ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

Cyclone Yaas:وزیراعظم نےبنگال۔اڈیشہ کاکیافضائی سروے،دونوں ریاستوں کو500-500کروڑ کےامدادی پیکیج کاکیااعلان

وزیر اعظم مودی نے فوری طور پر 1 ہزار کروڑ روپے کے امدادی پیکیج کا بھی اعلان کیا ہے۔ اس میں سے 500 کروڑ اوڈیشہ کے لئے اور 500 کروڑ مغربی بنگال جھارکھنڈ کے لئے دیئے گئے ہیں۔ جمعہ کو پی ایم مودی نے بھونیشور میں ایک جائزہ اجلاس بھی منعقد کیا۔ انہوں نے امدادی کاموں سے متعلق تمام کوششوں کے بارے میں معلومات حاصل کیں۔

  • Share this:

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی (PM Narendra Modi) نے یاس طوفان سے ہونے والی تباہی کا جائزہ لینے کے لئے اڈیشہ اور مغربی بنگال میں ایک فضائی سروے کیا۔ وزیر اعظم مودی نے فوری طور پر 1 ہزار کروڑ روپے کے امدادی پیکیج کا بھی اعلان کیا ہے۔ اس میں سے 500 کروڑ اوڈیشہ کے لئے اور 500 کروڑ مغربی بنگال جھارکھنڈ کے لئے دیئے گئے ہیں۔ جمعہ کو پی ایم مودی نے بھونیشور میں ایک جائزہ اجلاس بھی منعقد کیا۔ انہوں نے امدادی کاموں سے متعلق تمام کوششوں کے بارے میں معلومات حاصل کیں۔


وزیر اعظم نے اڈیشہ ، مغربی بنگال اور جھارکھنڈ کو یقین دلایا ہے کہ تمام ضروری مدد فراہم کی جائے گی۔ اس تباہی کا اندازہ لگانے کے لئے ایک بین وزارتی ٹیم تشکیل دی جائے گی۔ اس کے علاوہ طوفان میں اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھنے والوں کے لواحقین کے لئے 2 لاکھ اور وزیر اعظم مودی ریلیف فنڈکی جانب سے شدید زخمیوں کے لئے 50 ہزار روپے کی مالی امداد کا اعلان کیا گیا ہے۔



وزیراعظم کے جائزہ اجلاس میں وزیراعلیٰ ممتا بنرجی نےشرکت نہیں کی تاہم انہوں نے بعد میں وزیر اعظم مودی سے ملاقات کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 'وزیر اعظم نے اجلاس طلب کیاتھا اس بات کی اطلاع انہیں نہیں تھی۔ ممتا نے کہا ۔۔’ہم نہیں جانتے تھے کہ ملاقات ڈیگھا میں ہے۔ میں کالا کُنٹہ گئی تھی۔ میں نے وزیر اعظم کو ایک رپورٹ دی ہے ہم نے ڈیگھا اور سندربن کی ترقی کیلئے 20 ہزار کروڑ اور 10 ہزار کروڑ کا مطالبہ کیا ہے۔ میں نے وزیر اعظم کو بتایا کہ میری ریاستی عہدیداروں سے ملاقات ہے۔


ممتا بنرجی نے کہا ہے کہ وہ ریاست کے متاثرہ علاقوں کا فضائی سروے کریں گی۔ہم آپ کو بتادیں کہ طوفان کی نقصانات کا جائزہ لینے کے دوران ، ممتا بنرجی نے مرکزی حکومت پر کی جانب سے جاری ہونے والے فنڈ لیکر تنقید کی ہے۔ اوڈیشہ اور آندھرا پردیش کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مغربی بنگال کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آندھرا اور اڈیشہ میں سے ہر ایک کو 600 کروڑ دیئے گئے جبکہ مغربی بنگال کو صرف 400 کروڑ دیئے گئے ہیں۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 28, 2021 07:53 PM IST