: ملزمین کی انکاونٹر میں ہلاکت کی سویشل میڈیا پرستائش
علامتی تصویر

ملک بھرمیں سنسنی پھیلادینے والے حیدرآباد میں وٹرنری ڈاکٹر کی اجتماعی عصمت دری، قتل اور لاش کو زندہ جلادینے والے واقعہ میں ملوث ملزمین کی انکاونٹر میں ہلاکت کی خبر پر سماجی رابطہ کے ذرائع واٹس ایپ،ٹوئٹر اور دیگر پر مسرت کا اظہار کیاجارہا ہے۔اس اجتماعی عصمت دری اور قتل کے بعد لاش کو جلادینے والی واردات کے بعد پولیس پر نکتہ چینی کرنے والے افراد نے اب سوشل میڈیا پرتلنگانہ کی سائبرآبادپولیس کی ستائش کی ہے۔سائبر آباد پولیس کمشنر سنجار کی سوشیل میڈیا پر کئی افراد نے ستائش کی ہے۔اس انکاونٹر پر کئی لڑکیوں نے مسرت کا اظہار بھی کیاہے۔


 


 





 

ریکھا شرما نے مسرت کااظہار کیا خواتین کے قومی کمیشن کی صدرنشین ریکھا شرما نے حیدرآباد واقعہ کے ملزمین کی انکاونٹر میں ہلاکت پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ایک عام آدمی کی طرح وہ مسرت محسوس کررہی ہیں۔اس انکاونٹر کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ وہ حیدرآباد واقعہ کے اختتام پر کافی خوش ہیں تاہم اس واقعہ کا خاتمہ قانونی طریقہ سے ہونا چاہئے تھا۔ہم ہیشمہ سے ہی ایسی وارداتوں میں ملوث ملزمین کے لئے موت کی سزا کامطالبہ کرتے ہیں۔    





پولیس کی سائنا نہوال نے ستائش کی

شہر حیدرآباد کے سائبر آباد پولیس کمشنریٹ کے حدود میں 26سالہ وٹرنری ڈاکٹر کی اجتماعی عصمت دری کے بعد اس کے قتل اور لاش کو جلادینے کی واردات میں ملوث تمام چار ملزمین کی انکاونٹر میں ہلاکت کے واقعہ پرردعمل ظاہر کرتے ہوئے بیڈ منٹن کی مشہور کھلاڑی سائنا نہوال نے ٹوئیٹ کرتے ہوئے حیدرآباد پولیس کی ستائش کی۔انہوں نے اپنے ایک سطری انگریزی میں کئے گئے ٹوئیٹ میں کہا”حیدرآباد پولیس کا زبردست کام۔ہم آپ کو سلام کرتے ہیں!“

 

مقتولہ ڈاکٹر کی پڑوسی خواتین نے پولیس کوباندھی راکھی شہرحیدرآباد کے سائبر آباد پولیس کمشنریٹ کے حدود میں 26سالہ وٹرنری ڈاکٹر کی اجتماعی عصمت دری وقتل کی واردات میں ملوث تمام چار ملزمین کی انکاونٹر میں ہلاکت کے واقعہ پر وٹرنری ڈاکٹر کی پڑوسی خواتین نے پولیس ملازمین کو راکھی باندھی۔یہ خواتین جو دیشا واقعہ کے بعد اپنی سلامتی پر فکر مند تھیں اور پولیس پر برہمی ظاہر کررہی تھیں نے اس انکاونٹر کے بعد پولیس کی ستائش کی۔ان پُرجوش خواتین اور لڑکیوں نے پولیس ملازمین میں مٹھائی تقسیم کی اور اس انکاونٹر کا جشن منایا۔ان خواتین نے قبل ازیں اس واقعہ کے بعد ملزمین کو سخت سزا دینے کامطالبہ کرتے ہوئے دیشا کی کالونی کی گیٹ کے سامنے دھرنا دیا تھا اور اس واقعہ پرشدید برہمی کا اظہار کیا تھا۔آج کے اس واقعہ کے بعد ان کے چہروں پر مسرت دیکھی گئی۔ان خواتین نے ملازمین پولیس میں مٹھائی تقسیم کی اور پولیس کی حمایت میں نعرے بازی کی۔ان خواتین کے ساتھ ساتھ دیگر مرد حضرات نے بھی تلنگانہ پولیس اور تلنگانہ میڈیا کے حق میں نعرے بازی کی۔ان پُرجوش خواتین نے تلنگانہ پولیس کو سلام بھی کیا۔  





  عوام نے پولیس ملازمین کو گود میں اٹھالیا شہر حیدرآباد کے سائبر آباد پولیس کمشنریٹ کے حدود میں 26سالہ وٹرنری ڈاکٹر کی اجتماعی عصمت دری کے بعد اس کے قتل اور لاش کو جلادینے کی واردات میں ملوث تمام چار ملزمین کی انکاونٹر میں ہلاکت کے واقعہ پر پُرجوش ہجوم نے پولیس ملازمین کو اپنی گود میں اٹھا لیا،ان کی حمایت میں نعرے بازی کی اور اس انکاونٹر پر جشن منایا۔اس موقع پر انکاونٹر کے مقام پر عوام کی بڑی تعداد دیکھی گئی جنہوں نے پولیس کے حق میں نعرے بازی کی۔پولیس پر پھول بھی برسائے گئے۔نوجوانوں نے سیٹیاں بجاتے ہوئے اس انکاونٹر میں ملزمین کی ہلاکت پر مسرت کا اظہار کیا۔



First published: Dec 06, 2019 12:32 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading