پاکستان : جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کا ہندوستان کودیاجائیگا مؤثر جواب:عمران خان

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے ساتھ جمعہ کے روز لائن آف کنٹرول کا دورہ کیا۔انٹر سروس پبلک ریلیشنز سے ایک بیان جاری کرکے کہا کہ عمران خان کے ساتھ آرمی چیف باجوہ کے علاوہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی ، وزیر دفاع پرویز خٹک اور کشمیر کمیٹی کے صدر فخر امام بھی لائن آف کنٹرول تک گئے

Sep 06, 2019 11:19 PM IST | Updated on: Sep 07, 2019 03:25 AM IST
پاکستان : جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کا ہندوستان کودیاجائیگا مؤثر جواب:عمران خان

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نےلائن آف کنٹرول کا دورہ کیا۔(تصویر:ٹویٹر، ڈی جی آئی ایس پی آر)۔

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے ساتھ جمعہ کے روز لائن آف کنٹرول کا دورہ کیا۔انٹر سروس پبلک ریلیشنز سے ایک بیان جاری کرکے کہا کہ عمران خان کے ساتھ آرمی چیف باجوہ کے علاوہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی ، وزیر دفاع پرویز خٹک اور کشمیر کمیٹی کے صدر فخر امام بھی لائن آف کنٹرول تک گئے ۔وزیراعظم عمران خان وہاں جوانوں اورلائن آف کنٹرول کے قریب گاؤں میں شہید ہونے والے افراد کے اہل خانہ سے بھی بات چیت کی ۔ وزیراعظم مظفرآباد کا بھی دورہ کیا اور وہاں موجود لوگوں سےخطاب بھی کیا۔

 

اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہندوستان کی جانب سے جموں و کشمیر کے نہتے شہریوں کو جان بوجھ کر نشانہ بنانا اورمقبوضہ کشمیرمیں طویل محاصرہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی بدترین مثال ہے۔آئی ایس پی آرنے اپنے بیان میں کہا گیا کہ وزیراعظم کواس موقع پر‘ایل او سی کی موجودہ صورت حال سے آگاہ کیا گیا’۔آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ 'وزیراعظم نے بھارت کی جانب سے جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کا موثر جواب دینے کے لیے بھرپور تیاریوں کو سراہا'۔  

ہندوستان کی طرف سے 5 اگست کوجموں و کشمیر کو خصوصی درجہ دینے والی دفعہ 370 کو ختم کرنے کے بعد سے بوکھلانے والا پاکستان جمعہ کو اپنا یوم دفاع کو یوم یکجہتی کشمیر کے طور پرمنارہا ہے۔ اس سے پہلے، پاکستان نے کشمیری عوام کی حمایت کے اظہار کے لئے اپنا 73 واں یوم آزادی یوم یکجہتی کشمیر کے طور پر منایا۔

Loading...