உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    PM Awas Yojana:پی ایم آواز یوجنا کی رقم اکاونٹ میں آئی؟ چیک کریں

    PM Awas Yojana: اگر درخواست دہندہ نے جس زمرے میں درخواست دی ہے اور اس کی آمدنی اور اصل آمدنی میں فرق ہو تو اس کی سبسڈی روک دی جاتی ہے۔ آدھار اور دیگر دستاویزات میں فارم بھرنے میں غلطیاں ہونے پر بھی سبسڈی ملنے میں تاخیر ہوتی ہے۔

    PM Awas Yojana: اگر درخواست دہندہ نے جس زمرے میں درخواست دی ہے اور اس کی آمدنی اور اصل آمدنی میں فرق ہو تو اس کی سبسڈی روک دی جاتی ہے۔ آدھار اور دیگر دستاویزات میں فارم بھرنے میں غلطیاں ہونے پر بھی سبسڈی ملنے میں تاخیر ہوتی ہے۔

    PM Awas Yojana: اگر درخواست دہندہ نے جس زمرے میں درخواست دی ہے اور اس کی آمدنی اور اصل آمدنی میں فرق ہو تو اس کی سبسڈی روک دی جاتی ہے۔ آدھار اور دیگر دستاویزات میں فارم بھرنے میں غلطیاں ہونے پر بھی سبسڈی ملنے میں تاخیر ہوتی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی:PM Awas Yojana: ملک میں نچلے طبقے اور متوسط ​​طبقے کو مکان فراہم کرنے کے مقصد سے مرکزی حکومت پردھان منتری آواس یوجنا چلاتی ہے۔ اس کے تحت حکومت مکان بنانے والے کو سبسڈی دیتی ہے۔ ملک کے بہت سے خاندانوں کو گھر بنانے کے لیے مالی مدد فراہم کی جاتی ہے۔ اس اسکیم کے تحت پہلی بار مکان خریدنے پر حکومت کی طرف سے 2.67 لاکھ روپے کی سبسڈی فراہم کی جاتی ہے۔

      حالانکہ بہت سے ایسے خاندان ہیں جو اس اسکیم کی شرائط پر پوری طرح عمل کرتے ہیں۔ پی ایم آواس یوجنا کے لیے درخواست دی ہے، لیکن اب تک سبسڈی ان کے کھاتے میں نہیں آئی ہے۔ جن لوگوں نے پی ایم آواس یوجنا کے لیے درخواست دی ہے، لیکن اب تک انہیں سبسڈی کی رقم نہیں ملی ہے۔ ایسے میں ہم آپ کو بتا رہے ہیں کہ سبسڈی کہاں پھنسی ہوئی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Metaکے نئے اسپیچ ٹرانسلیشن سسٹم سے رئیل ٹائم میں ہوگاترجمہ،دوسری زبان سمجھنا ہوگا آسان

      سبسڈی چیک کریں
      کئی بار دیکھا گیا ہے کہ درخواست دیتے وقت فارم میں غلط معلومات داخل کی جاتی ہیں۔ تو حکومت کی طرف سے سبسڈی پھنس جاتی ہے۔ اس اسکیم کا فائدہ اٹھانے کے لیے سب سے اہم شرط یہ ہے کہ جو بھی درخواست دے رہا ہے، وہ پہلی بار گھر خرید رہے ہوں۔ اگر آپ اس شرط کو پورا نہیں کرتے تو آپ کو فائدہ نہیں ملے گا۔ ساتھ ہی، پی ایم آواس یوجنا کے تحت سبسڈی حاصل کرنے کے لیے حکومت نے آمدنی کے حساب سے تین زمرے بنائے ہیں۔ جس میں 3 لاکھ روپے سالانہ، 6 لاکھ روپے سالانہ اور 12 لاکھ روپے سالانہ آمدنی کے تین زمرے بنائے گئے ہیں۔

      اگر درخواست دہندہ نے جس زمرے میں درخواست دی ہے اور اس کی آمدنی اور اصل آمدنی میں فرق ہو تو اس کی سبسڈی روک دی جاتی ہے۔ آدھار اور دیگر دستاویزات میں فارم بھرنے میں غلطیاں ہونے پر بھی سبسڈی ملنے میں تاخیر ہوتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Sovereign Gold Bond scheme:حکومت28فروری سے دے رہی سستا سونا خریدنے کا موقع

      پیسے کہاں اور کیسے چیک کریں
      پہلے آپ کو پردھان منتری آواس یوجنا کی آفیشل ویب سائٹ https://pmaymis.gov.in/ پر جانا ہوگا۔ اس کے بعد آپ کو 'Search Benefeciary' کے آپشن پر کلک کرنا ہوگا۔ پھر Search By Name کے آپشن پر کلک کریں۔ اب آپ کو اپنا نام یہاں درج کرنا ہوگا۔ اس کے بعد آپ کے نام سے ملتے جلتے جتنے لوگوں نے اپلائی کیا ہے، اُن سب کی فہرست سامنے آئے گی۔ آپ اس فہرست میں اپنا نام چیک کر سکتے ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: